Sunday, 20 September, 2020
کابل، افغان خفیہ ادارے کے ٹریننگ سینٹر پر داعش کا حملہ

کابل، افغان خفیہ ادارے کے ٹریننگ سینٹر پر داعش کا حملہ

کابل،افغانستان کے دارالحکومت کابل میں دہشت گردوں نے افغان خفیہ ایجنسی نیشنل ڈائریکٹریٹ آف سیکیورٹی (این ڈی ایس) کے ٹریننگ سینٹر پر حملہ کردیا تاہم افغان سیکیورٹی فورسز کی جوابی کارروائی میں حملہ آور ہلاک ہوگئے۔

خبر رساں اداروں کے مطابق عالمی شدت پسند تنظیم داعش نے کابل میں ٹریننگ سینٹر پر حملے کی ذمہ داری قبول کی جہاں پولیس اور دہشت گردوں کے درمیان جھڑپ ہوئی۔

افغان وزارتِ داخلہ کے ترجمان نجیب دانش نے غیر ملکی خبر رساں ادارے سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ کچھ مسلح افراد تقریباً صبح 10 بجے این ڈی ایس کے ٹریننگ سینٹر میں زیر تعمیر عمارت میں داخل ہوئے تھے۔

افغانستان کے نائب وزیر داخلہ نصرت رحیم کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر کارروائی شروع کردی ہے اور جائے وقوعہ سے بھاری اور چھوٹے ہتھیاروں سے فائرنگ کی شدید آوازیں سنائی دے رہی تھیں۔

وزارتِ داخلہ کے ترجمان نے بتایا کہ داعش کی جانب سے کیے گئے اس حملے میں کسی جانی نقصان کی کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔

کابل پولیس کے ترجمان بصیر مجاہد نے اے ایف پی کو بتایا کہ دہشت گردوں کے خلاف آپریشن ختم کیا جاچکا ہے جس میں 2 دہشت گردوں کو ہلاک کیا گیا جبکہ 2 پولیس اہلکار اس آپریشن میں زخمی ہوئے۔

دوسری جانب داعش کے میڈیا ادارے عمق نے دعویٰ کیا کہ کابل میں افغان خفیہ ادارے کے دفتر پر حملہ کرنے والوں کی تعداد 2 تھی۔

افغان سیکیورٹی کے اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا جبکہ جائے وقوعہ پر میڈیا سمیت کسی بھی شخص جانے کی اجازت نہیں دی گئی۔

خیال رہے کہ رواں برس افغانستان بالخصوص دارالحکومت کابل میں طالبان اور داعش کی جانب سے سیکیورٹی فورسز پر کئی جان لیوا حملے دیکھنے میں آئے ہیں جبکہ اس کے علاوہ جنگ زدہ ملک میں مساجد کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

شمالی افغانستان میں قائم افغان فوجی اڈے پر طالبان نے حملہ کر کے وہاں موجود 150 سے زائد فوجی اہلکاروں کو ہلاک و زخمی کردیا تھا۔

یاد رہے کہ افغانستان کے دارالحکومت کابل میں جرمن سفارت خانے کے قریب کار بم دھماکے کے نتیجے میں 90 افراد ہلاک جبکہ 400 افراد زخمی ہوگئے۔

افغانستان کے جنوب مشرقی صوبے پکتیا میں قائم پولیس ٹریننگ سینٹر پر ہونے والے خود کش حملے اور مسلح جھڑپ کے نتیجے میں 32 افراد ہلاک اور 200 سے زائد زخمی ہوگئے۔

ہلاک ہونے والوں میں صوبے پکتیا کے پولیس چیف طوریالانی عبدیانی بھی شامل تھے۔

17 دسمبر کو افغانستان کے جنوبی صوبے ہلمند میں طالبان کی جانب سے پولیس چیک پوسٹ پر کیے گئے حملے میں 11 اہلکار ہلاک ہوگئے تھے۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  78659
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
افغانستان کے امور میں امریکہ کے انسپکشن کے ادارے (سیگار) نے اپنی جاری کردہ رپورٹ میں کہا ہے کہ سال 2020 کے ابتدائی 3 مہینوں میں افغانستان میں 7 امریکی فوجی ہلاک اور 11 افراد زخمی ہوئے۔
افغانستان میں طالبان جنگجوﺅں نے فوجی چیک پوسٹ پر دھاوا بول دیا جس کے نتیجے میں 13 اہلکار ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔افغان میڈیا رپورٹ کے مطابق صوبے بدغیث کے فوجی چیک پوسٹ پر طالبان جنگجوﺅں نے حملہ کردیا،سیکیورٹی اہلکاروں نے ایک گھنٹے تک سخت مزاحمت کی لیکن چند اہلکاروں کے جنگجوﺅں سے جا ملنے پر سیکیورٹی اہلکار پسپا ہوگئے۔
بنگلہ دیش اور افغانستان نے بھارت کے متنازع شہریت ترمیمی ایکٹ (سی اے اے) کی مخالفت کردی۔ مسلمانوں کو شامل نہیں کیا گیا ہے اور 3 ممالک کے ہندو، سکھ، جین، بدھ مت، مسیحی اور پارسیوں کو شہریت دینے کا کہا گیا ہے۔
سیکیورٹی اہلکار کی فائرنگ سے سی آر پی ایف کے 4 اہلکار موقع پر ہی ہلاک جبکہ ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹر (اے ایس آئی) زخمی ہوگیا

مزید خبریں
اسپیکٹیٹر انڈیکس نے سال 2019 کی د نیا میں رہائش کے لیے خطرناک ترین ممالک کی فہرست جاری کر دی ہے۔ اس فہرست کے مطابق بھارت رہائش کے لیے خطرناک ترین ممالک کی فہرست میں پانچویں نمبر پر آ گیا ہے جبکہ پہلے نمبر پر برازیل، دوسرے پر ساؤتھ افریقہ، تیسرے پر نائجیریا اور چوتھے پر ارجنٹینا ہے۔
بھارت میں شدید گرمی کے باعث مرنے والوں کی تعداد 134ہوگئی بھارتی میڈیا کے مطابق شدید گرمی کے باعث بھارت کی ریاست تلنگانہ ،آندھرا پردیش اور اڑیسہ میں مرنے والوں کی تعداد 134 ہوگئی ہے۔
افغان حکومت نے باچاخان یونیورسٹی حملے میں افغان سرزمین استعمال ہونے کا امکان مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان نے کسی دہشت گرد گروپ کو پناہ نہیں دی جب کہ افغانستان کسی دہشت گرد گروپ کی حمایت بھی نہیں کرتا۔

مقبول ترین
ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے کہا کہ امریکی رپورٹ میں پاکستان کے دہشت گردی کے خلاف اٹھائے گئے اقدامات کو متنازع بنایا گیا ہے۔ القاعدہ کی خطے میں ناکامی کو تو تسلیم کیا گیا لیکن اس کے خلاف پاکستان کی کاوشوں کو نظر انداز کیا گیا۔ پاکستان میں
رینٹل پاور کیس میں سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف سمیت 10 ملزمان نے بریت کی درخواست دائر کر رکھی تھی اور نیب ترمیمی آرڈیننس کے تحت تمام درخواستیں دائر کی گئی تھیں۔ جس پر احتساب عدالت اسلام آباد نےفیصلہ محفوظ کر رکھا تھا تاہم آج احتساب
وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہم سے جواب مانگا جارہا ہے جواب ان سے مانگا جائے جو ملک کو اس حال میں چھوڑ کرگئے۔ قومی اسمبلی کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد
سپریم کورٹ میں کورونا از خود نوٹس کیس کی سماعت کے دوان چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ وزیراعظم کہتےہیں ایک صوبے کا وزیراعلیٰ آمر ہے، اس کی وضاحت کیا ہوگی؟ چیف جسٹس نے کہا کہ وزیراعظم اور وفاقی

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں