Wednesday, 19 February, 2020
ایٹمی ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ کا عالمی دن

ایٹمی ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ کا عالمی دن

 

اسلام آباد ۔ دنیا بھر میں آج جوہری تجربات کیخلاف عالمی دن منایا جا رہا ہے۔  دنیا بھر میں ایٹمی ہتھیاروں کا پھیلاؤ تشویشناک صورتحال اختیار کرتا جا رہا ہے۔ اس صورتحال کے خلاف عالمی سطح پر شعور بیدار کرنے کے لئے اقوام متحدہ کی جانب سے 2 دسمبر 2009 ء کو اس دن کو منانے کا فیصلہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 64 ویں اجلاس میں کیا گیا تھا۔ 

اجلاس میں اس بات کافیصلہ بھی کیا گیا تھاکہ دنیا کو ایٹمی ہتھیاروں سے پاک کیا جائے اور عالمی سطح پر جوہری ہتھیاروں کے ٹیسٹ پر پابندی لگائی جائے اور دنیا کو آنے والے وقتوں کے لئے محفوظ تر بنایا جائے۔

جوہری دھماکوں کے خلاف عالمی دن کے موقع پر اقوامِ متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے دفتر سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ دنیا میں گزشتہ سات دہائیوں میں 2000 جوہری تجربات کیے گئے۔

بیان کے مطابق یہ تجربات جنوبی بحرالکاہل، شمالی امریکہ، وسطی ایشیا سے لے کر شمالی افریقہ تک کیے گئے۔ اقوامِ متحدہ ہر سال 29 اگست کو جوہری دھماکوں کے خلاف عالمی دن کے طور پر مناتی ہے۔

اس دن کی مناسبت سے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیخش کے دفتر سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ دن ماضی میں جوہری دھماکوں سے متاثرین کے احترام کے ساتھ ساتھ اس لیے منایا جاتا ہے تاکہ دنیا کو یہ یاد دہانی کرائی جائے کہ یہ دھماکے ماحولیات اور عالمی استحکام کے لیے مسلسل خطرہ ہیں۔

سیکرٹری جنرل کی طرف سے کہا گیا کہ اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ کوئی ملک مزید جوہری دھماکا نہ کرے، نیوکلیئر ٹیسٹ بین ٹریٹی (سی ٹی بی ٹی) پر مکمل عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔

اُنھوں نے تمام ممالک پر زور دیا کہ وہ جوہری دھماکے نہ کرنے سے متعلق معاہدے ’سی ٹی بی ٹی‘ پر دستخط کریں۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے مزید کہا ہے کہ گزشتہ 20 برس سے ممالک کی طرف سے رضا کارانہ طور پر جوہری تجربات نہ کرنے پر عمل درآمد کیا جاتا رہا، لیکن اس کے باوجود شمالی کوریا واحد ملک ہے جو ایسے تجربات کرتا آیا ہے۔

سی ٹی بی ٹی سے متعلق اقوام متحدہ میں پیش کردہ قرارداد کے حق میں پاکستان ووٹ دیتا آیا ہے لیکن اس کا موقف رہا ہے کہ جب تک نئی دہلی اس معاہدے پر دستخط نہیں کرتا، پاکستان اس کی توثیق نہیں کرے گا۔

واضح رہے کہ اس دن کا مقصد لوگوں کی توجہ اس جانب دلانا ہے کہ کئی دہائیوں سے ہونے والے جوہری تجربوں نے لوگوں اور ماحولیات کو کتنا نقصان پہنچایا ہے اس دن کے منانے کی تجویز قازقستان نے پیش کی تھی کیونکہ 61 سال پہلے سوویت یونین نے اس سرزمین پر سب سے پہلا جوہری تجربہ کیا تھا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  77099
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
حال ہی میں امریکہ کی سنٹرل انٹیلی جنس ایجنسی (سی آئی اے ) کی جانب سے ڈی کلاسیفائی کی گئی دستاویزات میں پاکستان کے سابق فوجی حکمران جنرل ضیا الحق کا ایک خط بھی شامل ہے
فرانسیسی نیوز ایجنسی اے ایف پی کے ایک جائزے کے مطابق افغانستان میں سرگرم طالبان ملکی سکیورٹی فورسز کی صفوں میں اندر تک رسائی کے لیے خوبصورت بچوں کو جنسی غلاموں کے طور پر استعمال کر رہے ہیں اور مؤثر حملے کر پا رہے ہیں۔

مزید خبریں
کی سڑک کے کنارے ایک ہوٹل میں چائے پینے کے لیے رکا تو ایک مقامی صحافی دوست سے ملاقات ہوگئی جنہیں سب شاہ جی کہتے ہیں سلام دعا کے بعد شاہ جی سے پوچھا کہ ٹیکنالوجی کی وجہ سے پاکستان کتنا تبدیل ہوچکا ہے تو کہنے لگے کہ سوشل میڈیا کی وجہ سےعدم برداشت میں بہت اضافہ ہوا ہے۔
میرے پڑھنے والو،میں ایک عام سی،نا سمجھ ایک الہڑ سی لڑکی ہوا کرتی تھی، بات بات پہ رو دینا تو جیسے میری فطرت کا حصہ تھا، اور پھربات بے بات ہنسنا میری کمزوری، یہ لڑکی دنیا کے سامنے وہی کہتی اور وہی کرتی تھی جو یہاں کے لوگ سن اور سمجھ کر خوش ہوتے تھے
صبح سویرے اسکول جاتے وقت ہم عجیب مسابقت میں پڑے رہتے تھے پہلا مقابلہ یہ ہوتا تھا کہ کون سب سے تیز چلے گا دوسرا شوق سلام میں پہل کرنا۔ خصوصاً ساگری سے آنیوالے اساتذہ کو سلام کرنا ہم اپنے لیے ایک اعزاز تصور کرتے تھے۔
عزیزان۔۔۔! بہت آسان ہے ہر رات ٹی وی ڈرامہ کا انتخاب کرنا یا کسی فلم کو دیکھنے کے لیے دیر تک جاگنا۔۔ بہت مشکل ہے ٹھنڈی اور تاریک رات میں اپنے بچوں اور والدین سے دور برفباری جیسے موسم کے اندر اپنا فرض نبھانا۔۔

مقبول ترین
پاکستان مسلم لیگ ق کے سربراہ شجاعت حسین نے کہا ہے کہ عمران خان چاپلوسوں اور چغل خوروں سے دور رہیں، اپنے ارد گرد منافقین کی نشاندہی کریں اور نزدیک نہ آنے دیں۔ سربراہ ق لیگ چودھری شجاعت حسین نے وزیراعظم عمران کو مشورہ دیتے
وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت اپنی 5 سالہ آئینی مدت پوری کرے گی، جتنے مرضی مارچ کرلیں، عمران خان کہیں نہیں جا رہے، مہنگائی کے ذمہ داروں کو کیفر کردار تک پہنچائیں گے۔
چیئرمین کشمیر کمیٹی سید فخر امام نے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیوگوتیریس کے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کو اجاگر کرنے کے بیان کی تعریف کرتے ہوئےکہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر کے معاملے پر اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کا غیر جانبدارانہ تبصرہ دیرپا پاکستانی موقف کا حامی ہے۔
وزیراعظم نے امید ظاہر کی کہ تمام انٹرنیشنل سوشل میڈیا اور انٹرنیٹ کمپنیاں پاکستان میں کام جاری رکھیں گی اور حکومت ان کے تحفظات دور کرے گی۔سوشل میڈیا کے حوالے سے متعارف کروائی گئی حالیہ ’پابندیوں‘ پر بڑھتی ہوئی تنقید کے بعد وزیراعظم نے متعلقہ حکام کو ان قواعد کے نفاذ سے قبل تمام اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کرنے کی ہدایت کردی۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں