Thursday, 24 September, 2020
زندگی مکافات عمل ہے

زندگی مکافات عمل ہے
تحریر : علینا کمیر

اس بات کو کسی بھی صورت نظر انداز نہیں کیا جاسکتا کہ یہ زندگی مکافات عمل ہے۔ کچھ لوگ اپنا کیا اسی دنیا میں کاٹ لیتے ہیں اور کچھ لوگ آخرت میں۔ مگر کوئی اس سے بچ نہیں سکتا یہ بات تو واضح ہے اسے کسی بھی صورت میں جھٹلایا نہیں جا سکتا۔

مگر یہ انسان اس سب کو فراموش کرکے غلطیوں پر غلطیاں کیے جاتا ہے یہاں تک کہ وہ خدا کے عذاب کا شکار بن جاتا ہے اور اسے خبر تک بھی نہیں ہو پاتی۔
آج آپ جیسا کرو گے ویسا ضرور دیکھو گے چاہے خود کے ساتھ یا اپنی اولاد میں سے۔ مگر افسوس کی بات تو یہ یے کہ اس معصوم اور ننی جان کا کیا قصور ہے جسے تمہارے گناہ اپنی ضد میں لے لیں گے یا تمہارا ہی کیا اسے بھگتنا پڑے گا۔
اب چاہے آپ کسی کو طعنہ دو اور وہی طعنہ آپ کو گھیر لے، یا چاہے کسی کو بےاولاد کہو اور بے اولادی آپ کا پیچھا نا چھوڑے، کسی کو موٹا کہو اور وہ موٹاپا آپ کو اپنا شکار بنا لے، یا کسی کو غریب کہو اور اس کی آہ سے آپ کا مال آپ کا نا رہے، یا پھر کسی کی بیٹی کے  ساتھ اتنا برا سلوک کرو کہ کل کو آپ کی بیٹی بھی اسی سب سے دوچار ہو۔ یا اس سب سےمواثلت رکھتا ہوا کوئی بھی پہلو جسے ہم اپنی عام زندگی میں کوئی معنی نہیں دیتے مگر ہم یہ نہیں جانتے کہ یہ سب باتیں بہت معنی رکھتی ہیں خدا کی بارگاہ میں۔
یہ کوئی چھپا ڈھکا پہلو نہیں جس کا ذکر میں آج آپ کے ساتھ کر رہی ہوں۔ یہ ایک کھلی کتاب کی طرح پہلو ہے جس سے ہر کوئی بخوبی واقف ہے بس فرق اتنا ہے ہے کہ ہم اسے وقعت نہیں دیتے۔
اگر آج ہم ان معمولی معمولی باتوں کو اہمیت دینے لگیں گے تو ‌ہم خدا کے قہر سے محفوظ ہو سکتے ہیں اور اپنی آنے والی نسل کو بھی اس سب سے محفوظ رکھ سکتے ہیں۔
پس کچھ غور طلب ہے ! 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

 

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  57534
کوڈ
 
   
مزید خبریں
کورونا وائرس پاکستان ہی نہیں ہی دنیا بھر میں اپنی پوری بدصورتی کے ساتھ متحرک ہے ، تشویشناک یہ ہےاس عالمی وباء کے نتیجے میں ہمارے ہاں اموات کا سلسلہ بھی شروع ہوچکا،
کی سڑک کے کنارے ایک ہوٹل میں چائے پینے کے لیے رکا تو ایک مقامی صحافی دوست سے ملاقات ہوگئی جنہیں سب شاہ جی کہتے ہیں سلام دعا کے بعد شاہ جی سے پوچھا کہ ٹیکنالوجی کی وجہ سے پاکستان کتنا تبدیل ہوچکا ہے تو کہنے لگے کہ سوشل میڈیا کی وجہ سےعدم برداشت میں بہت اضافہ ہوا ہے۔
میرے پڑھنے والو،میں ایک عام سی،نا سمجھ ایک الہڑ سی لڑکی ہوا کرتی تھی، بات بات پہ رو دینا تو جیسے میری فطرت کا حصہ تھا، اور پھربات بے بات ہنسنا میری کمزوری، یہ لڑکی دنیا کے سامنے وہی کہتی اور وہی کرتی تھی جو یہاں کے لوگ سن اور سمجھ کر خوش ہوتے تھے
صبح سویرے اسکول جاتے وقت ہم عجیب مسابقت میں پڑے رہتے تھے پہلا مقابلہ یہ ہوتا تھا کہ کون سب سے تیز چلے گا دوسرا شوق سلام میں پہل کرنا۔ خصوصاً ساگری سے آنیوالے اساتذہ کو سلام کرنا ہم اپنے لیے ایک اعزاز تصور کرتے تھے۔

مقبول ترین
سابق گورنر سندھ محمد زبیر نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی تصدیق کردی۔میڈیا کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے رہنما محمد زبیر نے کہا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے میرے ذاتی تعلقات ہیں اور ان سے میری 2 ملاقاتیں ہوئی ہیں
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی ) میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کہ چند ہفتے قبل آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ن لیگ کے سینئر رہنما اور سابق گورنر سندھ محمد زبیر نے ملاقاتیں کیں۔
بھارتی فوج نے لائن آف کنٹرول پر سیز فائر کی خلاف ورزی کرتے ہوئے فائرنگ کی جس سے 2 پاکستانی فوجی شہید ہوگئے۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق بھارتی فوج نے کنٹرول لائن کے دیوا سیکٹر میں اشتعال انگیزی کا مظاہرہ
مسلم (ن) لیگ کی رہنما مریم نواز کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے کسی نمائندے نے آرمی چیف سے ملاقات نہیں کی۔ مسلم (ن) لیگ کی رہنما مریم نوازنے کمرہ عدالت میں میڈیا سے غیررسمی گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف کی صحت آپریشن کی متقاضی ہے

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں