Wednesday, 14 November, 2018
آہ .... کلثوم نواز

آہ .... کلثوم نواز
جاوید ملک / شب وروز

 

کلثوم نواز سے میری پہلی ملاقات اٹک کے سابق ایم این اے شیخ آفتاب احمد کی رہائش گاہ پر ہوئی تھی ان دنوں مشرف کا اقتدار سوا نیزے پر تھا معزول وزیر اعظم نواز شریف اٹک قلعہ میں بند تھے ۔ ایک آمر کا خوف اس قدر تھا کہ سیاست دان اپنے سایے سے بھی ڈرنے لگے تھے ۔ شیخ آفتاب احمد کے ساتھ میرے تعلقات کبھی بھی خوش گوار نہیں رہے لیکن اس نازک ترین دور میں جب لیگی ڈھونڈنے سے بھی نہیں ملتے تھے انہوں نے میاں خاندان کی میزبانی کرکے بلاشبہ انتہائی دلیری کا ثبوت دیا شیخ آفتاب کی اس ہمت اور استقامت کا ماخذ ان کی زوجہ بیگم خالدہ آفتاب تھیں جنہوں نے مشکل کی اس گھڑی میں اپنے محسنوں کے ساتھ کھڑے ہونے کا فیصلہ کیا اور ہر خمیازہ بھگتنے کیلئے تیار ہوگئیں بیگم کلثوم نواز ان سے بہت محبت کرتی تھیں اور یہ قربانی میاں خاندان آج تک بھلا نہیں سکا۔

کلثوم نواز کے ساتھ پہلی نشست میں ہم گنے چنے صحافی تھے میں نے ایک دو چھبتے ہوئے سوال بھی کئے میرا خیال تھا کہ ایک گھر یلو عورت کو تیکھے سوالوں سے چراغ پاکیا جاسکتا ہے اور خبر تب ہی بنتی ہے جب گفتگو کرنے والا غصے کی چادر اوڑھ لے مگر اس پہلی ہی ملاقات میں وہ مجھے ایک زیرک سیاست دان دکھائی دیں جو اپنے مقصد سے رتی برابر ادھر اُدھر نہ ہوئیں انہوں نے اپنا بیانیہ بغیر کسی خوف کے ہم تک پہنچایا ۔ بعد میں انہوں نے مجھے بلایا میرا نام پوچھا اور انتہائی شفقت سے کہا کہ نوجوان میں پہلوانوں کے خاندان سے ہوں داﺅ پیچ خوب جانتی ہوں ۔

پھر سب نے دیکھا ایک گھریلو خاتون نے تن تنہا اپنے شوہر ،پارٹی اور جمہوریت کی جنگ لڑی اس دور میں کلثوم نواز سے رابطہ بھی جرم تھا ۔ راولپنڈی کے چوہدری تنویر نے اپنے گھر میں جلسہ رکھ لیا انتظامیہ نے ان کا جلوس نکال دیا چوہدری تنویر نے بھی پھر برسوں اس وفاداری کا قرض چکایا ۔

میاں خاندان کی سعودی منتقلی سے قبل بارہا بیگم کلثوم نواز سے ملاقات رہی مشکلات کی آندھیوں کے سامنے پوری استقامت کے ساتھ کھڑی اس عورت کے ساتھ عقیدت کا رشتہ استوار ہوگیا میں اکثر برملہ کہا کرتا تھا کہ کلثوم نواز نے مشرقی عورت کے وقار کو بلند کیا جب اس کے مجازی خدا پر مشکل گھڑی آئی وہ گھر کی چاردیواری سے نکلی اور اس طاقت سے لڑی کہ وقت کے آمر کے بھی پسینے چھوٹ گئے اس نے اپنی حکمت سے شوہر کو مشکل سے نکال لیا ۔میرا یہ ماننا ہے کہ آج مسلم لیگ (ن) جن دگرگوںحالات کا شکار ہے اگر کلثوم نواز بستر مرگ پر نہ ہوتیں تو شاید حالات اس قدر بدتر بھی نہ ہوتے ۔ مریم نواز اپنی والدہ کا عکس ہیں ہمت اور دلیری میں بالکل اپنی ماں پر گئی ہیں لیکن ان کا انتہائی جذباتی پن ان کیلئے مشکلات کے نت نئے راستے کھولتا رہتا ہے کاش وہ اپنی ماں سے حکمت اور تدبر بھی سیکھ لیتیں ۔

کلثوم نواز آج ہمارے درمیان نہیں ہیں لیکن ان کی شجاعت ہمیشہ زندہ رہے گی ان کی شفقت میرے لیئے اثاثہ ہے برسوں بعد بھی جب ان سے سامنا ہوا انہوں نے ہمیشہ انتہائی محبت کا ثبوت دیا آخری بار اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں ایک تقریب کے دوران ان سے آمنا سامنا ہوا انہوں نے نام لے کر کئی صحافی دوستوں کی خیریت دریافت کی انہوں نے مشکل دور میں ساتھ دینے والے تمام ساتھیوں کو آخری سانس تک یاد رکھا چونکہ پارٹی کے معاملات میں بالکل دخل نہیں دیتی تھیں اس لیئے شاید بہت سارے لوگوں کو ان کا جائز مقام نہ دلوا پائی ہوں مگر ان کی کوشش اور خلوص میں کبھی کمی نہیں دیکھی ۔

مجھے دکھ ہے کہ اس عظیم عورت نے زندگی کے آخری لمحات بہت تکلیف میں گزارے جب وہ موت اور زندگی کی جنگ لڑرہی تھی تو نواز شریف اور مریم کو ان کے پاس رکنے نہ دیا گیا اور جب وہ زندگی کی آخری سانسیں ہاررہی تھیں تو ان کا شوہر اور بیٹی قید و بند میں تھے ۔ لیکن ہماری تاریخ سیاست کے ایسے ہی گھناﺅنے کھیلوں سے عبارت ہے بیگم کلثوم نواز کی وفات نے جہاں ہم سے جمہوریت کے ایک اور داعی کو چھین لیا ہے وہیں نظام کی بے رحمی کو بھی کھول کر رکھ دیا ہے ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  92545
کوڈ
 
   
مزید خبریں
میڈیا کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی نے اظہر صدیق ایڈوووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی۔ جس میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے قوانین کی پاسداری نہ کرنے کی نشاندہی دہی کی گئی۔
صوبہ بلوچستان کے ضلع تربت میں کالعدم تنظیموں سے تعلق رکھنے والے 15 اہم کمانڈروں سمیت تقریباً 200 فراری ہتھیار ڈال کر قومی دھارے میں شامل ہوگئے ہیں۔ تقریب کے مہمان خصوصی وزیراعلیٰ بلوچستان میرعبدالقدوس بزنجو تھے۔ اب تک ایک ہزار 8 سو کے قریب فراری ہتھیار ڈال کر قومی دھارے میں شامل ہوچکے ہیں۔
سابق وزیراعظم اور حکمران جماعت کے سربراہ میاں محمد نواز شریف کی کل سعودی عرب روانگی کا امکان ہے۔ جہاں وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف پہلے سے موجود ہیں۔ جبکہ وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق بھی پی آئی اے کی پرواز کے ذریعے اہلخانہ کے ہمراہ سعودی عرب روانہ ہوگئے ہیں
مسجد اقصیٰ کے امام وخطیب الشیخ اسماعیل نواھضہ نے برما میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کی شدید مذمت کی اور عالم اسلام پر زور دیا کہ وہ روہنگیا مسلمانوں کو ریاستی جبر وتشدد سے نجات دلانے کے لیے موثر اقدامات کریں

مقبول ترین
خیبر پختون خوا پولیس کے اعلیٰ افسر ایس پی طاہر داوڑ کا جسد خاکی افغانستان نے پاکستان کے حوالے کردیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ شہید ایس پی طاہر داوڑ کا جسد خاکی جلال آباد میں پاکستان قونصل خانے کے اعلیٰ عہداروں کے حوالے کر دیا گیا ہے
سابق وزیراعظم نواز شریف نے العزیزیہ ریفرنس میں صفائی کا بیان قلمبند کرانا شروع کر دیا۔ پہلے روز 50 عدالتی سوالات میں سے 45 کے جواب ریکارڈ کرا دیئے۔ باقی سوالات پر وکیل خواجہ حارث سے مشاورت کے لیے وقت مانگ لیا۔
فلسطین میں قابض اسرائیلی فوج کے معاملے پر اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا بند کمرا اجلاس بے نتیجہ ختم ہوگیا۔ میڈیا کے مطابق غزہ میں قابض اسرائیلی فوج نے ظلم وبربریت کی انتہا کررکھی ہے، آئے دن نہتے فلسطینیوں کو فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ
چند روز قبل اسلام آباد سے اغوا ہونے والے خیبر پختونخوا پولیس کے ایس پی طاہر خان داوڑ کو مبینہ طور پر افغانستان میں قتل کر دیا گیا۔ خیبر پختونخوا پولیس کے ایس پی طاہر خان داوڑ 27 اکتوبر کو اسلام آباد سے لاپتہ ہوئے تھے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں