Tuesday, 16 October, 2018
قرآن کو اپنے سے جدا کرنے والوں نے ہمیشہ ٹھوکر کھائی ہے، معرفت قرآن کانفرنس

قرآن کو اپنے سے جدا کرنے والوں نے ہمیشہ ٹھوکر کھائی ہے، معرفت قرآن کانفرنس

لاہور ۔ ادارہ التنزیل نے استقبال ماہ رمضان کے سلسلے میں’’معرفت قرآن کریم‘‘کے عنوان سے ایک عظیم الشان کانفرنس کا اہتمام کیا ،جس میں تمام مکاتب فکر کے دانشوروں اور علماء کرام نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔مہمانان گرامی میں بین الاقوامی شہرت یافتہ قاری وجاہت،ایچ ای سن شعبہ علوم اسلامی کے سربراہ پروفیسر حافظ ظفراللہ شفیق، ملی یکجہتی کونسل کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل اور علمی تحقیقاتی ادارہ البصیرہ کے سربراہ سید ثاقب اکبر، جماعت اسلامی کے رہنماقاری محمد ضمیراختر حضوری ،ڈپٹی سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی ڈاکٹر فرید پراچہ ، مفتی گلزار احمد نعیمی سربراہ جماعت اہل حرم و  پرنسپل جامعہ نعیمیہ اسلام آباد اور میزبان ڈاکٹر سیدعلی عباس نقوی چیئرمین ادارہ التنزیل شامل ہیں۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے حافظ ظفر اللہ شفیق نے کہا کہ رسول اکرم ﷺکے دوطرح کے وجود ہیں ایک جسمانی وجود جو کہ دنیاوی حیات میں نظروں سے دور اور دوسرا روحانی وجودجو کہ قرآن کی شکل میں قیامت تک کے لیے ہمارے درمیان موجود ہے ، آپ نے مزید کہا کہ رسول(ص) اور قرآن ایک ہی ہیں آپ کااخلاق سراپاقرآن ہے،عمل میں بھی قرآن صفات میں بھی قرآن ،عالمی اور دائمی جہانوں کے لئے بھی قرآن کی طرح مطھر،مجاہد،مجید، شاہد،فاتح ،امین سب قرآن کی طرح ہے۔آپ کا ذکر بھی قرآن ہے،چہرہ بھی قرآن ہے اور ظلمات سے نور کی طرف لے کر جانے والا بھی قرآن ہے۔ آپ نے کہا کہ ہم لمبا سفر کرکے زیارت کرنے جاتے ہیں اور ان تبرکات کی اہمیت کو توجانتے ہیں لیکن ہمیں حقیقت میں ان کی تعلیمات کو جاننے اور عمل کرنے کی ضرورت ہے۔

معرفت قرآن کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ملی یکجہتی کونسل کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل ثاقب اکبر نے کہا قرآن کریم کو عام کتب پر قیاس نہیں کیا جاسکتا ۔ یہ قلب پیغمبر پر اتری ہے، جبریل لے کر آئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ عام بات نہیں ہے بلکہ عالم باطن کی چیزیں لوگوں نے ٹھوکر اسی وجہ سے کھائی کہ اس نے ان حقائق کو سامنے نہیں رکھا۔

مفتی گلزار احمد نعیمی نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قرآن مجیدکو پڑھنا،سمجھنا اور عمل کرنا یقینا بہت بڑاعمل ہے،انہوں نے کہا کہ قرآن کے ذریعے سے علوم کی تخلیق ہوتی رہی ہے۔ہم ڈاکٹر کے پاس  شفاء کے لئے جاتے ہیں اور کئی دفعہ دوا اثر کرتی ہے اور کئی دفعہ نہیں کرتی لیکن قرآن شفاء ہے جو ہر طرح کے مرض کا علاج کرتا ہے اور ہرحال میں شفاء دیتا ہے۔

جماعت اسلامی کے مرکزی رہنما ڈاکٹر فریدپراچہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہماری زندگیوں میں جن چیزوں کی کمی ہے وہ ہے معرفت کتاب، فکر ،انقلاب ، رہنما اور ضابطہ حیات ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام کتابوں میں شک ہوسکتا ہے لیکن قرآن میں نہیں کیونکہ ذلک لاریب فیہ ۔۔جہاں قرآن نازل ہوا وہ شہر سب کا سردار ،جس کے قلب پر نازل ہوا وہ نبی سب کے سردار ،جس مہینے میں نازل ہوا وہ مہینہ سب کا سردار۔حق ہمیشہ غالب رہنے کے لئے آیا ہے اور ہر چیز میں حق کی جیت ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ہر چیز کا حل قرآن میں موجود ہے ہر طرح کی پریشانی کا علاج ہے۔ الابذکراللہ تطمئن القلوب اگرکہاجائے کہ بہت فرقے ہیں تو قرآن کہے گا کہ تنازعے میں مت پڑو، ورنہ ہوااکھڑجائے گی اسی لئے وہ کہے گاواعتصموابحبل اللہ۔۔۔استطاعت کے مطابق سب حاصل کرواس بڑھیا کی طرح مت بنو جو خود کاٹے اور پھر ٹکڑے ٹکڑے کردے۔

جماعت اسلامی کے قاری محمد ضمیراختر حضوری نے کہا کہ اللہ کی نعمت کے بارے میں بتایا گیاکہ اللہ نے ہمیں قرآن نعمت عطاکی ہے ہرچیز فناہوجائے گی لیکن حق باقی رہے گا وحی کا راستہ جنت کا راستہ ہے۔

مذہبی سکالر  سیدہ سحر نے  معرفت قرآن کے مراحل پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ معرفت قرآن کے مراحل میں ایک تو تلاوت ہے،دوسرا ترجمہ، پھرتجویداورتفہیم اور  اگر ہمیں معرفت قرآن حاصل کرنا ہے تو ہمیں اس کے حقائق پر غور کرنا پڑے گااوریہ معرفت کے اصول پیغمبرﷺاوراہل بیت ؑ سے لینے پڑیں گے۔

آخر میں کانفرنس کے میزبان اور قرآنی ادارے التنزیل کے سربراہ ڈاکٹر علی عباس نقوی نے قرآنی آیت کی طرف اشارہ کیا کہ اگر ہم اس قرآن کو کسی پہاڑ پر نازل کرتے تو آپ اسے اللہ کے خوف سے جھک کر پاش پاش ہوتا ضرور دیکھتے اور ہم یہ مثالیں لوگوں کے لیے اس لیے بیان کرتے ہیں کہ شاید وہ فکر کریں۔انہوں نے تمام مہمانان گرامی کا شکریہ ادا کیا اور معرفت قرآن کی بنیادوں اور معرفت قرآن کے موضوع پر روشنی ڈالی کہ ہمیں اسے  فراموش نہیں کرناچاہیے کہ یہ آسمان سے نازل ہونے والی کتاب ہے۔یہ عام کتاب نہیں ہے اس کو لفظ کتاب سے اشتباہ نہ کریں نہیں کرنا چاہیے۔ یہ الکتاب ہے۔یہ خاص کتاب ہےاور یہ وحی کی صورت آتی ہے۔ یہ قلب محمد ﷺ پر اتری ہے۔ یہ جبرائیل کے ذریعے سے آئی ہے۔ ساری باتیں روحانی ہے ۔ ںساری باتیں عالم باطن سے تعلق رکھتی ہیں۔ عالم غیب سے تعلق رکھتی ہیں ۔اس کی شکل و صورت مادی ہوگئی ہے۔ بعض چیزیں اس میں انسان کے لیے عادی شکل میں آتی ہیں جو بہرحال اس کو روحانیت کے لیے اور عالم بالا کے لیے اس کو تیار کرنے کے لیے مددگار ہیں۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  16880
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
فلسطین کی ستر سالہ تاریخ کا مطالعہ کیا جائے تو فلسطینیوں پر گزرنے والا ہر دن ہی یوم نکبہ سے کم نہیں ہے، یوم نکبہ فلسطینیوں کے لئے ایک ایسا دن ہے جسے فلسطین کی گزشتہ اور موجودہ نسل کسی طور فراموش کر ہی نہیں سکتی
بلوچستان بیک وقت قدرتی، ساحلی، صحرائی اور پہاڑی معدنیات کے تحفظ کی دعویدار ہے۔ جہاں پاکستان کا سب سے بڑا نیشنل پارک ہنگول نیشنل پارک بھی موجود ہے اورنایاب ہونے والے جنگلی جانوروں کی متعدد اقسام پائے جاتے ہیں۔
آبادی کا کثرت سے پھیلاؤ جدید دنیا کے بڑے مسائل میں سے ایک ہے اور اس مسئلے کے حل کے لیے نت نئی نئی مانع حمل ادویات اور علاج کے طریقے بھی متعارف ہوتے رہتے ہیں۔ اب تک اس میدان میں تمام بوجھ خواتین ہی پر ڈالا جاتا رہا ہے اور جتنی بھی مانع حمل ادویات تیار کی گئی ہیں
برطانیہ میں منگل 26 اگست کو منظر عام پر آنے والی ایک رپورٹ کے مطابق وہاں روتھرہیم نامی صرف ایک قصبے میں گزشتہ 16 برسوں کے دوران قریب 1400 بچوں کا جنسی استحصال کیا گیا۔

مزید خبریں
دنیا بھر میں بولی اور سمجھی جانی والی زبانوں میں سے اردو ہندی دنیا کی دوسری بڑی زبان بن چکی ہے، جبکہ اول نمبر پر آنے والی زبان چینی ہے اور انگریزی کا نمبر تیسرا ہے۔ روزنامہ ’واشنگٹن پوسٹ‘ نے یونیورسٹی آف ڈیسلڈرف الرچ کی 15 برس کی مطالعاتی رپورٹ
ہمارے نیم حکیموں کو کون سمجھائے کہ بلکتے، سسکتےعوام کو جمہوریت سے بدہضمی ہونے کا خوف دلانا چھوڑ دیجئے حضور! 144 معالجین کے مطابق انسانی معدے کی خرابی تمام بیماریوں کی ماں ہوتی ہے اور معدے کی خرابی سے ہی بدہضمی، ہچکی، متلی، قے، ہاتھوں میں جلن کا احساس، بھوک کا نہ لگنا، پژمردگی اور چہرے پر افسردگی کے اثرات چھائے
یہ سوال انتہائی اہم ہے کہ پارلیمنٹ لاجز میں ہونے والی غیر اخلاقی حرکتوں کے متعلق جمشید دستی کو کس نے ویڈیو ثبوت اور ”ناقابل تردید“ ثبوت فراہم کیے ہیں؟ یہ سوال بھی اہم ہے کہ آخر جمشید دستی نے یہ ا یشو کیوں چھیڑا ؟ اس کے نتیجے میں جو صورتحال پیش آسکتی ہے اس کے دور رس نتائج نکل سکتے ہیں۔
دہشت گردوں کی طرف سے جنگ بندی کے اعلان کے صرف 48 گھنٹے بعد ہی دارالحکومت اسلام آباد کودہشت گردی کا نشانہ بنادیا گیا۔

مقبول ترین
لندن کی وارک یونیورسٹی میں خطاب کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ دنیا میں القاعدہ کو کبھی بھی پاکستان کی مددکے بغیر شکست نہیں ہوسکتی تھی دہشتگردی کے خاتمے کے لیے دنیا کو پاکستان کا شکریہ ادا کرنا چاہیے۔
وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ حکومت نے مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں لگائے گئے بجلی کے تمام منصوبوں کے آڈٹ کا فیصلہ کیا ہے جب کہ 2 منصوبے کے آڈٹ کا آغاز بھی ہوچکا ہے۔ پریس کانفرنس کے دوران فواد چوہدری نے
بین الاقوامی برادری میں یہ تاثر عام ہے کہ بھارتی قیادت علاقائی بالادستی حاصل کرنے کے زعم میں یوں مبتلا ہو چکی ہے کہ اس پر کسی نفسیاتی غلبہ اور سیاسی و سفارتی عارضہ کا گمان ہوتا ہے۔ وزیراعظم مودی نے اپنے دور حکومت میں نیپال، بنگلہ دیش
غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق فرانس کے شمالی علاقے ٹریب میں سیلاب کے باعث 13 افراد ہلاک اورمتعدد زخمی ہوگئے۔ فرانسیسی وزارت داخلہ کے مطابق متاثرہ علاقوں میں محض چند گھنٹوں کے دوران اتنی بارش ہوئی جو عام طورپر3 ماہ سے زائد

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں