Sunday, 24 March, 2019
’’نیا پاکستان اور 25 دسمبر‘‘

’’نیا پاکستان اور 25 دسمبر‘‘
تحریر: مبصر دانش

 

25 دسمبر گزرگیا، یہ نئے پاکستان کا پہلا 25 دسمبرتھا۔ پاکستانیوں کیلئے 25 دسمبرکرسمس کے ساتھ ساتھ قائداعظم ڈے کے حوالے سے بھی انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔ بانئ پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح 25 دسمبر 1876 کو پیدا ہوئے تھے، اس لحاظ ملک بھر میں25 دسمبر کو خصوصی دن کے طور پر منایا جاتا ہے۔ اس دن ملک بھر میں سرکاری سطح پر تعطیل ہوتی ہے ،سرکاری سطح پر مختلف تقریبات کا انعقاد کیا جاتا ہے۔ اخبارات میں خصوصی سپلیمنٹ شائع کئے جاتے ہیں۔ الغرض ہر پہلو سے ’’فادر آف نیشن‘‘ کو خراج تحسین پیش کیا جاتا ہے۔

نئے پاکستان کا پہلا 25دسمبر، ہاں پہلا 25دسمبرتھا لیکن حکومتی بے حسی کا یہ عالم تھاکہ ملک بھر میں قائد ڈے کے حوالے سے کوئی تقریب منعقد نہیں ہوئی ۔ یوں یہ اہم دن گزر گیا۔

مجھے کہنے دیجئے کہ ہم بحیثیت مجموعی قائد کو بھول چکے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہم بہتری کے بجائے پستی کی طرف محو سفر ہیں۔ ظاہر ہے زندہ قومیں اپنے محسنوں کو یاد رکھتی ہیں لیکن نئے پاکستان میں بانئ پاکستان کو بالکل فراموش کردیا گیا۔ جو قومیں اپنے محسنوں کو فراموش کرتی ہیں، ان کی حالت یہی ہوتی ہے جو اس وقت بحیثیت قوم ہماری ہیں۔

تحریک انصاف کے چیئرمین اور وزیراعظم پاکستان محترم عمران خان’’ قائد، قائد‘‘ کی رٹ لگاتے لگاتے تھکتے نہیں اور اکثر فرماتے ہیں کہ ’’ہم پاکستان کو قائد اعظم کا پاکستان‘‘ بنائیں گے۔عمران خان اس نعرہ کی بدولت ’’وزیراعظم پاکستان‘‘تو بن گئے لیکن قائد ڈے بھول گئے، جس سے آپ نئے پاکستان کے ذمہ داروں کی سنجیدگی کا اندازہ لگا سکتے ہیں۔اس حوالے سے حکومت اور اپوزیشن رہنماؤں کی مکمل خاموشی سے 22کروڑ عوام کو جو تاثر ملا ، وہ ناقابل تلافی نقصان ہے۔ پاکستان کے تمام سیاستدان اقتدار کے حصول کے لئے قائد اعظم کو یاد اور ان کا نام لے لے ووٹ حاصل کرتے ہیں۔ 

یہ بھی ممکن ہے کہ بعض لوگ کہیں کہ اصل کام قائداعظم کا دن منانا نہیں بلکہ اصل کام قائداعظم کے افکار کے مطابق قوم و ملک تعمیر ہے بہرحال رائے اپنی اپنی ہے۔

25دسمبرکو پورے ملک میں قائداعظم ڈے کے حوالے سے سرکاری سطح پرکسی تقریب کا نہ ہونا حکومت وقت سمیت تمام سیاسی، مذہبی پارٹیوں حتیٰ کہ ریاستی اداروں کے لئے بھی لمحہ فکریہ ہے ۔ صرف کراچی میں مزارقائد پر گارڈ بدلنے کی تقریب ہوئی، جہاں مہمان خصوصی میجر جنرل اختر نواز نے مارچ پاسٹ کا معائنہ کیا۔ اور بس۔ گویا ہم نے حق ادا کر دیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  62693
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
امریکی کانگریس نے قرارداد منظور کی ہے کہ امریکہ یمن سعودی جنگ میں سعودی عرب کی حمایت سے دستبردار ہو جائے.امریکہ کی وزارت خارجہ کے وزیر پومپیو نے کہا کہ ہم امریکی کانگریس کی منظور کی گئی قرارداد کا احترام کریں گے.
کل پارلیمنٹ میں پاکستان کی پارلیمانی تاریخ کا نہایت شرم ناک واقعہ پیش آیا جب حکومتی بنچوں سے ایک غیرمسلم ممبر پارلیمنٹ نے شراب پر پائبندی کا بل پیش کیا جسے پوری پارلیمنٹ نے متفقہ طور پر مسترد کردیا.صرف ایم ایم اے ممبرز نے رامیش
پاکستان کے زیر انتظام مسلہ کشمیر سے منسلک ریاست جموں کشمیر کی سب بڑی اور وسیع اکائی سرزمین گلگت بلتستان کی تاریخ پر بہت کچھ لکھا جا چُکا ہے۔ آج ہمارا بحث یہ نہیں ہے کہ یہ خطہ ماضی بعید میں کئی ریاستوں پر مشمل ایک عظم ملک ہوا کرتے تھے۔
ہم ایک اسلامی جمہوری ملک ریاست کے باشندے ہیں جو کہ ایک اسلامی و جمہوری اصولوں پر قائم کیا گیا. جس کے مروجہ قانون کے مطابق ریاست کو چلانے کیلئے جمہوری طریقوں سے عوام میں سے حکمران اور منظم نظام چلانے کیلئے ریاستی اداروں کو قائم کیا گیا

مزید خبریں
دنیا بھر میں بولی اور سمجھی جانی والی زبانوں میں سے اردو ہندی دنیا کی دوسری بڑی زبان بن چکی ہے، جبکہ اول نمبر پر آنے والی زبان چینی ہے اور انگریزی کا نمبر تیسرا ہے۔ روزنامہ ’واشنگٹن پوسٹ‘ نے یونیورسٹی آف ڈیسلڈرف الرچ کی 15 برس کی مطالعاتی رپورٹ
ہمارے نیم حکیموں کو کون سمجھائے کہ بلکتے، سسکتےعوام کو جمہوریت سے بدہضمی ہونے کا خوف دلانا چھوڑ دیجئے حضور! 144 معالجین کے مطابق انسانی معدے کی خرابی تمام بیماریوں کی ماں ہوتی ہے اور معدے کی خرابی سے ہی بدہضمی، ہچکی، متلی، قے، ہاتھوں میں جلن کا احساس، بھوک کا نہ لگنا، پژمردگی اور چہرے پر افسردگی کے اثرات چھائے
یہ سوال انتہائی اہم ہے کہ پارلیمنٹ لاجز میں ہونے والی غیر اخلاقی حرکتوں کے متعلق جمشید دستی کو کس نے ویڈیو ثبوت اور ”ناقابل تردید“ ثبوت فراہم کیے ہیں؟ یہ سوال بھی اہم ہے کہ آخر جمشید دستی نے یہ ا یشو کیوں چھیڑا ؟ اس کے نتیجے میں جو صورتحال پیش آسکتی ہے اس کے دور رس نتائج نکل سکتے ہیں۔
دہشت گردوں کی طرف سے جنگ بندی کے اعلان کے صرف 48 گھنٹے بعد ہی دارالحکومت اسلام آباد کودہشت گردی کا نشانہ بنادیا گیا۔

مقبول ترین
یوم پاکستان کی مرکزی تقریب میں صدر، وزیراعظم، آرمی چیف، ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد سمیت دیگر ممالک کی معزز شخصیات نے بھرپور شرکت کی۔ سپیکر قومی اسمبلی، چیئرمین سینیٹ، وفاقی وزراء، وزرائے اعلی، شوبز ستارے
نیوزی لینڈ کی تاریخ کی بدترین دہشت گردی کے ایک ہفتے بعد نہ صرف سرکاری طور پر اذان نشر کی گئی بلکہ مسجد النور کے سامنے ہیگلے پارک میں نمازِ جمعہ کے اجتماع میں وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن کے علاوہ ہزاروں غیر مسلم افراد نے بھی شرکت کی۔
ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کا سرمایہ کاری کانفرنس سے خطاب میں کہنا تھا کہ آزادی کے وقت ملائیشیا غریب ملک تھا۔ آزادی کے وقت طے کیا تھا کہ ملائیشیا ترقی کے مراحل طے کرے گا۔ ہم نے کوریا اور جاپانی لوگوں سے سبق لیا اور کام کیا۔
کراچی کی نیپا چورنگی پر ممتاز عالم دین مفتی تقی عثمانی قاتلانہ حملے میں محفوظ رہے جب کہ ان کے دو گارڈ جاں بحق ہو گئے۔ ابتدائی طور پر اطلاعات تھیں کہ مختلف مقامات پر فائرنگ کے دو واقعات پیش آئے ہیں لیکن ایس ایس پی گلشن اقبال طاہر

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں