Sunday, 18 February, 2018
عالم اسلام روہنگیا مسلمانوں کو ریاستی جبر وتشدد سے نجات دلائے،شیخ اسماعیل نواھضہ

عالم اسلام روہنگیا مسلمانوں کو ریاستی جبر وتشدد سے نجات دلائے،شیخ اسماعیل نواھضہ

بیت المقدس -مسجد اقصیٰ کے امام وخطیب الشیخ اسماعیل نواھضہ نے برما میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کی شدید مذمت کی اور عالم اسلام پر زور دیا کہ وہ روہنگیا مسلمانوں کو ریاستی جبر وتشدد سے نجات دلانے کے لیے موثر اقدامات کریں۔انہوں نے فلسطینی قوم کے خلاف صہیونی ریاست کے مظالم کی شدید مذمت کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ القدس اور الخلیل شہر کو صہیونی دشمن کی جانب سے منظم جارحیت کاسامنا ہے۔ 

فلسطین نیوز کے مطابق مسجد اقصیٰ کےامام وخطیب الشیخ اسماعیل نواھضہ نے کہا کہ برما کے مسلمانوں کی منظم انداز میں نسل کشی کی جا رہی ہے۔مسجد اقصیٰ میں اجتماع سے خطاب کرتے ہوئےانہوں نے کہا کہ اسرائیل القدس اور الخلیل شہروں کے باشندوں پر اجتماعی سزائیں مسلط کررہا ہے۔ بیت المقدس اور مقبوضہ الخلیل میں مذہبی، تاریخی اور جغرافیائی علامات تبدیل کی جا رہی ہیں۔ بیت المقدس اور الخلیل کو صہیونی ریاست کی جانب سے منظم انداز میں یہودیانے کی سازشوں کا سامنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسرائیل نے مسجد اقصیٰ کے باب الرحمہ کو سنہ 2004ء میں بند کیا اور یہ بندش آج تک جاری و ساری ہے۔ صہیونی ریاست ایک طے شدہ منصوبے کے تحت فلسطینی محکمہ اوقاف کو قبلہ اوّل سے بے دخل کرکے اس پرقبضہ کرنا چاہتی ہے۔

برما میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نےکہا کہ روہنگیا مسلمانوں کو وہاں کی ریاست کی طرف سے منظم انداز میں نسل کشی کا سامنا ہے۔ الشیخ نواھضہ نے روہنگیا مسلمانوں پر مظالم انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں، بین الاقوامی برادری اور مسلم دنیا کی خاموشی کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا۔

انہوں نے استفسار کیا کہ دنیا کی بڑی طاقتیں، انسانی حقوق اور شہری آزادیوں کے علم بردار، امریکا، اقوام متحدہ اور یورپی یونین کہاں ہیں۔ کیا انہیں روہنگیا مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم دکھائی نہیں دیتے ہیں۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  11442
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
اقوام متحدہ کے یمن تنازعے کے حل کیلئے ایلچی اور مزاکرات کار اسماعیل اولد شیخ احمع نے اگلے ماہ اپنے عہدے سے مستعفی ہونے کااعلان کیا ہے۔ اسماعیل نئے نامزدگی تک یمنی عوام کی خواہش کے مطابق تشدد کے خاتمے اور سیاسی استحکام کےلیے سفارتکاری کا ذریعہ استعمال کرتے ہوئے اپنا کام جاری رکھیں گے
عراق کے دارالحکومت بغداد کے مصروف ترین علاقے میں یکے بعد دیگرے دو خود کش حملوں میں کم از کم 38 افراد ہلاک اور 100 کے قریب زخمی ہو گئے ہیں۔زخمیوں کو طبی امداد کے لیے قریبی اسپتالوں میں منتقل کر دیا گیاہے۔خود کش حملوں کے بعد سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔
ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکرڈاکٹر علی اردشیر لاریجانی ایران کی جانب سے یمن میں حوثیوں کو میزائیلوں کی فراہمی کی خبروں کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی جنگ خود سے لڑ رہے ہیں۔
پریس کانفرنس کے دوران محمود عباس نے کہا کہ ‘مجھے امید ہے کہ دیگر ممالک سبق حاصل کریں گے کہ محض پیسوں کے ذریعے ملکوں کو نہیں خرید سکتے اور نہ ہی اپنے فیصلے زبردستی دوسروں پر صادر کیے جاسکتے ہیں’۔

مزید خبریں
سعودی عرب کے فرمانروا شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز نے ایک شاہی فرمان کے ذریعے انٹیلی جنس چیف شہزادہ بندر بن سلطان کو ان کی علالت کے پیش نظر عہدے سے ہٹا دیا ہے اور ان کی جگہ ان کے نائب یوسف الادریسی کو محکمہ سراغرسانی کا قائم مقام سربراہ مقرر کیا ہے۔
سعودی مفتی صالح الفیضان نے بوفے کیخلاف فتویٰ جاری کردیا۔جمعے کوسعودی مفتی نے سرکاری ٹی وی پرفتویٰ جاری کرتے ہوئے بوفے کوغیرشرعی قراردے دیا۔
سعودی ولی عہد شہزادہ سلمان بن عبدالعزیز نے چین پر زور دیا ہے کہ وہ دیرینہ فلسطینی تنازعے اور شام میں جاری بحران کو حل کرانے میں کردار ادا کرے۔

مقبول ترین
آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ دہشت گردوں کے منظم کیمپ پاکستان میں نہیں،افغانستان میں ان کے محفوظ ٹھکانے موجود ہیں۔ نجرمنی کے شہر میونخ میں میں عالمی سیکیورٹی کانفرنس سے خطاب میں آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان فخر
سابق صدر اور پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے سربراہ آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ سابق ایس ایس پی راؤ انوار سے متعلق ریمارکس گفتگو کی روانی کے دوران ان کی زبان سے سہواً ادا ہوئے۔
سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ (ن) کے صدر میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ لودھراں کے عوام نے ثابت کردیا کہ فیصلے امپائر کی انگلی نہیں عوام کے انگوٹھے کرتے ہیں۔ مخالفین نے جھوٹ بولنے اور بہتان تراشی کے سواء کچھ نہیں کیا، الیکشن کے بعد آپ لوگوں کو کچھ بڑے فیصلے کرنے ہیں،
انسداد دہشتگردی عدالت نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے ملزم عمران کوزینب کو اغوا کرنے، زیادتی کرنے اور قتل کرنے پر سزائے موت کا حکم سنا دیااور دفعہ 780 کے تحت بدفعلی پر سزائے موت اور 10 روپے جرمانہ کی سزا سنائی ہے،جبکہ لاش کو گندگی میں چھپانے پر 7 سال قید اور 10 لاکھ روپے جرمانہ کی سزاسنا ئی ہے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں