Monday, 17 December, 2018
ٹی وی والو! ڈیم کے لیے چندہ مانگو، پیمرا کا حکم

ٹی وی والو! ڈیم کے لیے چندہ مانگو، پیمرا کا حکم

 

واشنگٹن ۔ پاکستان الیکٹرونک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی یعنی پیمرا نے تمام سیٹلائٹ ٹی وی چینلوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ نئے ڈیموں کی تعمیر کے لیے فنڈ جمع کرنے کی خاطر مفت اشتہارات چلائیں اور طویل دورانیے کی خصوصی نشریات کا اہتمام کریں۔

اپنی نوعیت کی اس انوکھی اور غیر معمولی ہدایت کے بارے میں پیمرا کا کہنا ہے کہ اسے سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم اور اٹارنی جنرل کا خط ملنے کے بعد جاری کیا جا رہا ہے۔

آٹھ اگست کو اس ہدایت میں کہا گیا کہ مارننگ شو کے ہر گھنٹے اور پرائم ٹائم میں شام سات سے نصف شب کو بارہ بجے تک ہر گھنٹے میں ایک منٹ ڈیموں کی خاطر چندہ مانگنے کے لیے وقف کیا جائے۔

ٹی وی چینلوں کو یہ ہدایت بھی کی گئی ہے کہ ٹیلی تھون یعنی طویل دورانیے کی نشریات کا اہتمام کریں اور اس میں مشہور شخصیات کو بلائیں جو عوام سے دل کھول کر چندہ دینے کی اپیلیں کریں۔

اگلے وزیر اعظم قرار دیے جانے والے عمران خان ماضی میں کئی کامیاب ٹیلے تھون میں شریک رہے ہیں۔ جیو ٹی وی پر 2010 میں سیلاب زدگان کے لیے ٹیلے تھون پکار میں تین کوششوں میں ایک ارب دس کروڑ جمع ہوئے تھے۔ پشاور میں شوکت خانم میموریل اسپتال کی تعمیر کے لیے اے آر وائی پر 2015 میں ون بلین ٹیلی تھون چیلنج کا اہتمام کیا گیا تھا۔

پاکستان کے چیف جسٹس دیامیربھاشا اور مہمند ڈیموں کی تعمیر کے لیے فکرمند ہیں۔ ان کے حکم پر اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے دس جولائی کو ڈیموں کے لیے چندہ اکاؤنٹ کھولا جس میں آٹھ اگست تک 72 کروڑ 48 لاکھ روپے جمع کروائے جا چکے تھے۔

پاکستانی میڈیا ماضی میں اس بارے میں بہت حساس رہا ہے کہ کوئی اسے ایڈوائس نہ دے۔ وائس آف امریکہ نے سینئر صحافی امتیاز عالم سے سوال کیا کہ پیمرا کی ہدایت پر کسی کو اعتراض تو نہیں ہوگا؟ امتیاز عالم نے کہا کہ ’’پاکستانی میڈیا کے ہاتھ پاؤں بندھے ہوئے ہیں، ناک کان بند ہیں اور زبانیں کٹی ہوئی ہیں‘‘۔

پاکستان میں چیف جسٹس کا سکہ چلتا ہے۔ وہ قوم کا مستقبل اور اپنی آخرت سنوارنا چاہتے ہیں تو کسی کو کیا تکلیف ہے؟ حکومت کا سارا کام ہی سپریم کورٹ کو تفویض کردینا چاہیے کیونکہ سیاست دان تو سب کرپٹ ہیں۔

بزرگ صحافی ضیا الدین نے وائس آف امریکہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تمام ٹی وی چینل اپنی نشریات کا کچھ حصہ پبلک سروس یعنی عوامی خدمت کے لیے مختص کرنے کے پابند ہیں۔ عام طور پر پاکستانی میڈیا ایسا نہیں کرتا۔ اگر پیمرا نے اس کی ہدایت کی ہے تو کوئی ہرج نہیں۔ لیکن یہ سوال اپنی جگہ ہے کہ کیا چندہ مانگ کر ڈیم تعمیر کیا جاسکتا ہے۔ میرا خیال ہے کہ نہیں۔

ایک اندازے کے مطابق صرف بھاشا ڈیم کی تعمیر کے لیے کم از کم 14 ارب ڈالر یعنی تقریبا 1700 ارب روپے درکار ہیں۔ عالمی مالیاتی ادارے اس ڈیم کے لیے قرضہ دینے سے انکار کرچکے ہیں، کیونکہ اس کے لیے مختص کی گئی زمین گلگت بلتستان کے متنازعہ علاقے میں ہے۔ پاکستان نے اس ڈیم کو سی پیک میں شامل کرنا چاہا؛ لیکن چین نے بھی انکار کردیا۔

ماہرین کہتے ہیں کہ ہر ماہ ایک ارب روپے کا خطیر چندہ ملتا رہے تو بھی ایک ڈیم کے لیے رقم جمع ہونے میں ڈیڑھ سو سال لگ جائیں گے۔ تجزیہ کار حیران ہیں کہ چیف جسٹس کو ڈیم کی لاگت کا اندازہ نہیں یا کوئی شخص انھیں درست صورتحال سے آگاہ کرنے کی ہمت نہیں کر پارہا۔ ۔۔۔۔۔۔۔ بہ شکریہ وائس آف امریکہ اردو سروس

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  16072
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پیپلزپارٹی نے حکومت کیخلاف فوری طور پر احتجاجی تحریک نہ چلانے پر اتفاق کیا ہے۔ اپوزیشن ذرائع نے جیونیوز کو بتایا کہ پاکستان پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ (ن) نے بیک ڈور رابطوں میں فوری طور پر کسی قسم کی احتجاجی
میڈیا کے مطابق سپریم کورٹ نے پانی کی کمی اور ڈیمزکی تعمیر سے متعلق کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ہے جبکہ ڈیمزکی تعمیر اورکام کی نگرانی کے لیےعملدرآمد کمیٹی بھی قائم کردی ہے۔ عدالتِ عظمیٰ کے تفصیلی فیصلے کے مطابق عملدرآمد کمیٹی
ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کے مطابق پاکستان میں متعین چینی سفیر یاؤجنگ نے پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کرکے باہمی دلچسپی کے امور اور خطے کی سیکیورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔
چین نے برطانوی اخبار کی پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) سے متعلق رپورٹ کو من گھڑت اور جھوٹ پر مبنی قرار دے دیا۔ چینی سفارتخانے کا کہنا ہے کہ مضمون منفی عزائم کو سامنے رکھ کر بنایا گیا، پاکستان نے سی پیک کو قومی ترجیح قرار دے دیا ہے۔

مقبول ترین
سابق وزیراعظم نواز شریف کے سیکیورٹی گارڈ نے صحافی کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا جس کے خلاف صحافیوں نے شدید احتجاج کیا۔ مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف پارلیمنٹ ہاؤس پہنچے جہاں انہوں نے شہباز شریف سے ملاقات کی جس کے بعد ان
ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ بندوق کی گولیاں آزادی کے غیر مسلح بہادر حریت پسندوں کو کبھی کچل نہیں سکتیں۔
فیصل رضا عابدی نے چیف جسٹس پاکستان کے خلاف ایک ویب چینل کو انٹرویو دیا تھا اور اس معاملے میں ان پر آج فرد جرم عائد کی گئی ہے، تاہم انہوں نے صحت جرم سے انکار کر دیا ہے۔ باس موقع پر عدالت نے آئندہ سماعت پر استغاثہ کے گواہوں کو طلب کرلیا ہے۔
پاکستان کے تعاون سے آج سے شروع ہونے والے امریکا طالبان مذاکرات کا امریکا کی جانب سے خیر مقدم کیا گیا ہے جب کہ طالبان نے بھی امریکی حکام کے ساتھ مذاکرات میں شرکت کی تصدیق کردی۔ ہائی پیس کونسل کے ڈپٹی چیف

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں