Monday, 19 August, 2019
وفاقی حکومت کا ڈیزل اور پٹرول کی قیمتوں میں کمی کا اعلان

وفاقی حکومت کا ڈیزل اور پٹرول کی قیمتوں میں کمی کا اعلان

 اسلام آباد ۔ وفاقی حکومت نے ڈیزل اور پٹرول کی قیمتوں میں ایک روپیہ 50پیسے کمی کا اعلان کیا ہے ۔ مٹی کے تیل اور لائٹ ڈیزل کی قیمتیں برقرار رہیں گی ۔ پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں سے خزانہ کو تقریباً 2.4 بلین روپے کا بوجھ برداشت کرنا پڑے گا۔

جمعہ کو وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر محمد اسحاق ڈار نے یہاں صحافیوں سے گفتگو میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نے پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں کی منظوری دے دی ہے۔ انہوںنے بتایا کہ ڈیزل اور پٹرول کی قیمتوں میں فی لٹر 1.50 روپے کمی کا فیصلہ کیا گیا ہے انہوں نے بتایا کہ ڈیزل کی قیمت 1.50 روپے کمی کے بعد اب اس کی نئی قیمت 79.90 روپے فی لٹر ہوگی ۔ اسی طرح پٹرول کی قیمت میں بھی 1.50 روپے کمی کے بعد نئی قیمت 71.30 روپے ہو جائے گی جبکہ مٹی کے تیل اور لائٹ ڈیزل کی قیمتیں برقرار رہیں گی۔ 

انہوں نے بتایا کہ قیمتوں میں کمی کا اطلاق یکم جولائی کی رات 12 بجے سے ہوگیا اور یہ قیمتیں 31 جولائی تک لاگو رہیں گی۔ وزیر خزانہ سینیٹر اسحاق ڈار نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں سے خزانہ کو تقریباً 2.4 بلین روپے کا بوجھ برداشت کرنا پڑے گا۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  34118
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
حکومت نے عوام پر ایک بار پھر پٹرول بم گرا دیا ہے، وفاقی حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 5 روپے 19 پیسے تک اضافہ کردیا ہے جس کا نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔ نئی قیمتوں کا اطلاق آج رات 12 بجے سے ہو گیا ہے، پٹرول کی قیمتوں میں لگاتار تیسرے ماہ اضافہ ہوا ہے۔
حکومت نے ماہ اکتوبر کےلیے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا ہے،جس کے مطابق پیٹرول ، ہائی اسپیڈ ڈیزل اور لائٹ ڈیزل کی قیمت میں دو روپے فی لیٹر اضافہ کیاگیاہے۔ جس کا اطلاق آج رات 12 بجے سے ہوگا۔
بینک آف چائنہ نے پاکستان میں اپنی شاخیں کھولنے کا فیصلہ کر لیا ہے اور ا س ضمن میں سٹیٹ بینک آف پاکستان نے بھی منظوری دیدی ہے۔ بینک کی پہلی شاخ جلد کراچی میں کھولی جائے گی۔
وفاقی حکومت نے آئندہ ایک ماہ کیلئے پٹرولیم مصنوعات کی موجودہ قیمتیں برقرار رکھنے کا اعلان کیا ہے۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ اوگرا کی جانب سے قیمتوں میں ردوبدل کی تجویز دی گئی تھی جسے مسترد کرديا گيا ہے۔

مقبول ترین
بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت سے متعلق آرٹیکل 370 ختم کیے جانے کے بعد سے وزیراعظم عمران خان نے شدید تشویش کا اظہار کیا تھا اور وہ کشمیر کے معاملے پر بین الاقوامی برادری سے مسلسل رابطے میں ہیں۔
افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک شادی کی تقریب میں خودکش دھماکے کے نتیجے میں 63 افراد جاں بحق اور 180 سے زائد زخمی ہوگئے۔ افغان میڈیا کے مطابق کابل میں شادی کی تقریب کے دوران خودکش دھماکا ہوگیا جس کے نتیجے میں 63 افراد
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے خبردار کیا ہے کہ بھارت کسی بھی وقت پاکستان کے خلاف جارحیت کرسکتا ہے جس کے بارے میں بین الاقوامی برادری کو آگاہ کر رہے ہیں جبکہ پاکستانی قوم بھارتی جارحیت سے نمٹنے کے لیے مکمل تیار ہے۔
مقبوضہ کشمیر بھارت کا حصہ نہیں بلکہ متنازعہ علاقہ ہے، سلامتی کونسل نے فیصلہ سنا دیا، پاکستان کی خصوصی درخواست پر بلائے گئے اجلاس میں مستقل اور غیر مستقل اراکین نے کشمیر کی موجودہ صورتحال کو تشویش ناک قرار دیا اور مسئلے

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں