Monday, 17 December, 2018
’’سانحہ اے پی ایس کے شہداء کو خراج تحسین‘‘
16دسمبر2014ء تاریخ کا وُہ سیاہ ترین دِن ہے جس دِن دُشمن نے وطن عزیز پاکستان کے پھولوں کے شہر پشاور میں وطن عزیز کے معصوم بچوں،ننھی کلیوں کو خون میں نہلا دیا،واقعہ میں بچوں،اساتذہ ودیگر سمیت 147افراد شہید اور متعدد زخمی ہوئے
’’ترجمان ماضی، شان حال‘‘

’’آئیڈیاز 2018ء‘‘ اور قومی تقاضے
اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ موجودہ دور میں ہر ملک اور قوم کو اپنی آزادی اور خودمختاری کو محفوظ اور یقینی بنانے کے لئے عسکری اور تذویراتی تناظر میں تسلی بخش اقدامات اور انتظامات کرنے ہوتے ہیں۔ اس حوالے سے یہ امر واقعہ نہایت
جب امریکہ نے پاکستان پر حملہ کر دیا
عالمی امور اور خاص طور پر پاک امریکہ تعلقات کے حوالے سے 26 نومبر 2011ء کو غیر معمولی حیثیت حاصل ہو چکی ہے۔ اس روز افغانستان میں موجود امریکی اور نیٹو افواج نے پاکستان پر حملہ کر دیا۔ ہوا یوں کہ مذکورہ افواج پاک افغان سرحد پر واقع مہمند
شعبہ صحت تبدیلی کی طرف گامزن
شعبہ صحت تبدیلی کی طرف گامزن، تحریر: راؤ شکیل
’’وادی سوات میں امن کا نیا دور‘‘
اہل وطن کے لئے یہ خبر ہر اعتبار سے مسرت انگیز اور اطمینان ثابت ہوئی کہ گذشتہ دنوں سوات میں دہشت گردی کے خلاف آپریشن کے 11 سال بعد پاک فوج نے انتظامیہ کے اختیارات سول احکام کے حوالے کر دیئے۔ پاک فوج کے بریگیڈیر نسیم نے انتظامی
پاک فوج کی جرأت مندانہ للکار
بین الاقوامی برادری میں یہ تاثر عام ہے کہ بھارتی قیادت علاقائی بالادستی حاصل کرنے کے زعم میں یوں مبتلا ہو چکی ہے کہ اس پر کسی نفسیاتی غلبہ اور سیاسی و سفارتی عارضہ کا گمان ہوتا ہے۔ وزیراعظم مودی نے اپنے دور حکومت میں نیپال، بنگلہ دیش
ٹرمپ دودھ ختم ہونیکے بعد گائے کا کیا کرینگے
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنی انتخابی مہم کے دوران میں سعودیہ کے لئے دودھ دینے والی گائے کا لفظ استعمال کرچکے ہیں۔ انھوں نے کہا تھا کہ وہ ہمارے لئے ایک دودھ دینے والی گائے ہے، ہم جب بھی چاہیں گے، اس سے سونا اور ڈالر
ریاستِ مدینہ کا تصور اور قیامِ امام حسین ؑ
تحریر: علامہ سید ساجد علی نقوی قائدِ ملت جعفریہ پاکستان
ریاستِ مدینہ کا تصور اور قیامِ امام حسین ؑ
اگرچہ خلقتِ انسان کے بعد مختلف زمانوں میں مختلف انبیاء و رسل نے انسانی معاشروں کی اصلاح اور رہنمائی کے لیے اللہ کے احکامات کے تحت اجتماعی نظام قائم کیے اور ریاست و حکومت کے ذریعے لوگوں کے اندر عدل و انصاف کو رواج دیا لیکن تکمیلِ دین و اکمالِ
’’مقاصد امام حسینؑ‘‘
امام حسینؑ نے اپنے خطبوں اور مکتوبات میں اپنے قیام اور اقدام کے مقاصد بہت واضح طور پر بیان کئے ہیں۔ آپ نے اپنے بھائی حضرت محمد حنفیہ کے نام اپنے ایک مکتوب میں صراحت سے لکھا کہ میں امربالمعروف اور نہی عن المنکر کیلئے جارہا ہوں
یزید کے خلاف امام حسینؑ کی چارج شیٹ
امام حسینؑ نے یزید کی بیعت سے انکار کردیا، یہ جانتے ہوئے کہ اس کا نتیجہ سوائے موت کے کچھ نہیں نکلے گا جیسا کہ تارمتعدد مواقع پراس کی شہادت دیتی ہے۔ یہاں تک کہ جب امام حسینؑ مدینہ سے ہجرت کرکے مکہ تشریف لے گئے تو وہاں پر بھی آپ کو قتل کرنے
’’قیام امام حسین ؑ کے مقاصد‘‘
امام عالی مقام سید الشہدؑ اء کے قیام کے مقاصد کیا تھے، اس سلسلے میں آپؑ کی شہادت کے دن سے گفتگو جاری ہے اوررہتی دنیا تک جاری رہے گی۔یہ واقعہ ہی اتنا اہم ہے کہ اس کی طرف سے صرف نظر کر کے تاریخ گزر سکتی تھی نہ تاریخ کے تجزیہ نگار
’’آئیں حسینؑ کا غم مل کر منائیں‘‘
آئیں امام حسینؑ کا غم مل کر منائیں، اس لیے کہ ہم سب اس رسولؐ کی امت ہیں حسینؑ جس کے نواسے ہیں، اس لیے کہ امام حسینؑ کا غم واقعۂ کربلا کے وقوع پذیر ہونے سے پہلے خود نبی اکرمؐ نے منایا۔ اس طرح حسینؑ کا غم منانا اور حسینؑ کے غم میں آنسو بہانا
ڈیم، ڈیم اور صرف ڈیم
پانی قدرت کا انمول تحفہ ہے جس کے بغیر انسانی زندگی کا وجود ممکن نہیں۔ عالمی آبادی میں بے تحاشہ اضافے کی وجہ سے جہاں دیگر قدرتی وسائل دباؤ کا شکار ہیں وہیں پانی کی کمیابی بھی آج بنی نوع انسان کے لئے ایک بہت بڑا چیلنج بن چکا ہے۔
’’حرمت رسولؐ اور آزادئ اظہار رائے‘‘
انسانی ایجادات اور علم و شعور کی آگہی کے باعث ہر سو طلسماتی ترقی ہوتی ہوئی دکھائی دے رہی ہے۔ شرق تا غرب دوریاں مٹ گئی ہیں اور ایک کونے میں رہنے والا دوسرے کونے میں رہے والے سے یکسرملا ہوا اور رابطے میں دکھائی دیتا ہے۔
’’جب خواب شرمندۂ تعبیر ہوا‘‘
دنیا بھر میں موجود پاکستانی باشندے اور ان کے احباب روایتی جوش و خروش کے ساتھ وطن عزیز کا 71واں یوم آزادی منا رہے ہیں۔ اس حقیقت کو اب ایک تاریخی اور مستند حوالہ کی حیثیت حاصل ہو چکی ہے کہ قیام پاکستان کے تصور کو ایک مملکت کے روپ میں نمودار
مقبول ترین
جنگ کسی بھی معاشرے کیلئے نہ صرف بربادی کا سامان فراہم کرتی ہے بلکہ جنگ زدہ علاقے معاشی طور پر بھی ترقی اور تعمیر کے عمل میں پیچھے رہ جاتا ہے۔ جنگوں کی وجہ سے تقسیم ہونے والے خاندانوں کے دل کی کیفیت اور کرب تو وہی لوگ سمجھ سکتے ہیں
امریکی کانگریس نے قرارداد منظور کی ہے کہ امریکہ یمن سعودی جنگ میں سعودی عرب کی حمایت سے دستبردار ہو جائے.امریکہ کی وزارت خارجہ کے وزیر پومپیو نے کہا کہ ہم امریکی کانگریس کی منظور کی گئی قرارداد کا احترام کریں گے.
سابق صدر آصف زرداری نے کہا ہے کہ گرفتار ہوا تو کیا ہوگا، جیل دوسرا گھر ہے، ان کو غلط فہمی ہے کہ ہم خوف میں مبتلا ہیں، اداروں کو کمزور نہیں کرنا چاہتے۔ سیاست سوچ سمجھ کر کی جاتی ہے، ان کو کھیلنا آتا ہی نہیں، یہ انڈر 16 کھلاڑی ہیں۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے سانحہ اے پی ایس کے شہدا اور والدین کو سلام اور خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم سانحہ آرمی پبلک سکول (اے پی ایس) کے شہدا کو نہیں بھولے

براہ راست نشریات
جنگ کسی بھی معاشرے کیلئے نہ صرف بربادی کا سامان فراہم کرتی ہے بلکہ جنگ زدہ علاقے معاشی طور پر بھی ترقی اور تعمیر کے عمل میں پیچھے رہ جاتا ہے۔ جنگوں کی وجہ سے تقسیم ہونے والے خاندانوں کے دل کی کیفیت اور کرب تو وہی لوگ سمجھ سکتے ہیں
امریکی کانگریس نے قرارداد منظور کی ہے کہ امریکہ یمن سعودی جنگ میں سعودی عرب کی حمایت سے دستبردار ہو جائے.امریکہ کی وزارت خارجہ کے وزیر پومپیو نے کہا کہ ہم امریکی کانگریس کی منظور کی گئی قرارداد کا احترام کریں گے.
تاریخ کی گواہی اور حوالہ یہی ہے کہ آج کا بنگلہ دیش 47 برس قبل وطن عزیز کا حصہ تھا جو مشرقی پاکستان کہلاتا تھا۔ دونوں ممالک کے عوام نے برطانوی سامراج اور ہندو بالادستی سے حصول آزادی کے لئے مل کر جدوجہد کی تھی۔ اسی طرح دونوں ممالک کے لوگوں

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں