Tuesday, 15 October, 2019
عراق، امریکی فوج کی موجودگی کے سخت مخالف ہیں، شیخ خزعلی

عراق، امریکی فوج کی موجودگی کے سخت مخالف ہیں، شیخ خزعلی

بغداد۔ عراق میں داعش کو شکست دینے کے بعد امریکی فوج سمیت دیگرممالک کی افواج کی موجودگی کے سخت مخالف ہیں، ان خیالات کا اظہار تحریک عصائب اہل الحق کے سربراہ نے شیخ قیس خزعلی نے ذرائع ابلاغ کی بین الاقوامی یونین سے بات کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ دوسرے ممالک کی افواج جیسا کہ ترک فوج، حکومتی اداروں کی اجازت کے بغیر عراق میں موجود ہے، اس لیے اب انہیں واپس جانا چاہئے۔

عراق کی تحریک عصائب اہل الحق کے سربراہ نے عراق میں امریکی فوج کی موجودگی کے بارے میں کہا ہے کہ داعش کے خاتمے کے بہانے امریکی فوج کی اتنی بڑی تعداد اب بھی عراق میں موجود ہے۔

شیخ قیس خزعلی نے کا مزید کہنا تھا کہ ترکی نے داعش کی وجہ سے ملک میں خراب حالات کے باعث اپنی فوج عراق میں داخل کر دی تھی اور اس وقت داعش کے خلاف جنگ جاری ہونے کی وجہ سے عراقی حکومت اس سلسلے میں قانونی اقدمات نہیں کر سکی۔

انہوں نے  کہا کہ اتنی بڑی تعداد میں غیر ملکی فوج کا عراق میں رہنا قابل قبول نہیں البتہ بعض فوجی افسران عراقی فوج کی مشقوں کے لیے ان کے یہاں رہنے پر بات کی جا سکتی ہے

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  57719
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
برطانوی وزیراعظم تھریسامے کے متنازع ریمارکس پر ایرانی وزارت خارجہ میں تہران میں برطانوی سفیر نکلوس ہوسیٹن کو طلب کرکے شدید احتجاج کیا ہے۔
سعودی عرب کے بعد متحدہ عرب امارات نے بھی داعش کے خلاف امریکہ کی زیر قیادت بین الاقوامی اتحادی افواج کی معاونت کے لیے زمینی فوج شام بھیجنے پر آمادگی ظاہر کر دی ہے۔
وزیراعظم میاں محمد نواز شریف اور آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے سعودی فرمانرواں سے ملاقات میں پاکستان کا مؤقف پیش کردیا، پاکستانی قیادت نے کشیدگی کم کرانے کیلئے سعودی عرب اور ایران کے درمیان رابطے بڑھانے کی تجویز دیدی
ایران نے کہا ہے کہ اس کے بیلسٹک میزائل پروگرام سے متعلق نئی امریکی پابندیاں غیر قانونی ہیں کیونکہ امریکہ مشرق وسطیٰ میں ہتھیار فروخت کرتا ہے۔ اور یہ اسلحہ فلسطینی، لبنانی اور حالیہ مہینوں میں یمنی شہریوں کے خلاف جنگی جرائم میں استعمال کیا جاتا ہے۔

مزید خبریں
مسجد اقصیٰ کے امام وخطیب الشیخ اسماعیل نواھضہ نے برما میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کی شدید مذمت کی اور عالم اسلام پر زور دیا کہ وہ روہنگیا مسلمانوں کو ریاستی جبر وتشدد سے نجات دلانے کے لیے موثر اقدامات کریں

مقبول ترین
وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان خطے میں امن اور استحکام کے لئے اپنا کردار ادا کرنے کو تیار ہے۔ ایرانی صدر سے ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا کہ پاکستان اور
اسلام آباد میں وزیراعظم آفس کے سامنے مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم کیخلاف انسانی زنجیر بنائی گئی۔ وزیراعظم عمران خان نے بھی اس تقریب میں شرکت کی اور قوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں
برطانوی پولیس نے 2016 میں برطانیہ سے بیٹھ کر پاکستان میں نفرت انگیز تقریر کرنے سے متعلق تفتیش میں متحدہ قومی مومنٹ (ایم کیو ایم) کے بانی الطاف حسین پر دہشت گردی کی دفعہ کے تحت فرد جرم عائد کردی۔
وزیراعظم کی چین کے صدر شی جن پنگ سے ملاقات ہوئی جس میں مقبوضہ کشمیر کی صورت حال اور علاقائی سیکیورٹی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیراعظم عمران خان اور چین کے صدر شی جن پنگ کے درمیان بیجنگ کے اسٹیٹ گیسٹ ہاؤس میں ملاقات ہوئی۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں