Monday, 18 November, 2019
جناب زرداری! جواب دیں، جناب گیلانی! چپ کیوں ہیں؟

جناب زرداری! جواب دیں، جناب گیلانی! چپ کیوں ہیں؟
تحریر: ناصر خان

 

بلی تھیلے سے باہر آنے کے بعد بٹ بٹ دیکھ رہی ہے اور اپنے آقاؤں کو ڈھونڈ رہی ہے کیونکہ سابق وزیراعظم گیلانی کی بااختیار اور رعب دارپرنسپل سیکریٹری نرگس سیٹھی کے دستخط سے جاری کیا گیا خط منظر عام پر اگیا ہے جس سے پتہ چلتا ہے کہ سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے امریکیوں کی جانب سے ویزا حاصل کرنے کے لیے درخواست پاکستان کے متعلقہ افسران کو دینے کے بجائے پاکستان کے اس وقت کے سفیر حسین حقانی کو دینے کا حکم جاری کیا اور ان سے کہا کہ وہ خود سے فوری طور پر ایک سال کی مدت کے لیے ویزا جاری کرنے کا اختیار رکھتے ہیں۔

پھر یہ اختیار کس کس کے لئے استعمال ہوا اور کون کون اس وطن میں ریمنڈ ڈیوس کی طرح داخل ہوا اور کون کون بلیک واٹر کے رکن کی حثیت سے اس ملک میں وارد ہوا اور پھر اس نے کیا کیا گل کھلائے۔ اب یہ بات منظرعام پر آہی جانا چاہئے۔ پاک وطن کے باسیوں کو معلوم ہونا چاہئے کہ انہوں نے جن لوگوں کے ہاتھ میں اس ملک کی باگ ڈور سونپی تھی انہوں نے اس وطن کے ساتھ کیا کیا کیا۔

امریکی انہی ’’امین‘‘ حکمرانوں کے ایما پر ہماری سرزمین کو چرا گاہ سمجھ کر پھرتے رہے اور جہاں چاہتے منہ مارتے رہے جبکہ زرداری صاحب اس خط کے منظر عام پر آنے سے پہلے کچھ اور ارشاد فرما چکے ہیں۔ یہ خط کم از کم نون لیگ کی سازش نہیں ہے اور نہ ہی اس میں چوہدری افتخار کا عمل دخل ہے۔ یہ قابل افتخار کام انہی کے لائق وزیراعظم کی طرف سے انجام دیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ خط کے مطابق واشنگٹن میں پاکستانی سفارت خانے نے وزیراعظم ہاؤس اسلام آباد کی مرضی سے امریکیوں کو ویزے جاری کیے۔

خیال رہے کہ سابق وزیر داخلہ رحمٰن ملک کے ترجمان پہلے ہی اس بات سے انکار کرچکے ہیں کہ وزارت داخلہ نے اُس وقت اس طرح کا کوئی خط جاری کیا تھا۔ اب اس خط کے سامنے آنے سے واضح ہو گیا ہے کہ ’’بےچارے‘‘ رحمان ملک اپنی طرف سے ٹھیک ہی کہ رہے تھے کیونکہ یہ تو ان سے بالا بالا کام ہو گیا تھا۔

اسی مذکورہ دور میں امریکیوں کو جاری کئے گئے ویزوں کے بارے میں بات کرتے ہوئے وزیراعظم کے مشیر برائے خارجہ امور سرتاج عزیز نے سینیٹ کو بتایا کہ پالیسی کی تبدیلی کے باعث زیادہ تعداد میں ویزے جاری کیے گئے اور محض 6 ماہ میں 2 ہزار 487 امریکیوں کو سفارتی ویزے جاری ہوئے۔

اب پاکستان کے عوام یہ کہنے کا حق رکھتے ہیں: جناب زرداری! جواب دیں، جناب گیلانی! چپ کیوں ہیں ؟

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  30438
کوڈ
 
   
مقبول ترین
وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ عدلیہ طاقتور اور کمزور کےلیے الگ قانون کا تاثر ختم کرے۔ ہزارہ موٹروے فیز 2 منصوبے کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پچھلے دنوں کنٹینر
لاہور ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے قائد میاں محمد نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالتے کا حکم دیتے ہوئے انہیں 4 ہفتے کیلئے بیرون ملک جانے کی اجازت دیدی جبکہ عدالت کی طرف سے کوئی گارنٹی نہیں مانگی گئی۔
وفاقی دارالحکومت اسلام آباداور کراچی سمیت ملک کے مختلف شہروں میں جمعیت علماء اسلام (ف) کے کارکنوں نے دھرنے دے کر سڑکیں بلاک کردیں۔ مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ کے ’پلان بی‘ کے تحت ملک بھر میں دھرنوں کا سلسلہ
وفاقی حکومت اور نیب کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا تھا کہ لاہور ہائیکورٹ کو درخواست پر سماعت کا اختیار نہیں جبکہ نواز شریف کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ عدالت کے پاس کیس سننے کا پورا اختیار ہے۔ عدالت نے درخواست کو قابل سماعت قرار

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں