Monday, 25 May, 2020
روہنگیا مظلوم ہیں، اُن کی حمایت لازم ہے:

روہنگیا مظلوم ہیں، اُن کی حمایت لازم ہے:
تحریر: مفتی امجد عباس

 

اِس میں کوئی شک نھیں کہ میانمار کے روہنگیا مُسلمان مظلوم ترین کمیونٹی ہیں، وہ شناخت کے ساتھ دیگر بنیادی سہولیات سے بھی محروم ہیں، اُنھیں میانمار کی حکومت اپنا شہری تسلیم نھیں کرتی۔ اُن پر مدت سے عرصہءِ حیات تنگ کیا جا رہا ہے۔ روہنگیا کا مسئلہ بڑا انسانی المیہ ہے۔ اِس ایشو کو جس طرح اُٹھایا جانا چاہیے تھا، ویسے نھیں اُٹھایا گیا۔ ماضی میں اقوامِ متحدہ، عالمی قوتیں، انسانی حقوق کی تنظیمیں اور مُسلم اُمہ کی خاموشی تکلیف دہ رہی ہے۔

رُوہنگیا کا مسئلہ نسلی اور سیاسی نوعیت کا تھا جو اب مذہبی رنگ اختیار کر چکا ہے۔ یہیں سے اِس مسئلے میں شدت آئی ہے۔ اب اِس ایشو کو مذہبی پہلو سے ہی دیکھا جا رہا ہے جس سے پیچیدگی بڑھ گئی ہے۔
یہ امر بھی مُسلم ہے کہ رُوہنگیا قبیلے سے نفرت کی ایک وجہ اُن کا مُسلمان ہونا بھی ہے۔ اُن کی بڑھتی ہوئی تعداد سے مقامی قبائل پریشان ہیں۔

دنیا بھر میں رُوہنگیا کے مسئلے کو مذہبی بنا کر اُٹھایا جا رہا ہے۔ پاکستان میں مذہبی قوتوں مل کر اِس ایشو کو نمایاں کر رہی ہیں۔ حالیہ دنوں میں بڑی مذہبی جماعتوں کے سربراہوں نے میانمار میں بدھ مذہب کے پیرو کاروں اور میانماری فوج کی جانب سے روہنگیا کمیونٹی پر مظالم کی شدید مذمت کی ہے، اکثر کا کہنا تھا کہ پاکستان میانمار سے اپنے سفارتی تعلقات فوری ختم کرے۔

کہا جاتا ہے کہ دہشت گرد کا کوئی مذہب نھیں ہوتا۔ دنیا کے کسی مذہب میں دہشت گردی کا جواز نھیں ہے۔ اِسی تناظر میں کہا جا سکتا ہے کہ مظلوم کا بھی کوئی مذہب نھیں ہوتا یعنی بلا امتیازِ مذہب، مظلوم کی حمایت کرنا چاہیے۔ عصرِ حاضر میں دیکھیے تو ایک مدت سے عراق اور شام میں مُسلمان، داعش جیسے دہشت گرد گروہوں کے ہاتھوں ظلم کا نشانہ بن رہے ہیں، مُسلمان ممالک میں اِن کے لیے کسی نے آواز نھیں اُٹھائی۔ یمن میں ایک عرصے سے نہتے شہریوں پر بمباری جاری ہے، اُس پر عالمی ضمیر، مسلم ممالک اور عوام خاموش ہیں۔

کشمیر و فلسطین میں ہر دن قیامت ڈھائی جاتی ہے۔ پاکستان میں بھی دہشت گردوں کی کاروائیوں میں ایک لاکھ سے زائد لوگ مارے جا چکے ہیں۔ پشاور میں آرمی پبلک سکول پر دہشت گردوں کے بہیمانہ حملوں میں ڈیڑھ سو کے لگ بھگ بچے مارے گئے۔

آج رُوہنگیا کے خلاف مظالم پر بڑھ چڑھ کر بولنے والے مذہبی رہنماؤں کی اکثریت پاکستان اور دیگر ممالک میں دہشت گردوں کے مظالم پر چُپ رہی ہے۔ ایسے میں صرف روہنگیا مسلمانوں کے حق میں آواز اُٹھانا اور دیگر مسلمان مظلوموں کے بارے میں خاموش رہنا درست رویہ نہ ہوگا۔ اِس سے یہ تاثر اُبھر رہا ہے کہ مُسلمان کو مُسلمان مارے تو قبول ہے، بس کوئی غیر مُسلم نہ مارے۔، اب چونکہ میانمار کے علاوہ زیادہ تر جگہوں پر مُسلمان ہی مُسلمانوں کو مار رہے ہیں، اِس لیے اسلامی ممالک میں خاموشی ہے لیکن میانمار میں بدھوں اور برمی فوج کا نام ظلم کرنے والوں میں شامل ہے اس لیے اِس پر احتجاج کیا جارہا ہے۔ اسلامی تعلیمات کی رُو سے ہمیں دنیا بھر کے مظلوم و محروم انسانوں کے لیے آواز بلند کرنی چاہیے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مفتی امجد عباس صاحب مبصر ڈاٹ کام کے سٹاف ممبر ہیں۔ مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  5910
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
سعودی عرب کے ایک ایم بی سی چینل پر رمضان کے شروع میں ایک ڈرامہ "ام ہارون" کے نام سے نشر کیا جا رہا ہے، جس میں یہودیت کو مظلوم بنا کر پیش کیا گیا ہے۔
اسرائیل کے کثیرالاشاعت عبرانی اخبار اسرائیل ھیو نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ فلسطینی اراضی پر اسرائیلی ریاست کی خود مختاری قائم کرنے کے اعلان پر یورپی یونین نے اسرائیل پرپابندیاں عائد کرنے پرغور شروع کیا ہے۔ عبرانی اخبار
عیدالفطرانتہائی خوشی ومسرت کااسلامی تہوارہے۔میٹھی عیدپرنمازعیدسے پہلے اوربعدمیں ہرگھرمیں انواع واقسام کی ڈشز تیارہوتی ہیں جنہیں بچے بڑے سب بہت ذوق و شوق سے کھاتے ہیں۔میٹھی عیدپرمیٹھی سویاں،پھینیاں،شیرخرما،سوجی کاحلوہ
مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی فوجیوں نے فلسطینی کو چاقو سے مسلح ہونے کے شبے میں گولی مار کر شہید کردیا، اسرائیلی پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ فلسطینی چاقو سے مسلح تھا اور مقبوضہ بیت المقدس کے قدیم حصے میں ایک

مزید خبریں
چینی دفترخارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے ہفتہ وار پریس کانفرنس کے دوران سوالوں کے جوابات دیتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر ایک تاریخی مسئلہ ہے جسے اقوام متحدہ کے چارٹر اور سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں کی روشنی میں پر امن طریقے

مقبول ترین
مسلم لیگ نواز خیبرپختونخوا کے صوبائی صدر امیر مقام کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا ہے۔
چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر ایک متنازعہ علاقہ ہے اور اس کی متنازعہ حیثیت ختم کرنے کی کسی بھی کوشش کا بھرپور جواب دیا جائے گا، جنوبی ایشیاءمیں عدم استحکام پیدا کرنے کے نتائج سنگین ہوں گے۔
امریکہ کی جانب سے 6 ملین ڈالر کی امداد پاکستان کے ہسپتالوں میں کورونا کے مریضوں کی دیکھ بھال اور طبی عملے کی تربیت پر خرچ کی جائے گی۔
ملک بھر میں آج عیدالفطر کورونا وائرس اور طیارہ حادثے کے باعث سادگی کے ساتھ منائی جارہی ہے۔ملک بھر میں عید الفطر کے موقع پر مساجد، عید گاہ اور امام بارگاہوں میں نماز عید کے چھوٹے بڑے اجتماعات ہوئے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں