Saturday, 25 November, 2017
پاکستان کو افغان سالمیت کا خیال رکھنا چاہیے، افغان سفیر

پاکستان کو افغان سالمیت کا خیال رکھنا چاہیے، افغان سفیر

اسلام آباد ۔ پاکستان میں افغان سفیر ڈاکٹر عمر زخیلوال نے پاکستان پر الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان نے سمجھ لیا کہ اب افغانستان کا ہر معاملہ اسلام آباد طے کریگا جبکہ پاکستان کو افغان سالمیت کا خیال رکھنا چاہیے اور ایک آزاد ملک کی حیثیت سے دیکھنا چاہیے۔ افغانستان، بھارت کے ساتھ مل کر پاکستان کو نقصان نہیں پہنچائے گا۔ انھوں نے تسلیم کیا کہ افغان صورتحال کے باعث پاکستان نے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں بھاری قیمت ادا کی تاہم افغان سرزمین پر کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کی محفوظ پناہ گاہیں اور دونوں ممالک میں شدید بداعتمادی کی فضاء کا خاتمہ ہونا چاہیے۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں عالمی برادری سے غلطیاں ہوئی ہیں۔

اسلام آباد میں "دوطرفہ مفاہمت کے مواقع اور چیلنجز" کے موضوع پر پاکستان اور افغانستان کے حوالے سے منعقدہ گول میز مذاکرے سے خطاب کرتے ہوئے افغان سفیر نے کہا کہ دوطرفہ تعلقات کے حوالے سے ماحول تیزی سے تبدیل ہورہا ہے جبکہ پاکستان اور افغانستان کے مابین بہت سے حل طلب مسائل ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں عالمی برادری سے غلطیاں ہوئی ہیں۔ تاہم پاکستان اور افغانستان میں عالمی برادری کی غلطیاں دُہرائی نہیں جانی چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں امن افغانستان میں دیرپا امن کے قیام سے ہی ممکن ہے اور کسی تیسرے ملک پر تکیہ کرنے کے بجائے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مفاہمت کے ذریعے بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے تسلیم کیا کہ دونوں ممالک کے تعلقات سنگین عدم اعتماد کا شکار ہے جبکہ دونوں ممالک کی ثقافت، تاریخ، جغرافیہ اور اقتصادیات ایک دوسرے پر منحصر ہے۔

ان کا دعویٰ تھا کہ پاکستان کو اکیلا کرنے یا تنہا کرنے میں افغانستان کبھی حصہ دار نہیں بنے گا کیونکہ پاکستان کو تنہا کرنا افغانستان کے مفاد میں نہیں اور ہمیں ایک دوسرے کو سالمیت و خودمختاری کے تحفظ کی یقین دہانی کرانا ہوگی۔

افغان سفیر کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک عدم استحکام کا شکار رہے تو جنوبی و وسطی ایشیاء کے مابین پل نہیں بن سکیں گے جبکہ عدم اعتماد کی فضاء ختم ہوگی تو دونوں ممالک میں عوامی خوشحالی کی بنیاد پڑے گی۔ پاکستان کو افغانستان کے بھارت سے تعلقات کو بھی مثبت انداز میں دیکھنا ہوگا اور ’ہم یقین دلاتے ہیں کہ بھارت کے ساتھ مل کر افغانستان پاکستان کو نقصان نہیں پہنچائے گا۔

انہوں نے زور دیا کہ پاکستان خوشحال ہوگا تو افغانستان بھی آگے بڑھے گا جبکہ دونوں ممالک کے عوام بہترین دوطرفہ تعلقات چاہتے ہیں، ’دوطرفہ سطح پر عوام آزادانہ تجارت، کاروبار، تعلقات کے خواہاں ہیں‘۔افغان سفیر نے کہا کہ طالبان، حقانی نیٹ ورک یا ٹی ٹی پی کی پناہ گاہوں کی اجازت نہیں دی جانی چاہیے اور غیر ریاستی یا ریاستی عناصر ہماری سرزمین دہشت گردی کے لیے استعمال نہ کریں۔

اس موقع پر افغان سفیر سے سوال کیا گیا کہ پاکستان اور افغانستان کے مابین تعلقات کیوں خراب ہیں؟ جس پر عمر زخیلوال کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک یا ریاستوں نے تعلقات میں بد انتظامی سے کام لیا اور افغانستان کی جانب سے پاکستان اور بھارت کے مابین تعلقات میں توازن نہیں رکھا گیا جبکہ افغانستان، امریکا اور چین پر انحصار کرتا رہا لیکن پاکستانی ریاستی اداروں کے خلاف بدزبانی کی گئی تاہم پاکستان نے بھی افغانستان کے ریاستی اداروں میں مداخلت کی۔

افغان سفیرنے مزید کہا سرحد پر رکاوٹیں کھڑی کرنا اور راہداری کے مسائل پیدا کئے گئے جبکہ پاکستان کو بھی افغانستان کو آزادانہ حیثیت میں دیکھنا ہو گا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ پاکستان نے سمجھ لیا کہ اب افغانستان کا ہر معاملہ اسلام آباد طے کریگا جبکہ پاکستان کو افغان سالمیت کا خیال رکھنا چاہیے اور ایک آزاد ملک کی حیثیت سے دیکھنا چاہیے۔

ان کا مطالبہ کیا تھا کہ پاکستان کو افغانستان کے حوالے سے اپنی پالیسی بدلنا ہوگی جبکہ پاکستان میں بھارت کے حوالے سے بہت سی غلط فہمیاں پائی جاتی ہیں۔

افغان سفیر نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کو دوطرفہ امور اور اپنے مفادات کو دیکھنا چاہیے اور کسی تیسرے ملک سے تعلقات پاکستان اور افغانستان کے مابین تعلقات کو نقصان نہ پہنچائیں جبکہ ہماری سرزمین کسی غیر ریاستی عناصر یا دہشت گردی کے لیے استعمال نہ ہوسکے۔

خیال رہے کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان کافی عرصے سے بد اعتمادی کی فضاء قائم ہے جس کی وجہ افغانستان حکومت کا پاکستان کے روایتی حریف بھارت پر انحصار بڑھانا ہے جبکہ افغان حکومت کا الزام ہے کہ پاکستان ان کے ملک میں مداخلت کا ذمہ دار ہے۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  86535
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ خوشحال بلوچستان دراصل خوشحال پاکستان ہے۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باوجوہ نےوزیراعلیٰ بلوچستان نواب
پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہےکہ جمہوریت کو نواشریف سے خطرہ ہے۔ نوازشریف مفاد پرست ہیں اور جمہوریت کے خلاف ہر سازش میں شامل رہے ہیں۔ میاں صاحب ذاتی معاملات کو سیاست سے نہ جوڑیں، میاں صاحب نظریے کو سمجھتے ہی نہیں،
دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر فیصل نے کہا ہےکہ پاکستان کے خلاف دہشتگردی میں بھارتی خفیہ ایجنسی ’را‘ کے افغانستان سے روابط کے ثبوت موجود ہیں۔ کپواڑہ اور دیگرعلاقوں میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور بھارت کے نہتے کشمیریوں پر مظالم کی شدید مذمت کرتے ہیں۔
سابق وزیر اعظم نواز شریف ٗان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن صفدر حاضری سے استثنیٰ کے باوجود 3 نیب ریفرنسز کی سماعت کیلئے احتساب عدالت میں پیش ہوئے سماعت کے دور ان نواز شریف کے وکیل اور نیب پراسیکیوٹر میں گرما گرمی ہوئی جس پر جج محمد بشیر نے سخت برہمی کا اظہار کیا۔

مزید خبریں
وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف پورے عزم سے لڑ رہے ہیں ، دہشت گردوں کا نیٹ ورک توڑ دیا ہے ، آخری دہشت گرد کے خاتمے تک جنگ لڑیں گے۔ وزیر اعظم نواز شریف سے پشاور میں مسلم لیگ ن کے سینیٹرز اور ارکان قومی
سابق گورنر پنجاب چوہدری محمد سرورنے تحریک انصاف میں باضابطہ طور پر شامل ہونےکی تصدیق کردی ہے۔ ایک نجی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے چوہدری سرور کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف جمہوریت پسند جماعت ہے اس لئے اس میں شامل ہونے کا
ترجمان دفتر خارجہ تسنیم اسلم نےافغان حکام کی جانب سے لگائے جانے والے ان الزامات کو سختی کے ساتھ مسترد کردیا ہے، جن میں کہا گیا تھا کہ سول کپڑوں میں ملبوس پاکستانی فوجی دستے افغان صوبے کنڑ میں حملے کر رہے ہیں۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ افغان حکام کے بے بنیاد اور من گھڑت الزامات سے
سردارمہتاب احمد خان نے خیبرپختونخواکے نئے گورنرکی حیثیت سے اپنے عہدے کاحلف اٹھالیا ہے جنہوں نے قبائلی علاقوں میں قیام امن ، سماجی واقتصادی ترقی اوربحالی وتعمیرنو کواپنی ترجیحات قراردیا ہے۔

مقبول ترین
اسلام آباد انتظامیہ کی جانب سے دھرنے کے شرکاء کو دی گئی 12 بجے کی ڈیڈ لائن ختم ہوگئی ہے تاہم فیض آباد کے مقام پر مظاہرین کی جانب سے دھرنا جاری ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ انتظامیہ ڈیڈ لائن میں اضافہ کردیا ہے اور کہا ہے
دہشت گردی کے خلاف جنگ کے لیے سعودی عرب کی سربراہی میں قائم اسلامی ممالک کی افواج کے اتحاد کی سرکاری ویب سائٹ متعارف کرا دی گئی ہے۔ دہشت گردی مخالف اسلامی فوجی اتحاد‎ (آئی ایم سی ٹی سی) کی ویب
سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا کہنا ہے کہ کرپشن کے خلاف سعودی عرب میں ہونے والی حالیہ کارروائی کو تخت حاصل کرنے کی کوشش قرار دینا مضحکہ خیز ہے۔ انہوں نے ایران کے رہبرِ اعلیٰ آیت اللہ خامنہ ای کے بارے میں
اسلام آباد انتظامیہ نے دھرنے کے شرکا کو آج رات 12 بجے تک فیض آباد خالی کرنے کی وارننگ جاری کردی جب کہ حکم پر عملدرآمد نہ ہونے کی صورت میں آپریشن کا عندیہ دیا گیا ہے۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ آپریشن کی تمام ذمہ

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں