Sunday, 21 April, 2019
پاکستانی چینلز پر بھارتی پروگرام اور فلمیں دکھانے پر پھر پابندی

پاکستانی چینلز پر بھارتی پروگرام اور فلمیں دکھانے پر پھر پابندی

کراچی ۔ پاکستان کی اعلیٰ عدالت نے مقامی ٹی وی چینلز پر ایک مرتبہ پھر بھارتی پروگرام اور فلمیں دکھانے پر پابندی عائد کر دی ہے۔ پابندی کی خبر آتے ہی گلشن اقبال، گلستان جوہر سمیت بیشتر علاقوں کے کیبل آپریٹرز نے تمام فلمی چینلز یا تو بند کردیئے یا ان پر پاکستانی فلمیں اور گانے نشر کرنا شروع کردیئے۔

پابندی کے احکامات ہفتے کو سپریم کورٹ کی کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ کی جانب سے 'پروڈیوسرز ایسوسی ایشن' کی دائر کردہ درخواست کی سماعت کے دوران جاری کئے گئے۔

دوران سماعت عدالت عظمیٰ نے لاہور ہائی کورٹ کا 2017ء میں سنایا گیا فیصلہ بھی معطل کردیا۔ چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ''کوئی ہمارے ڈیم بند کرا رہا ہے اور ہم اس کے چینلز بھی بند نہ کریں۔۔ ایسا نہیں ہو سکتا۔ بند کریں۔۔ یہ بھارتی پروگرامز اور فلمیں دکھانا۔''

لاہور ہائی کورٹ کے جج جسٹس سید منصور علی شاہ نے سال 2017ء میں بھارتی پروگرام اور ڈرامہ سیریلز پر سن 2016ء میں عائد پابندی یہ کہتے ہوئے ختم کردی تھی کہ موجودہ دنیا جدید ٹیکنالوجی کی بدولت ایک ’گلوبل ویلیج‘ کی حیثیت اختیار کر گئی ہے۔ لہٰذا اب پابندی کوئی معنی نہیں رکھتی۔

ہفتے کو چیف جسٹس ثاقب نثار نے اسی فیصلے کو معطل کرتے ہوئے ایک مرتبہ پھر بھارتی پروگرام اور فلمیں دکھانے پر پابندی لگا دی ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان میں الیکٹرونک میڈیا کو کنٹرول کرنے والی اتھارٹی ’پیمرا‘ 15سال کی مدت کے لئے جو لائسنس جاری کرتی ہے اس کی شرائط میں یہ بات درج ہے کہ چینل بھارتی مواد سمیت 10فیصد غیر ملکی مواد نشر کرسکتا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  86544
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
چند روز قبل اسلام آباد سے اغوا ہونے والے خیبر پختونخوا پولیس کے ایس پی طاہر خان داوڑ کو مبینہ طور پر افغانستان میں قتل کر دیا گیا۔ خیبر پختونخوا پولیس کے ایس پی طاہر خان داوڑ 27 اکتوبر کو اسلام آباد سے لاپتہ ہوئے تھے۔
چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ انصاف میں تاخیر کی ایک وجہ عدلیہ کی نااہلی بھی ہے لہذا ہمیں اپنے گربیان میں جھانکنا پڑے گا۔ لاہور میں سپریم کورٹ بار سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان کا کہنا تھا کہ آج سب سے زیادہ
وزیر اعظم عمران خان کے اعلان کے بعد نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) نے ’’ نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام ‘‘کا رجسٹریشن فارم جاری کر دیا ہے، جو نادرا کی ویب سائٹ سے ڈاؤن لوڈ کیا جاسکتا ہے۔
ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کوئٹہ کینٹ میں سدرن کمانڈ کا دورہ کیا اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کوئٹہ ائیر بیس پر ان کا استقبال کیا۔ وزیراعظم کے ہمراہ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان اور وفاقی وزراء بھی تھے۔

مقبول ترین
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ 18 اپریل کو سرحد پار سے 15 دہشت گرد داخل ہوئے، دہشت گردوں نے فرنٹیئر کور کی وردی پہن رکھی تھی ، جنہوں نے بس کو روکا اورشناخت کرکے 14 پاکستانی شہید کیے
وزیراعظم نے اپنی حکومتی ٹیم میں مزید تبدیلیوں کا اشارہ دیتے ہوئے کہا ہےکہ کپتان کا مقصد ٹیم کو جتانا ہوتا ہے اور بطور وزیراعظم ان کا مقصد اپنی قوم کو جتانا ہے اس لیے جو وزیر ملک کے لیے فائدہ مند نہیں ہوگا اسے تبدیل کردیا جائے گا۔
وزیر اعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ میں بڑے پیمانے پر ردوبدل کرتے ہوئے فواد چوہدری سمیت دیگر وزراء سے ان کے قلمدان واپس لے لیے۔ وزیراعظم ہاؤس کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق فواد چوہدری سے وزارت اطلاعات واپس لے کر
وزیر خزانہ اسد عمر نے وزارت چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے وزرا کے قلمدانوں میں ردو بدل کرنے کا فیصلہ کیا ہے، وہ مجھ سے وزارت خزانہ واپس لے کر وزارت توانائی کا قلمدان دینا چاہتے تھے

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں