Monday, 17 December, 2018
عبدالستار ایدھی۔ایک انسان ایک مسیحا۔۔وجود انسانیت کا ترجمان!!!!

عبدالستار ایدھی۔ایک انسان ایک مسیحا۔۔وجود انسانیت کا ترجمان!!!!
تحریر: ارباب جہانگیر ایدھی

دنیا میں سینکڑوں مختلف مذاہب ہیں جن میں مزید سینکڑوں مختلف فرقے ہیں اور ہر فرقے کے عقائد کے ساتھ  لاکھوں کروڑوں پیروکار ہیں۔ دنیا بھر میں عورت کی کوکھ سے پیدا ہونے والا بچہ ایک انسانی اساس پر جنم لیتا ہے لیکن لڑکپن سے بالغ عمری کے درمیان ہی اس پر کسی مذہب یا فرقے کی چھاپ لگ چکی ہوتی ہے اور باقی ماندہ زندگی اسی مخصوص طرز کی کشمکش میں گزرجاتی ہے۔ کیا کبھی کسی نے سوچا کہ انسان کو کیوں پیدا کیا گیا؟؟ دنیا میں جتنے بھی مزاہب ہیں سب میں جو ایک قدر مشترک ہے وہ ہے "انسانیت"!! کوئی بھی مذہب انسانیت کے استحصال کا پرچار نہیں کرتا بلکہ ہرایک کی بنیادی اساس بھی انسانی فلاح و بہبود پر قائم ہے۔
 ذرا سوچیں! دنیا میں کتنے لوگ اور کونسے طبقے کے لوگ اس بنیادی اساس پر زندگی کو گامزن کیے ہوئے ہیں؟؟ہر مذہب و فرقے و شہریت کی تقسیم سے پہلے دنیا کے ہر انسان کا ہر دوسرے انسان سے "انسانیت" کا رشتہ قائم ہے لیکن مذہبوں، فرقوں اور پارٹیوں نے ان رشتوں کو مختلف چادروں میں اوڑھ کر چھپا دیا اور آپس میں تقسیم در تقسیم کر دیا۔ لیکن اللہ تعالٰی اس دنیا میں ایسے خاص انسانوں کو بھیجتا ہے جو اپنی زندگی اسی انسانی رشتے پر غالب چادروں کو اتار کر بلاامتیاز ان کے دکھ درد سنتا ہے ان کیلیے مسیحا کا کردار ادا کرتا ہے۔ایسے انسان وہی ہوتے ہیں جو انسانیت کی تخلیق کے مقصد کو واضع کرتے ہیں۔ایسے چند خاص انسانوں میں پاکستان کی دھرتی پر بھی عبدالستار ایدھی کے نام سے جنوری 1928 میں ایک فرشتہ صفت انسان نمودار ہوا جس نے بالآخر پوری دنیا میں تخلیق انسانیت کے مقصد کو عملی نمونہ کے طور پر پیش کیا اور 8 جولائی2016 کو اپنے تخلیق کار کے پاس پہنچ گئے۔ (انا للہ و انا الیہ راجعون)میرے والد صاحب اکثر کہا کرتے تھے۔۔۔ بیٹا "انسان ہی انسان کا دارو ہے" دراصل وہ انسانی تخلیق کے مقصد کو ایک لائن میں بیان کر دیتے تھے اور ایدھی صاحب کو دیکھ کر لگتا تھا کہ یہی وہ 'دارو ہے۔ ہم اپنے گھر و معاشرے کا جائزہ لیں کہ کتنے لوگ حقیقی انسان ہیں تو شاید ہمیں اکا دکا ملیں گے ہاں مگر کئی مومن، مسلمان۔مولوی، ذاکر، صوفی، سردار، مہر، خان، سیٹھ، چوہدری و دیگرکئی ہزاروں لاکھوں مل جائیں گے یہی المیہ ہے کہ ہم اپنی بنیادی اساس سے کوسوں دور ہوتے چلے جا رہے ہیں۔ہم کہنے کو بہت ترقی کر رہے لیکن ہم حقیقی طور پر اپنی بنیادی قدریں کھوتے چلے جا رہے ہیں۔
عبدالستار ایدھی صاحب ایک سادہ سے عام پاکستانی تھے جو نہ تو مولوی تھے، نہ ذاکر، نہ عالم، نہ ہی کوئی مذہبی و روحانی پیشوا اور نہ ہی کسی سیاسی پارٹی، تجارتی، سرکاری و غیرسرکاری تنظیم کے سربراہ۔۔۔۔۔۔بس وہ تھے تو صرف ایک انسان۔۔۔ عبدالستار ایدھی جیسے انسانوں کیلیے نہ تو کوئی شیعہ، نہ سنی، نہ بریلوی، نہ وہابی۔، نہ مسلمان، نہ ہندو، نہ عیساءی، نہ کوئی بلوچی، نہ ہی پنجابی، نہ ہی سندھی، نہ ہی پختون اور نہ ہی کوئی دیگر تقسیم بس ایدھی صاحب کیلیے بس انسان ہونا کافی ہے اور بس پھر وہ ان کیلیے باپ بھی ہیں، ماں بھی ہیں، بھائی بھی ہیں، بہن بھی ہیں اور مسیحا بھی!!!!!!آج ایدھی صاحب ہم میں موجود نہیں مگر سب مذہبوں، فرقوں اور قوموں کو ایک عبدالستار ایدھی چاہیے۔
 آئیں سب مل کر عہد کریں کہ ہم ایدھی صاحب کے مشن کی تکمیل میں اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے۔ اگر ہم اپنا محاسبہ کریں تو ہماری اساس بھی انسانی ہے مگر ہم کہاں کھڑے ہیں۔ ہم سب میں ایک عبدالستار ایدھی موجود ہے لیکن اس میں جان ڈالنا ہو گی تب آپ کی آنکھیں ایدھی کی آنکھیں بن جائیں گیں اور پھر آپ کو اردگرد لاوارث، یتیم، مسکین، غریب، مریض، لاچار، مستحق جیسے لوگ نظر آنا شروع ہوجائیں گے۔ نفرتوں کی چادریں اتاریں اور بے لوث بلا امتیاز انسانیت کیلیے 'دارو' بن جائیں۔ یہی ایدھی کا خواب ہے اور یہی ہماری حقیقت ہے

 

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  52647
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
امریکی کانگریس نے قرارداد منظور کی ہے کہ امریکہ یمن سعودی جنگ میں سعودی عرب کی حمایت سے دستبردار ہو جائے.امریکہ کی وزارت خارجہ کے وزیر پومپیو نے کہا کہ ہم امریکی کانگریس کی منظور کی گئی قرارداد کا احترام کریں گے.
کل پارلیمنٹ میں پاکستان کی پارلیمانی تاریخ کا نہایت شرم ناک واقعہ پیش آیا جب حکومتی بنچوں سے ایک غیرمسلم ممبر پارلیمنٹ نے شراب پر پائبندی کا بل پیش کیا جسے پوری پارلیمنٹ نے متفقہ طور پر مسترد کردیا.صرف ایم ایم اے ممبرز نے رامیش
ملی یکجہتی کونسل جو پاکستان کی دینی و مذہبی جماعتوں کا ایک اتحاد ہے اور جسے ملک کے اندر اور باہر مسلم عوام میں بہت زیادہ احترام حاصل ہے، کی طرف سے 13دسمبر 2018کو اسلام آباد میں حمایت فلسطین کانفرنس کے انعقاد کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
امریکہ روز اول سے ایران کے اسلامی انقلاب کے خلاف ہے ۔ پاکستان کے ایٹمی طاقت بننے کے بعد وہ مزید خلاف ہو گیاہے۔ جب ترکی بھی اسلامی ہو گیا ہے۔ تو اس کا پیمانہ صبر لبریز ہو گیا اور وہ عالم اسلام سے خوف زدہ ہو گیا ۔ عراق میں جنگ کر کے،

مزید خبریں
دنیا بھر میں بولی اور سمجھی جانی والی زبانوں میں سے اردو ہندی دنیا کی دوسری بڑی زبان بن چکی ہے، جبکہ اول نمبر پر آنے والی زبان چینی ہے اور انگریزی کا نمبر تیسرا ہے۔ روزنامہ ’واشنگٹن پوسٹ‘ نے یونیورسٹی آف ڈیسلڈرف الرچ کی 15 برس کی مطالعاتی رپورٹ
ہمارے نیم حکیموں کو کون سمجھائے کہ بلکتے، سسکتےعوام کو جمہوریت سے بدہضمی ہونے کا خوف دلانا چھوڑ دیجئے حضور! 144 معالجین کے مطابق انسانی معدے کی خرابی تمام بیماریوں کی ماں ہوتی ہے اور معدے کی خرابی سے ہی بدہضمی، ہچکی، متلی، قے، ہاتھوں میں جلن کا احساس، بھوک کا نہ لگنا، پژمردگی اور چہرے پر افسردگی کے اثرات چھائے
یہ سوال انتہائی اہم ہے کہ پارلیمنٹ لاجز میں ہونے والی غیر اخلاقی حرکتوں کے متعلق جمشید دستی کو کس نے ویڈیو ثبوت اور ”ناقابل تردید“ ثبوت فراہم کیے ہیں؟ یہ سوال بھی اہم ہے کہ آخر جمشید دستی نے یہ ا یشو کیوں چھیڑا ؟ اس کے نتیجے میں جو صورتحال پیش آسکتی ہے اس کے دور رس نتائج نکل سکتے ہیں۔
دہشت گردوں کی طرف سے جنگ بندی کے اعلان کے صرف 48 گھنٹے بعد ہی دارالحکومت اسلام آباد کودہشت گردی کا نشانہ بنادیا گیا۔

مقبول ترین
جنگ کسی بھی معاشرے کیلئے نہ صرف بربادی کا سامان فراہم کرتی ہے بلکہ جنگ زدہ علاقے معاشی طور پر بھی ترقی اور تعمیر کے عمل میں پیچھے رہ جاتا ہے۔ جنگوں کی وجہ سے تقسیم ہونے والے خاندانوں کے دل کی کیفیت اور کرب تو وہی لوگ سمجھ سکتے ہیں
امریکی کانگریس نے قرارداد منظور کی ہے کہ امریکہ یمن سعودی جنگ میں سعودی عرب کی حمایت سے دستبردار ہو جائے.امریکہ کی وزارت خارجہ کے وزیر پومپیو نے کہا کہ ہم امریکی کانگریس کی منظور کی گئی قرارداد کا احترام کریں گے.
سابق صدر آصف زرداری نے کہا ہے کہ گرفتار ہوا تو کیا ہوگا، جیل دوسرا گھر ہے، ان کو غلط فہمی ہے کہ ہم خوف میں مبتلا ہیں، اداروں کو کمزور نہیں کرنا چاہتے۔ سیاست سوچ سمجھ کر کی جاتی ہے، ان کو کھیلنا آتا ہی نہیں، یہ انڈر 16 کھلاڑی ہیں۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے سانحہ اے پی ایس کے شہدا اور والدین کو سلام اور خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم سانحہ آرمی پبلک سکول (اے پی ایس) کے شہدا کو نہیں بھولے

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں