Sunday, 05 April, 2020
کورونا وائرس کے 4 ہزار سے زائد مشتبہ مریض موجود ہیں، ڈاکٹر ظفر مرزا

کورونا وائرس کے 4 ہزار سے زائد مشتبہ مریض موجود ہیں، ڈاکٹر ظفر مرزا

وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا ہے کہ پاکستان میں اس وقت کورونا وائرس کے 4ہزار سے زائد مشتبہ مریض ہیں جن میں سے 664 گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران رپورٹ ہوئے ہیں۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے اسلام آباد میں چیئرمین نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی لیفٹیننٹ جنرل محمد افضال اور وزیر اعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی معید یوسف کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کورونا وائرس کے حوالے سے معلومات فراہم کیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس وقت دنیا میں 186ملک ان میں وائرس پھیل چکا ہے اور اس کے مریض ہیں، 2لاکھ 77ہزار سے زائد کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور اب تک 11ہزار 431 اموات ہو چکی ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ خوش آئند امر یہ ہے کہ دنیا بھر میں وائرس سے متاثر ہونے والے 92ہزار افراد مکمل طور پر صحتیاب ہو چکے ہیں۔

وزیر اعظم کے معاون خصوصی کے مطابق پاکستان میں اس وقت کورونا وائرس کے 4ہزار 46 مشتبہ مریض ہیں لیکن پچھلے 24گھنٹوں میں 664مشتبہ افراد رپورٹ ہوئے ہیں۔

ڈاکٹر ظفر مرزا نے مزید تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں مجموعی طور پر 534افراد میں وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے جس میں پنجاب میں 104 افراد، سندھ میں 259، خیبر پختونخوا میں 27، بلوچستان میں 103، گلگت بلتستان میں 30 اور آزاد جموں و کشمیر میں ایک جبکہ 10افراد کا تعلق اسلام آباد سے ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں بھی مریض اس مرض سے صحتیاب ہو رہے ہیں اور اب تک 5افراد مکمل طور پر صحتیاب ہو چکے ہیں، آںے والے دنوں میں متعدد افراد کو ہسپتال سے ڈسچارج کردیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جن افراد میں وائرس کی تشخیص ہوئی ان میں سے 3 ہلاک ہو چکے ہیں جن میں ایک کراچی، ایک مردان اور ایک پشاور میں ہلاک ہوا۔

وزیر اعظم کے معاون خصوصی نے تفتان کے حوالے سے بھی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ اس کا مثبت پہلو یہ ہے کہ ہم نے تفتان میں اس طرح کا انتظام کیا تھا کہ جس کی بدولت ہمیں پتہ چلا کہ کون سے کیسز مثبت ہیں تاکہ ہم ان کی مناسب طریقے سے ان کا علاج معالجہ کر کے صحتیاب کر سکیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پچھلے 24 گھنٹے میں ملک میں داخلے کے 18 سے 19 مقامات ہیں اور وہاں سے ہم پاکستان آنے والے 13ہزار 991 لوگوں کی اسکریننگ کر چکے ہیں اور اب تک پاکستان میں باہر سے تشریف لانے والے 14لاکھ افراد کی اسکریننگ ہو چکی ہے۔

ڈاکٹر ظفر مرزا کے مطابق 28 فروری سے 17مارچ کے درمیان 6 ہزار 304 افراد صرف ایران سے پاکستان میں داخل ہوئے جن میں بلوچستان میں 2 ہزار 421 لوگ ایران سے واپس آئے، خیبر پختونخوا میں 176، پنجاب سے 2 ہزار 12، سندھ سے ایک ہزار 59، آزاد جموں و کشمیر کے 14 اور گلگت بلتستان کے 523 افراد ایران سے واپس آئے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ فیصلہ کیا گیا تھا کہ جو بھی ایران سے آرہا ہے انہیں قرنطینہ میں رکھا جائے گا اور اس وقت پاکستان کے مختلف صوبوں میں 3ہزار 378افراد کو قرنطینہ میں رکھا گیا ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ پاکستان مین اس وقت 14لیب حکومت قائم کرچکی ہے، چاروں صوبوں خصوصاً گلگت بلتستان میں یہ لیبارٹریز ہیں جو متواتر ٹیسٹ کر رہی ہیں اور ان لیبارٹری میں آنے والے دنوں میں اضافہ بھی کیا جائے گا۔

معاون خصوصی کے مطابق حکومت پاکستان کی سماجی فاصلہ رکھنے کی اعلان کردہ پالیسی ہے جس کے تحت لوگوں کوہدایت کی گئی ہے کہ کم از کم 2میٹر کا فاصلہ رکھیں تاکہ لوگ محفوظ رہ سکیں، اگر ہم صرف احتیاط سے کام لیتے ہوئے ذمے داری کا مظاہرہ کریں تو ہم اس بیماری کے پھیلاؤ کو پاکستان میں بہت مؤثر طریقے سے روک سکتے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  95565
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
وزیراعظم, عمران خان, ملائشین وزیراعظم, مہاتیر محمد, اسلامی دنیا, تجربہ کار, حکمران, مسائل,

مقبول ترین
پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ہر قیمت پر اپنے عوام اور ان کے مفادات کا تحفظ کریں گے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے بانی چیئرمین ذوالفقار علی بھٹو کی برسی کی مناسبت سے جاری بیان میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ
وفاقی حکومت کا کہنا ہے کہ 25 اپریل تک کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد 50 ہزار تک پہنچنے کا خدشہ ہے۔ حکومت نے کورونا وائرس سے بچاؤ کے قومی ایکشن پلان کی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرا دی۔ حکومت کی جانب سے عدالت میں جمع کرائی
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے ریاستی دہشت گردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 4 کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا۔ عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق قابض بھارتی فوج نے جنت نظیر وادی کے ضلع کلگام کے خارجی اور داخلی راستوں کو بند
دفتر خارجہ کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق افغان حکومت کی جانب سے سرحد کھولنے کی درخواست کی گئی تھی۔ پاکستان افغانستان کے عوام کے ساتھ یکجہتی کرتا ہے، افغان حکومت کی خصوصی درخواست اور انسانی ہمدردی پر اس بات کا فیصلہ کیا گیا ہے

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں