Tuesday, 15 October, 2019
’’ریفرینڈم: 92 فی صد عراقی کردوں کا ’’آزادی‘‘ کے حق میں ووٹ‘‘

’’ریفرینڈم: 92 فی صد عراقی کردوں کا ’’آزادی‘‘ کے حق میں ووٹ‘‘

اربیل ۔ عراق کے خود مختار علاقے کردستان میں سوموار کو منعقدہ متنازع ریفرینڈم کے پہلے سرکاری نتائج کا اعلان کردیا گیا ہے جس کے مطابق 92 فی صد عراقی کردوں نے آزادی کے حق میں ووٹ دیا ہے۔

کردستان کے الیکشن کمیشن کے حکام نے بدھ کے روز علاقائی دارالحکومت اربیل میں ایک نیوز کانفرنس میں بتایا ہے کہ ریفرینڈم میں کل 3305925 ووٹروں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا تھا۔ ان میں سے 92.73 فی صد نے کردستان کی آزادی کے لیے ’’ ہاں‘‘ میں ووٹ دیا ہے۔

انھوں نے مزید بتایا ہے کہ ریفرینڈم میں ووٹ ڈالنے کی شرح 72.61 فی صد رہی ہے۔

واضح رہے کہ کردستان میں کل اندراج شدہ ووٹروں کی تعداد 53 لاکھ کے لگ بھگ ہے۔ خود مختار عراقی کردستا ن کے تین صوبوں اربیل ، سلیمانیہ اور دہوک اور ان سے متصل تیل کی دولت سے مالا مال صوبے کرکوک میں آزادی کے نام سے اس ریفرینڈم کا انعقاد کیا گیا ہے۔ 

ان علاقوں میں 12072 پولنگ مراکز قائم کیے گئے تھے۔ سوموار کی شام پولنگ کا عمل مکمل ہوتے ہی آزادی ریفرینڈم کے حق اور مخالفت میں ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی شروع کردی گئی تھی۔

الیکشن کمیشن کے اس اعلان سے چندے قبل ہی عراقی وزیراعظم حیدر العبادی نے کہا کہ’’ ہم ریفرینڈم کے نتیجے پر کوئی مذاکرات نہیں کریں گے۔اگر کرد بات چیت کا آغاز چاہتے ہیں تو پھر انھیں ریفرینڈم اور اس کے نتیجے کو منسوخ کرنا ہوگا‘‘۔

بدھ کے روز عراقی پارلیمان میں تقریر کرتے ہوئے کردستان کی علاقائی حکومت کے صدر مسعود بارزانی سے اس مطالبے کا اعادہ کیا ہے کہ’’ وہ آیندہ جمعہ تک بین الاقوامی ہوائی اڈوں کا کنٹرول بغداد حکومت کے حوالے کردیں، دوسری صورت میں کردستان کے لیے براہ راست بین الاقوامی پروازوں پر پابندی عاید کردی جائے گی‘‘۔

انھوں نے کہا کہ’’ ہم ریفرینڈم کے نتیجے پر کوئی مذاکرات نہیں کریں گے۔اگر کرد بات چیت کا آغاز چاہتے ہیں تو پھر انھیں ریفرینڈم اور اس کے نتیجے کو منسوخ کرنا ہوگا‘‘۔

عراقی وزیراعظم کے اس مطالبے کو کردستان کے ٹرانسپورٹ کے وزیر مولود مراد نے مسترد کردیا ہے ۔انھوں نے کردستان کے دارالحکومت اربیل میں ایک نیوز کانفرنس میں کہا کہ ’’ ہوائی اڈوں پر کنٹرول اور اربیل کے لیے براہ راست بین الاقوامی پروازوں کو برقرار رکھنا داعش کے خلاف جنگ لیے ناگزیر ہے‘‘۔

کرد لیڈروں کا کہنا ہے کہ ریفرینڈم کے انعقاد سے انھیں ایسا مینڈیٹ حاصل ہوگیا ہے جس کے ذریعے وہ اپنے علاقے کی عراق سے پُرامن طور پر علاحدگی کے لیے بغداد حکومت سے مذاکرات آغازکرسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ عراق کی شہری ہوابازی کی اتھارٹی نے بدھ کو غیر ملکی فضائی کمپنیوں کو ایک نوٹس بھیجا ہے اور اس میں انھیں خبردار کیا ہے کہ کردستا ن کے دو شہروں اربیل اور سلیمانیہ کے لیے جمعہ کو گرینچ معیاری وقت ( جی ایم ٹی ) کے مطابق 1500 بجے سے بین الاقوامی پروازیں معطل کردی جائیں گے اور ان شہروں کے درمیان صرف اندرون ملک ہی پروازیں چل سکیں گی۔ 

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  45449
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
چند روز قبل ( ن) لیگ کی ریلی جس وقت اسلام آباد سے راولپنڈی کا سفر طے کررہی تھی اس دوران چند ٹی وی چینلوں کے رپورٹروں اور کیمرہ مینوں کوریلی میں شریک لوگوں نے تشدد کا نشانہ بنایا، عام فہم زبان میں یوں
بلی تھیلے سے باہر آنے کے بعد بٹ بٹ دیکھ رہی ہے اور اپنے آقاؤں کو ڈھونڈ رہی ہے کیونکہ سابق وزیراعظم گیلانی کی بااختیار اور رعب دارپرنسپل سیکریٹری نرگس سیٹھی کے دستخط سے جاری کیا گیا خط منظر عام پر اگیا ہے جس سے پتہ چلتا ہے کہ

مقبول ترین
وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان خطے میں امن اور استحکام کے لئے اپنا کردار ادا کرنے کو تیار ہے۔ ایرانی صدر سے ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا کہ پاکستان اور
اسلام آباد میں وزیراعظم آفس کے سامنے مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم کیخلاف انسانی زنجیر بنائی گئی۔ وزیراعظم عمران خان نے بھی اس تقریب میں شرکت کی اور قوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں
برطانوی پولیس نے 2016 میں برطانیہ سے بیٹھ کر پاکستان میں نفرت انگیز تقریر کرنے سے متعلق تفتیش میں متحدہ قومی مومنٹ (ایم کیو ایم) کے بانی الطاف حسین پر دہشت گردی کی دفعہ کے تحت فرد جرم عائد کردی۔
وزیراعظم کی چین کے صدر شی جن پنگ سے ملاقات ہوئی جس میں مقبوضہ کشمیر کی صورت حال اور علاقائی سیکیورٹی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیراعظم عمران خان اور چین کے صدر شی جن پنگ کے درمیان بیجنگ کے اسٹیٹ گیسٹ ہاؤس میں ملاقات ہوئی۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں