Friday, 18 October, 2019
تکفیر کرنا اکابر اور آئین پاکستان کیخلاف ہے، ڈاکٹر قبلہ ایاز

تکفیر کرنا اکابر اور آئین پاکستان کیخلاف ہے، ڈاکٹر قبلہ ایاز
جامعۃ المصطفیٰ کے زیر اہتمام منعقدہ تقریب

اسلام آباد۔ اتحاد امت کمزوری اور قوت دونوں صورتوں میں ضروری ہے،اسے ضرورت کے بجائے عبادت و فریضہ سمجھ کر انجام دیا جائے۔ ایک دوسرے کے مسلک کو کافر کہنا اکابر اور آئین پاکستان کیخلاف ہے، ان خیالات کا اظہار چئرمین اسلامی نظریاتی کونسل ڈاکٹر قبلہ ایاز نے جامعۃ المصطفیٰ کے زیر اہتمام منعقدہ تقریب سے کیا۔

انھوں نے کہا کہ امام جعفر صادقؑ کی تعلیمات پوری امت کے لیے سرمایہ افتخار ہیں۔ پاکستان میں اکثریت فقہ حنفی کے ماننے والوں کی ہے اور امام ابوحنیفہ امام جعفر صادق کے شاگرد ہیں ،بد قسمتی سے امام ابو حنیفہ اور امام جعفر صادقؑ کا یہ تعلق ہمارے نصاب کا حصہ نہیں ہے جس کی وجہ سے مدارس،یونیورسٹیز،کالجز اور سکول کے طلبہ اس تعلق سے آگاہ نہیں ہوتے ۔

انہوں نے تاریخ پاکستان پر بات کرتے ہوئے کہا کہ اس خطے کے مسلمان ہمیشہ مل جل کر رہے ہیں۔ تحریک پاکستان شیعہ سنی اکابرنے ملکر چلائی اور وطن عزیز کے حصول کے لیے مشترکہ جدو جہد کی ،اسی طرح جب ختم نبوت کا مسئلہ پیش آیا تو ختم نبوت کی تاریخ ساز جدو جہد میں تمام مسالک کے علمائے کرام شریک رہے۔ان کا کہنا تھا کہ ملی یکجہتی کونسل اور متحدہ مجلس عمل جیسے تاریخ ساز اتحادوں میں بھی تمام مسالک کے علمائے کرام شریک رہے ۔ جب ۱۹۷۳ء کے آئین کو بنانے میں تمام مسالک کا حصہ رہا ہے۔ اس میں ختم نبوت کا اقرار نہ کرنے پر قادیانیوں کو اتفاق رائے سےغیر مسلم قرار دیا  گیا ۔ 

انہوں نے مزید کہا کہ اس کے علاوہ آئین پاکستان میں تمام موجود مسالک کو مسلمان مانا گیا ہے ۔ آج اگر کوئی گلی  یاچوراہے  پر کھڑا ہو کر کسی دوسرے مسلک کو کافر کہتاہے تو یہ جہاں ان اکابر کے طریقے کے خلاف ہے وہیں آئین پاکستان کے بھی خلاف ہے۔ہم سب ایک جسم و جان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جامعۃ المصطفیٰ معاشرے میں  ہم آہنگی لانے میں اہم کردار ادا کر رہا ہے اور ایک امت کی تشکیل میں کوشاں ہے۔

تقریب سے ملی یکجہتی کونسل کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر ثاقب اکبر نے امام جعفر صادقؑ کی سیرت پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کی علمی خدمات انسانیت کا عظیم ورثہ ہیں اور انہوں نے ہر شعبہ میں نامور شخصیات تربیت کیں۔ انہوں نے کہا کہ جابر بن حیان جن کو علم کیمیا کا باپ کہا جاتا ہے، اسی طرح فقہ و حدیث ،فلسفہ و کلام میں بھی آپ کے شاگرد ید طولی رکھتے تھے ۔بعض لوگوں نے کہا کہ امام ابوحنیفہ امام جعفر صادقؑ کے ہم عصرہیں وہ ان کے شاگرد کیسے ہو سکتے ہیں؟ ان کو مولانا شبلی نعمانی نے جواب دیا کہ فضل و کمال میں کسوئی امام جعفر وصادق ؑ کے ہم پلہ نہیں ہے حدیث و فقہ بلکہ تمام مذہبی علوم اہلبیتؑ کے گھر  سے نکلے ہیں اور گھر والے ہی گھر کی بات کو بہتر جانتے ہیں۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کل مسالک علماء بورڈ کے مولانا تحمید جان ازہری  نے کہا کہ مسائل کی وجہ باہمی دوریاں ہیں انہوں نے بتایا کہ وہ چند روز پہلے اہلسنت علما کا ایک وفد لیکر  پارا چنار گئے تھے، اور وہاں پہنچنے پر شیعہ علماء نے ہمارا فقید المثال استقبال کیا۔ انہوں نے بتایا کہ وہاں پر خطاب کرتے ہوئے میں نے کہا کہ مدینہ میں نبی اکرم (ص) کی آمد سے پہلے اوس خزرج کی دشمنیاں تھیں اسلام آیا تو یہ لوگ باہم شیر و شکر ہو گئے ایک یہود ی کو یہ بات کھٹکتی تھی اس نے ایک منصوبے کے تحت پہلے والی دشمنی کو بھڑکایا  اوس خزرج  سے تعلق رکھنے والے صحابہ جب آپس میں لڑنے کے لیے آمادہ ہو گئے  تو نبی اکرم (ص) کو پتہ چلا آپ نے فرمایا کہ میں تمہارے درمیان موجود ہوں اور تم جاہلیت کی طرف پلٹ گئے نبی اکرم (ص) کا خطبہ سن کر اوس و جزرج سے تعلق رکھنے والے صحابہ کرام ایک دوسرے کو گلے لگا کر رو رہے تھے آج ہمارے لیے بھی وہی مقام ہے کہ ہمیں اللہ کے نبی (ص)نے ایک امت بنایا تھا مگر ہم آپس میں لڑ رہے ہیں آج ہمیں بھی  صحابہ کرام کی طرح ایک دوسرے کے گلے لگا کر رونا چاہیے۔

سیمینار سے ڈاکٹر ساجد سبحانی نے اپنے خطاب میں کہا کہ سب سے پہلے نبی اکرم (ص) کی معرفت کو حاصل کرنا ضروری ہے کیونکہ کسی بھی شخصیت کی بلندی کو جاننے کے لیے پہلے مرحلے پر اس کی پہچان ضروری ہوتی ہے اور جب پہچان ہو جاتی ہے تو دوسرے مرحلے میں اس شخصیت کی محبت پیدا ہو جاتی ہے یہاں پر بھی معرفت کے بعد نبی اکرم (ص) کی محبت ہر مسلمان کے ایمان کا لازمی جزء ہے اور محبت کا دعوی اس وقت تک کامل نہیں ہو سکتا جب تک آپ  کی  پیروی نہ کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ آج امت مسلمہ میں اطاعت رسول کا فقدان ہے اس لیے  سیرت کے اس پہلو کو عام کرنے کی ضرورت ہے۔

جامعۃ المصطفیٰ اسلام آباد کے مدیر علامہ انیس الحسین خان نے کہا کہ آج وقت آ گیا ہے کہ ہم اتحاد امت کو ایک اسلامی اصول کے طور پر قبول کریں اور امت کو عملی طور پر  ایک بنائیں ۔ انہوں نے کہا کہ ایرانی سپریم لیڈر سید علی خامنہ ای نے اہلسنت کے مقدسات کی توہین کو حرام قرار دیا ہے اور عراق کے نامور فقیہ آیۃ اللہ سید علی حسینی سیستانی نے کہا کہ اہلسنت ہمارے بھائی نہیں ہمارے وجود کا حصہ ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ہمیں ان بزرگان کی تعلیمات کے مطابق عمل کرنا چاہیے جو امت کو جوڑنے کا کام کر رہے ہیں

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  68639
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
روس کے ساتھ تعلقات دوستانہ، خوشگوار اور پائیدار بنانے کے سلسلے میں عوامی اور سیاسی سطح پر اتفاق رائے پایا جاتا ہے۔ یہی وہ بنیادی نکتہ ہے کہ عالمی سیاسی حلقوں اور تزویراتی موضوع پر قائم تھنک ٹینکس
پاکستان میں کسی بھی زبان میں سادہ خط پڑھنے اور لکھنے کی صلاحیت کے حامل افراد کو خواندہ کہتے ہیں خواندگی کے حوالے سے ریاست پاکستان کی آئینی ذمہ داریاں اور حکومتی عزم ہے کہ کم سے کم ممکنہ مدت کے اندر ناخواندگی کا خاتمہ کرے گی
کہاں علامہ اقبال اور کہاں میں، چہ نسبت خاک را بہ عالم پاک، کوئی نسبت ہی نہیں، علامہ اقبال وہ ہستی کہ جو ایک ولی کامل تھے ، جنہوں نے غلامی کی دبیز تہوں میں دبی ہوئی قوم کو بیدار کیا، جگایا، اٹھایا اور پھر اس
ہر دور میں انسان نے باہمی رابطے اور آنے جانے کی آسانی کے لیے سڑکیں بنائیں ۔بادشاہ فوجوں کی نقل و حمل اور رسل و رسائل کے لیے بھی سڑکیں تعمیر کراتے تھے ۔جنریلی روڑ جو عرف عام میں جی ٹی روڑ کے نام سے معروف ہے

مقبول ترین
وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ یہ پہلی اسمبلی ہے جو’ڈیزل‘ کے بغیر چل رہی ہے اگر فضل الرحمان کے لوگ میرٹ پر ہوئے تو انہیں بھی قرضے دیے جائیں گے۔ وزیراعظم عمران خان نے نوجوانوں کے لیے ’کامیاب جوان پروگرام‘ کا افتتاح کردیا ہے۔
وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت تحریک انصاف کی کورکمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں پنجاب اور خیبر پختونخوا کے وزرائے اعلیٰ اورتین گورنرز نے شرکت کی۔ حکومت نے مولانا فضل الرحمان سے مذاکرات کے لیے کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے
اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ نوکریاں حکومت نہیں نجی سیکٹر دیتا ہے یہ نہیں کہ ہر شخص سرکاری نوکر ی ڈھونڈے ، حکومت تو 400 محکمے ختم کررہی ہے مگرلوگوں کا اس بات پر زور ہے کہ حکومت نوکریاں دے۔
وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان خطے میں امن اور استحکام کے لئے اپنا کردار ادا کرنے کو تیار ہے۔ ایرانی صدر سے ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا کہ پاکستان اور

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں