Friday, 22 June, 2018
مسئلہ یمن، حکومت اور پارلیمنٹ

مسئلہ یمن، حکومت اور پارلیمنٹ
تحریر: ثاقب اکبر

 

کیا یمن کے مسئلے پر حکومت پارلیمنٹ کی قرارداد کے ساتھ ہے؟ یہ سوال آج نئے سرے سے اس لیے پیدا ہوا ہے کہ قومی اسمبلی کے فلور پر وزیر خارجہ خواجہ آصف نے واشگاف الفاظ میں کہا ہے کہ پاکستان کسی اور ملک اور طاقت کے مفادات کا تحفظ نہیں کرے گا۔ انھوں نے 9مارچ 2018کوکہا اگر ایران اور سعودی عرب میں اختلافات ہیں تو اس کے خاتمے کے لیے دعا گو ہیں لیکن ہم نے کسی کی پراکسی بننے سے انکار کردیا ہے۔ انھوں نے نام لے کر کہا کہ ہم نے یمن کی جنگ میں شرکت نہیں کی۔ ہم نہیں چاہتے کہ امت میں انتشار ہو۔

یاد رہے کہ پاکستان پر سعودی عرب کی طرف سے دباؤ رہا ہے کہ وہ یمن کے خلاف عسکری محاذ پر سعودی عرب کا ساتھ دے لیکن پاکستان کی پارلیمنٹ نے اتفاق رائے سے ایک قرارداد کے ذریعے حکومت کو یہ راہنمائی دی کہ یمن کے مسئلے پر پاکستان جنگ کا فریق نہ بنے بلکہ ثالث کا کردار ا دا کرے۔ اس سلسلے میں 10اپریل 2015ء کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں اس وقت کے وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے قرار داد پیش کی تھی جو اتفاق رائے سے منظور ہو گئی تھی۔

بعدازاں بھی پاکستان پر سعودی دباؤ جاری رہا لیکن پاکستان کا موقف یہ رہا ہے کہ ہم سعودیہ کی داخلی سیکورٹی کے لیے تو تعاون کر سکتے ہیں لیکن پاک فوج کسی اور ملک کے خلاف استعمال نہیں کی جائے گی۔ البتہ گذشتہ دنوں ایک مرتبہ پھر آئی ایس پی آر نے اعلان کیا کہ پاکستان کے فوجی دستے تربیت اور مشاورتی امور کے لیے سعودی عرب روانہ کیے جارہے ہیں۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ پاکستان کے فوجی دستے 1982 سے دو طرفہ معاہدے کے تحت سعودی عرب میں موجود ہیں، جو تربیت اور مشاورتی امور میں خدمات انجام دے رہے ہیں۔

پاکستانی فوجی دستوں کی ان حالات میں سعودی عرب میں موجودگی یقینی طور پرسوال انگیز ہے جب کہ سعودی عرب اور اس کے اتحادی مسلسل غریب اور کمزور ملک یمن پر بمباری اور فوجی کارروائیوں کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ اس سلسلے میں سیاسی اور صحافتی حلقوں میں تشویش کا اظہار کیا جاتا رہا ہے۔

وزیر خارجہ خواجہ آصف کے مذکورہ بیان سے ایک دفعہ پھر پاکستان کی سرکاری پالیسی کے خدوخال اجاگر ہوئے ہیں۔ انھوں نے ماضی میں امریکا کے ایماء پر کئے جانے والے جہاد کو ہدف تنقید بنایا اورکہا کہ ہمارے حکمرانوں نے پاکستانی مفاد کے لیے نہیں بلکہ اپنے ذاتی مفاد کے لیے سمجھوتہ کیا۔ مقتدر قوتوں نے حکمرانی کی خاطر ملک بیچا۔ ہم نے میڈاِن امریکا جہاد لڑا اور جہادی بنائے۔ ہم نے اپنا کیا حال کر لیا ہے۔ اپنے گریبان میں جھانکنا چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکا چاہتا ہے کہ پاکستان ان کی پراکسی بنے لیکن پاکستان امریکا کی پراکسی کبھی نہیں بنے گا۔ انھوں نے مزید کہا کہ نائن الیون کے بعد ہم نے پھر وہی غلطی دہرائی جس کا آج خمیازہ بھگت رہے ہیں، مرواتا کوئی اور ہے لیکن آلہ قتل ہمارے ہاتھ ہوتا ہے۔

اس جرأت مندانہ بیان کے بعد یہ توقع کی جاسکتی ہے کہ پاکستان گذشتہ تجربات سے سبق سیکھتے ہوئے آئندہ پرائی جنگ میں کودنے سے اجتناب کرے گا کیونکہ حکماء کہہ گئے ہیں کہ پرہیز علاج سے بہتر ہے۔ حدیث ہے کہ مومن ایک سوراخ سے دو مرتبہ نیں ڈسا جاتا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  59021
کوڈ
 
   
مزید خبریں
دنیا بھر میں بولی اور سمجھی جانی والی زبانوں میں سے اردو ہندی دنیا کی دوسری بڑی زبان بن چکی ہے، جبکہ اول نمبر پر آنے والی زبان چینی ہے اور انگریزی کا نمبر تیسرا ہے۔ روزنامہ ’واشنگٹن پوسٹ‘ نے یونیورسٹی آف ڈیسلڈرف الرچ کی 15 برس کی مطالعاتی رپورٹ
ہمارے نیم حکیموں کو کون سمجھائے کہ بلکتے، سسکتےعوام کو جمہوریت سے بدہضمی ہونے کا خوف دلانا چھوڑ دیجئے حضور! 144 معالجین کے مطابق انسانی معدے کی خرابی تمام بیماریوں کی ماں ہوتی ہے اور معدے کی خرابی سے ہی بدہضمی، ہچکی، متلی، قے، ہاتھوں میں جلن کا احساس، بھوک کا نہ لگنا، پژمردگی اور چہرے پر افسردگی کے اثرات چھائے
یہ سوال انتہائی اہم ہے کہ پارلیمنٹ لاجز میں ہونے والی غیر اخلاقی حرکتوں کے متعلق جمشید دستی کو کس نے ویڈیو ثبوت اور ”ناقابل تردید“ ثبوت فراہم کیے ہیں؟ یہ سوال بھی اہم ہے کہ آخر جمشید دستی نے یہ ا یشو کیوں چھیڑا ؟ اس کے نتیجے میں جو صورتحال پیش آسکتی ہے اس کے دور رس نتائج نکل سکتے ہیں۔
دہشت گردوں کی طرف سے جنگ بندی کے اعلان کے صرف 48 گھنٹے بعد ہی دارالحکومت اسلام آباد کودہشت گردی کا نشانہ بنادیا گیا۔

مقبول ترین
گڈانی میں سمندر میں نہاتے ہوئے ایک ہی خاندان کے 17 افراد ڈوب گئے، جن میں سے 4 خواتین کی لاشیں نکال لی گئیں۔ ریسکیو ذرائع کے مطابق ایک بچے کو بے ہوشی کی حالت میں جبکہ باقی 10 افراد کو صحیح سلامت ریسکیو کرلیا گیا۔
اب اس وقت بھی یہ فیچر استعمال کرسکتے ہیں۔ واضح رہے کہ بی ٹا ٹیسٹ کے لیے ایک نیا واٹس ایپ ورژن 2.18.189 پیش کیا گیا ہے جبکہ وائس کال کا نیا ورژن v2.18.192 ہے۔ اس کا اصل ورژن بعد میں آئے گا اور ابھی ٹیسٹ کے لیے بی ٹا ورژن گوگل پلے اسٹور پر ریلیز کیا گیا ہے۔
گلوبل آئل اینڈ گیس ڈسکوریز ریویو 2017 کی رپورٹ کے مطابق سال 2017 کی تیسری سہ ماہی کے دوران پاکستان نے تیل و گیس کے 2 بڑے ذخائر دریافت کیے ہیں جبکہ سال کے آخری 3 ماہ کے دوران تیل و گیس کے 4 مزید نئے ذخائر دریافت کیے۔
مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی فائرنگ سے 4 افراد شہید اور متعدد زخمی ہوگئے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے ضلع اننت ناگ میں قابض بھارتی فوج نے محاصرہ کیا اور سرچ آپریشن کے دوران رہائشی علاقے میں فائرنگ

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں