Friday, 13 December, 2019
قطر بحران: پاکستان کو سعودی اتحاد کا ساتھ دینا چاہیئے، مشرف

قطر بحران: پاکستان کو سعودی اتحاد کا ساتھ دینا چاہیئے، مشرف

دبئی۔ سابق صدر اور جنرل (ر) پرویز مشرف نے قطر اور سعودیہ کے اتحادی عرب ممالک کے درمیان جاری کشیدگی میں پاکستانی حکومت کے کردار کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ وہ حیران ہیں کہ پاکستان قطر بحران سے کس طرح نمٹ رہا ہے؟

انہوں نے قطر کے خلاف سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، مصر اور بحرین پر مشتمل اینٹی ٹیرر کوآرٹیٹ (اے ٹی کیو) کا ساتھ نہ دینے پر پاکستانی حکومت پر تنقید کی۔

عرب نیوز کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قطر کبھی پاکستان کے ساتھ نہیں تھا اور اس بات کا ہم نے کئی مرتبہ مشاہدہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات ہمیشہ پاکستان کے بہترین دوست رہے ہیں، ہمیں کبھی بھی ان ملک کے خلاف کچھ نہیں کرنا چاہیے، یہ دونوں ممالک ہمیشہ ہمارے ساتھ کھڑے ہوئے ہیں اور ہمیں ان کی دوستی کی قدر کرنی چاہیے۔

قطر میں پاکستان کی حکمراں جماعت کے کاروباری مفادات کا حوالہ دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ذاتی کاروباری مفاد کے لیے ملک کے وسیع تر مفاد کو نظر انداز کیا گیا، اگر یہی ترجیحات ہیں تو خدا ہمارے ملک کی حفاظت کرے۔

انہوں نے کہا کہ میں نے مسئلہ کشمیر کی قرارداد پر ایک بڑے اقدام کےلیے کام شروع کردیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ وہ اور ان کے ذہن سے ہم آہنگی رکھنے والے دیگر لوگوں نے ایک گروپ تشکیل دیا ہے،جس میں پاکستان، بھارت اور دونوں اطراف کے کشمیر سے لوگ شامل ہیں، ہم اقوام متحدہ اور پاکستانی اور بھارتی حکومت کے پاس جائیں گے۔

انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر حل ہوسکتا ہے اور انہیں کامل یقین ہے کہ موجودہ بھارتی حکومت اس کو حل کرنے کے قابل ہے کیونکہ وہ سخت لوگوں کی نمائندگی کرتی ہے۔

پرویز مشرف نے اس خیال کو مسترد کردیا کہ پاک چین اقتصادی راہداری ( سی پیک ) اور گوادر میں پاکستان پر چینی سرمایہ کاری کو مسترد کردیا۔

انہوں نے کہا کہ اس دنیا میں تینوں بڑی طاقتوں کے پاکستان میں اسٹریٹجک مفادات ہیں، ہمیں ان مفادات کو اپنے فائدے کے لیے استعمال کرنا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہا آج کی دنیا میں جغرافیائی اقتصادیات، جغرافیائی سیاست اور جغرافیائی حکمت عملی کا تعین کیا جارہا ہے، سی پیک نے ہمیں اپنی اسٹریٹجک مقام کو اپنی بہتری کے لیے استعمال کرنے کا بہترین موقع فراہم کیا ہے۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  56958
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
سعودی عرب میں پولیس کی چھاپہ مار ٹیم اور دہشت گردوں کے درمیان جھڑپ میں 8 دہشت گرد مارے گئے۔ سعودی خبر رساں ایجنسی کے مطابق سعودی عرب کے شہر القطیف میں دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر پولیس نے چھاپہ مارا جس پر ملزمان
یمن کی اسلامی تنظیم انصار اللہ کے سربراہ نے یمن پر سعودی عرب کی مسلط کردہ جنگ کے 1000 دن مکمل ہونے کے موقع پر کہا ہے کہ سعودی عرب، یمنی عوام کا ایسا دشمن ہے جوکسی بھی انسانی، اسلامی اور اخلاقی قانون کا پابند نہیں ہے
بیت المقدس میں اسرائیلی وزات سیاحت اور اسرائیلی بلدیہ کے اشتراک سے شروع کردہ منصوبہ القدس کو یہودیانے کے اسرائیلی سازشوں کا تسلسل ہے،فلسطینی سپریم افتاکونسل کا رد عمل
سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اسرائیل, یسرائیل کاٹز, سربراہ لیفٹینٹ جنرل گیڈی ائزنکوٹ, اسرائیل فلسطین تنازعہ, مسئلہ فلسطین,

مزید خبریں
مسجد اقصیٰ کے امام وخطیب الشیخ اسماعیل نواھضہ نے برما میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کی شدید مذمت کی اور عالم اسلام پر زور دیا کہ وہ روہنگیا مسلمانوں کو ریاستی جبر وتشدد سے نجات دلانے کے لیے موثر اقدامات کریں

مقبول ترین
وفاقی دارالحکومت کی اسلامک انٹرنیشنل یونیورسٹی اسلام آباد میں دو طلبا تنظیموں کے درمیان تصادم ہوا، تصادم کے دوران ایک طالبعلم جاں بحق ہو گیا جبکہ 21 شدید زخمی ہو گئے، پولیس حالات کنٹرول میں ناکام ہوئی تو رینجرز نے
افریقی ملک ملک نائیجر میں دہشت گردوں نے فوجی اڈے پر حملے کیے جس کے باعث 78 اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق دہشتگردوں نے بھاری ہتھیاروں سے مغربی حصے میں مالی کی سرحد کے قریب واقعے فوج
معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ دل کے اسپتال پر حملہ کرنے والے وکلا میں وزیراعظم کا بھانجا بھی شامل ہے اور وزیراعظم نے اس حوالے سے مذمت کی ہے۔
لاہور کی انسداد دہشتگردی عدالت میں وکلاء کو ایڈمن جج عبدالقیوم کے روبرو پیش کیا گیا جہاں سرکاری وکیل نے ملزمان کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست کی تاہم عدالت نے درخواست مسترد کرتے ہوئے وکلاء کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں