Sunday, 31 May, 2020
بھارت کا ’’ہندومیڈیا‘‘ میڈیا !

بھارت کا ’’ہندومیڈیا‘‘ میڈیا !
عمر چوہدری کا کالم اگلا مورچہ

 

’’ہندومیڈیا‘‘ اس بلکتے ''کتے'' کی طرح ہے جس کی' دُم' پر پائوں رکھ دیا جائے اور وہ سر بازار چیختا چلاتا!دُم کو مروڑے دیتا چلا جاتا ہے لیکن کتے سے کوئی نہیں پوچھتا کہ سر بازار ''دُم پھیلانے'' کا مشورہ آخر کس نے دیا تھا بس یہی حال ''مودی سرکار'' کا ہے کتے کی دُم کی طرح ''بازار'' میں پھیلانے کی کوشش کرتی ہے اور پھر ''دُم دبائے'' جانے پر 'واویلا ،چیخ و پکار'۔ اس پر بھارتی میڈیا کا ''ہندوانہ'' کردار ہمیشہ یہ ثابت کرتا ہے کہ بھارتی میڈیا بھی ''ہندو'' ہی ہے آج کل بڑے ''دھڑلے'' سے بھارتی ''اینکرز'' اپنی حکومت کی خوشنودی کیلئے ''پیڈ'' پروگرامز میں پاکستان پر ''چڑھ دوڑنے'' اور ''سٹرائیک'' کے ''دعوے'' کر رہے ہیں لیکن اگر ان کرایے کہ ٹٹو اینکروں کو فرصت ملے تو ماضی پر ایک نظر ضرور دوڑا لیں ۔انہیں، بھارتی سرکار اور سینا کو اپنی ''اوقات'' یاد آ جائے گی۔

 تحریک پاکستان سے قیام پاکستان تک ہندوئوں نے سوچی سمجھی سازش کے تحت مسلمانوں کے خلاف جی بھر کر''سازشی'' کردار کھیلا، مسلمانوں کی آبادیوں، مسلمانوں کی املاک ،عورتوں،بوڑھوں اور بچوں کو تختہ مشق بنائے رکھا ۔تاریخ گواہ ہے کہ ان مشکل اور صبر آزما ایام میں بھی مسلمانوں نے اخلاقیات سے عاری ہونے کا مظاہرہ نہیں کیا اپنی جانوں،املاک اور جمع پونجی گنوا کر 'پاکستان' حاصل کر لیا جس کی اساس کلمہ طیبہ پر رکھی گئی لیکن دنیا کے نقشے پراسلامی مملکت کا وجود ہندوئوں کو کہاں برداشت تھا۔ قیام پاکستان سے ہی اس کے خلاف سازشوں اور ریشہ دوانیوں کا بازار گرم کر دیا گیا تاہم اللہ تعالیٰ نے لٹے پٹے مسلمان مہاجروں کو استقامت بخشی ۔

1948ء میں بھارت نے نوزائیدہ مملکت کے خلاف جنگ مسلط کرنے کی کوشش کی جس کا پاک فوج نے ڈٹ کر مقابلہ کیا اور دشمن کو ناکوں چنے چبوا دیے 1948ء سے 1965ء تک کی الگ داستان ہے 65ء میں بھی بھارت نے رات کے اندھیرے میں غیر اعلانیہ جنگ تھوپ دی لاہور کے جم خانہ کلب میں جشن منانے کے آرزو مند ٹڈی دل جرنیل اور ان کی سپاہ کو بی آر بی میں ڈبو کر پاکستان آرمی سرخرو رہی بھارتی جرنیل اپنی سرکاری جیپ اور اہم سرکاری دستاویزات چھوڑ کر گنے کے کھیتوں میں چھپ گیا جسے بعد ازاں اس کے کمانڈر نے بر آمد کر کے محفوظ مقام تک پہنچایا۔ سکھ کمانڈر اپنی کتاب میں لکھتا ہے کہ جیپ چھوڑ کر بھاگنے والا جرنیل جب انہیں ملا تو اس کے رینک اور بیجز غائب تھے میں نے اسے ڈانٹتے ہوئے پوچھا کہ'' تم جرنیل ہو'' اس وقت وہ کانپ رہا تھا اور خوف سے اسکی گگھی بندھی ہوئی تھی بھارتی اینکرز ذرا اس جرنیل کا حسب نسب معلوم کر لیں۔

 یہ 27فروری 2019ء تو ابھی کل کی بات ہے ابھینندن کو مل لیں انہیں پاکستانی طیارے کے انٹر سیپٹ کرنے کی داستان سنا دے گا جب جلتے طیارے سے چھلانگ لگانے کے بعد دیہاتیوں کے ہتھے چڑھے ونگ کمانڈر کو پاکستانی فوج کے افسروں اور جوانوں نے ہی بچایا تھا آج اس سورمے کا یونیفارم ،پسٹل اور دیگر لوازمات پی اے ایف میوزیم کراچی میں نمائش کے لئے رکھے گئے ہیں وہ تو ہماری فراخدلی ہے کہ ہم نے اسے واپس بھیج کر بھارتی سرکار اور انڈین ایئر فورس کو دم پھیلانے سے منع کر دیا ورنہ اپنے پروگرام تو بقول بھارتی اینکروں کے ''سٹرائیک'' کرنے کا تھا اور یہ بھی یاد ہے ناں کہ اس بار'' میدان'' اور'' ایکشن'' کرنے کا اعلان ایک دن قبل ڈی جی آئی ایس پی آر نے کیا تھا اگر بھارتی اینکروں کو فرصت مل جائے تو یوم دفاع کے موقع پر پی اے ایف کے زیر اہتمام تقریب میں ونگ کمانڈر نعمان اور سکوارڈن لیڈر حسن کی گفتگو کی ٹیپ بھی ضرور سن لیں تسلی ہو جائے گی ۔

بھارتی ''دُم'' پر پائوں اور اس کی ''تڑپ'' کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جاسکتا ہے کہ بھارتی حکومت اپنے مکروہ منصوبوں کیلئے جن غیر ملکی طاقتوں کے اشارے پر ناچتی ہے وہ تو محض وقتی'' مفاد'' کی خاطر اسے استعمال کرتے ہیں ورنہ کارگل وار کے دوران ہندوسپاہیوں کی لاشیں ''پیک ''کرنے کیلئے تابوت کم پڑ گئے تھے اور ان کے کئی ایئر پورٹ تابوتوں کی ترسیل کے جنکشن بن کر رہ گئے تھے کارگل وار کا زخم شاید بھارتیوں کو نہیں بھول رہا جب کرنل شیر خان نے 23کلومیٹر تک گھس کر انکے بڑے اسلحہ کے اڈے کے بخیے ادھیڑ دیے تھے اسے کہتے ہیں ''گھس کر مارنا''۔ فلموں میں ''بڑھکیں مارنے'' اور عملی ''گھس کر مارنے'' میں بہت فرق ہوتا ہے۔

 بھارتی اینکروں کو چاہیے ان سپاہیوں اور خصوصا ً ان مہلائوں(خواتین) کے انٹرویو بھی کریں جنہیں ''جنسی زیادتی'' کا شکار کیا گیااور پھر موت کے گھاٹ اتا ر دیا گیا، کبھی وہ داستان بھی سنائیں جب ''زندہ سپاہیوں'' کو ''شہید'' قرار دے کر ''پرم ویر چکرا'' دے ڈالا گیا۔ بھارتی اینکروں کو فراموش نہیں کرنا چاہیے کہ اب وہ دور نہیں رہا کہ ان کے کالے کرتوت چھپے رہیں ۔''کشمیر کے لاک ڈائون'' نے ابھی تک ان کی آنکھیں نہیں کھولیں جب آسمانوں کے بادشاہ نے ساری دنیا کو ''لاک ڈائون'' کا مزہ چکھا دیا اور شام کا وہ بچہ بھی یاد ہو گا جس نے ظلم کی انتہا کے بعد کہا تھا کہ ''اب سب کچھ اللہ کو بتا ئوں گا'' اپنی حکومت کی ''سیاہ کاریوں'' کی رپورٹنگ کریں'پروگرام کریں'حقائق بتائیں'صحافت کے معنی سیکھیں۔ لیکن ہندو میڈیا منافق تھا، منافق ہے اور منافق ہی رہے گا !

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  80699
کوڈ
 
   
متعلقہ کالم
صحافت پڑھتے پڑھاتے قریباً پندرہ برس گزر گئے اور تجربے سے یہی معلوم ہوا ہے کہ کتابی صحافت اور عملی صحافت قدرے مختلف ہیں۔ تاہم اس کا مطلب ہرگز یہ نہیں کہ صحافتی تعلیم حاصل کرنا ضروری نہیں جیسا کہ کچھ دوستوں نے سمجھ لیا ہے۔
ٹھیک بیس سال، پانچ ماہ بعد جب میں نیویارک کے جان ایف کینیڈی ایئرپورٹ پر اترا تو مجھے اندازہ تھا کہ بہت کچھ بدل چکا ہوگا۔ ان بیس سالوں میں تو دنیا ہی بدل چکی ہے اور وہ بھی اس لیے نہیں کہ دنیا خود اس تباہی کا منظر دیکھنا چاہتی تھی۔
مجھ سے عید ملتے ہوئے میرے دوست میں وہ گرم جوشی نہیں تھی جو ہمیشہ سے اس کے مزاج کا حصہ رہی ہے۔ میں نے پوچھا تو کہنے لگا کچھ نہیں بھائی ۔ بس طبیعت کچھ ٹھیک نہیں۔۔ لیکن ایسا کہتے وقت اس نے منہ دوسری طرف پھیر لیا۔
آپ تاریخ کی ورق گردانی کر کے دیکھ لیں، جب بھی ظالم حکمران عوام پر ظلم کرتے اور ان پر آخری دروازہ بھی بند کر دیتے ہیں تو لوگ بپھر کر سب و شتم کے حبس سے باہر نکل آتے ہیں اور پھر حال انقلابِ فرانس جیسا ہی ہوتا ہے۔

مزید خبریں
کورونا وائرس پاکستان ہی نہیں ہی دنیا بھر میں اپنی پوری بدصورتی کے ساتھ متحرک ہے ، تشویشناک یہ ہےاس عالمی وباء کے نتیجے میں ہمارے ہاں اموات کا سلسلہ بھی شروع ہوچکا،
وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کورونا وائرس کے مزید پھیلاؤ کے خطرے کو مدنظر رکھتے ہوئے اضلاع کی سطح پر قرنطینہ مرکز بنانے کی ہدایت کردی ہے۔
وزارت قانون و انصاف نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی منظوری سےخالد جاوید خان کو انور منصور کی جگہ پاکستان کا نیا اٹارنی جنرل تعینات کرنے کا باضابطہ نوٹی فیکیشن جاری کر دیا ہے۔
اسلام آباد: ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) اور مائیکروسافٹ نے Imagine Cup 2020میں نیشنل یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی (نسٹ)، اسلام آباد کی ٹیمFlowlines کو نیشنل فائنل 2020کا فاتح قرار دیاہے۔نسٹ کی ٹیم نے ملک بھر کی 60 فائنلسٹ ٹیموں میں بہترین کارکردگی دکھائی۔

مقبول ترین
پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما راجہ ظفر الحق کا کہنا ہے کہ ایٹمی دھماکوں کا کریڈٹ سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کو جاتا ہے۔ میڈیا کے مطابق وزیر ریلوے شیخ رشید نے دعویٰ کیا تھا کہ ملک میں ایٹمی دھماکے انہوں نے، گوہر ایوب اور
وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کا کہنا ہے کہ ساری قوم کو یہ بتانا چاہتا ہوں کہ ایٹمی دھماکا راجا ظفر الحق، گوہر ایوب اور میں نے کیا، نواز شریف سمیت ساری کابینہ ایٹمی دھماکے کے خلاف تھی۔ لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران شیخ رشید احمد نے
معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ پاکستان میں کورونا کے مقامی سطح پر پھیلاؤ کی شرح 92 فیصد ہے لہٰذا عوامی مقامات پر ماسک کے استعمال کو لازمی قرار دے رہے ہیں۔ وزیراعظم کے معاونین خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا اور
وزیر مملکت برائے امور کشمیر شہریار آفریدی بھی کورونا کا شکار ہوگئے ہیں۔ وزیر مملکت نے قوم کے لیے دعا دی اور کہا رب ذوالجلال سے دعا ہے کہ وطن عزیز کو موذی وباء سے محفوظ بنائے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں