Sunday, 19 January, 2020
’’ہایئر ایجوکیشن کمیشن کی فنڈنگ میں اضافہ کیا جائے گا‘‘

’’ہایئر ایجوکیشن کمیشن کی فنڈنگ میں اضافہ کیا جائے گا‘‘

اسلام آباد ۔ جامعات کو طلباء کو نئے داخلے دینے اور مجلہ جات پبلش کرنے کے ساتھ ساتھ اعلی تعلیم اور تحقیق کی کوالٹی میں بہتری کی جانب توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ جیسے ہی ملکی معیشت میں بہتری آئے گی، ہایئر ایجوکیشن کمیشن کی فنڈنگ کے حالات میں بہتری آئے گی۔ ان خیالات کا اظہار صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے کوالٹی ایشورنس سسٹم، معیار اور پالیسی سازی: مسائل اور چیلنجز کے عنوان سے اسلام آباد میں منعقدہ بین الاقوامی کانفرنس میں خطاب کے دوران کیا۔

وفاقی وزیر برائے ایجوکیشن اینڈ پروفیشنل ٹریننگ نے اس ضمن میں وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ہایئر ایجوکیشن کمیشن کا ریکرنگ اور ڈویلپمنٹ بجٹ بڑھانے کا ارادہ رکھتی ہے۔

یہ کانفرنس ہایئر ایجوکیشن کمیشن اور یونائیٹڈ اسٹیٹس ایجوکیشنل فاؤنڈیشن ان پاکستان (USEFP)کے باہمی 
اشتراک سے منعقدی کی جا رہی ہے۔

ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ تعلیم کا مقصد انسانی ذہانت کی ترقی ہوتا ہے مگر تعلیم کو معاشرے کی ضرورے کے مطابق ہونا چاہیے۔ صدر مملکت نے اس بات پر زور دیا کہ جامعات کو اپنے نصاب میں طلباء کی معاشرتی اور نفسیاتی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے بہتری لانے کی ضرورت ہے۔

انھوں نے اعتراف کیا کہ گزشتہ سالوں میں ایجوکیشن سیکٹر کے انفراسٹرکچر میں بہت بہتری آئی ہے مگر زیادہ تر والدین اپنے طلباء کی تعلیم کی کوالٹی میں بہتری کے خواہش مند ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ کوالٹی میں وقت کے ساتھ بہتری آتی ہے، یہ اداروں اور افراد کے لیے ایک لگاتار سیکھنے کا عمل ہوتا ہے۔ انھوں نے اپنی گفتگو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ہمیں اپنے مسائل کی شناخت کرنی ہے، ان کا حل تلاش کرنا ہے اور اپنی استعداد کار میں بہتری لانی ہے تاکہ ایک مخصوص ٹائم لائن میں مسائل کے حل پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جا سکے۔ انھوں نے آخر میں کہا کہ اس اہم کام کے لیے ہمیں پر عزم ہونا ہوگا۔

وفاقی وزیر برائے فیڈرل ایجوکیشن اینڈ پروفیشنل ٹریننگ، شفقت محمودنے کہا کہ حکومت تعلیم کے میدان میں سرمایہ کاری کے لیے پر عزم ہے اور ہماری یہ ترجیح ہے کہ ملک میں یکساں تعلیمی نظام کا نفاذ عمل میں آئے۔

انھوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ پاکستان لرننگ پوورٹی انڈیکس (Learning Poverty Index)میں تنزلی کا شکار ہے اور ہمیں تعلیم تک رسائی میں بہتری کی وجہ سے تعلیم کی بہتر کوالٹی کا چیلنج درپیش ہے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت نے اسٹارٹ اپس اور انکیوبیشن کی سرگرمیوں کو فروغ دینے کے لیے کامیاب جوان پروگرام کا آغاز کیا ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ پرائم منسٹر احساس انڈرگریجویٹ اسکالرشپ پروگرام کے تحت پچاس ہزار انڈر گریجویٹ طلباء کو وظائف دیے جائیں گے۔

انھوں نے یونائیٹڈ اسٹیٹس ایجوکیشنل فاؤنڈیشن ان پاکستان کی اعلی تعلیم کے فروغ کے لیے کی جانے والی کاوشوں کو سراہا اور کہا کہ ان سرگرمیوں سے دوطرفہ تعلقات میں مزید گرمجوشی دیکھنے میں آئے گی۔

ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے چیئرمین طارق بنوری نے کہا کہ کانفرنس کے تھیمز ہایئر ایجوکیشن کمیشن کے ریفارم ایجنڈا سے مطابقت رکھتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اس کانفرنس کا بنیاد مقصد قومی سطح پر ”کوالٹی“ کے بارے میں بحث و مباحثہ کا آغاز کرنا ہے۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ کوالٹی منزل نہیں، راستہ ہے۔
امریکی سفیر، پال جونز نے کہا کہ امریکہ کو پاکستان کیساتھ تعلیمی اشتراک پر فخر ہے۔ انھوں نے کہا کہ انھیں سفارت کاری میں تین دہائیں ہو چکی ہیں مگر انھوں نے ہایئر ایجوکیشن کمیشن جیسا مؤثر پارٹنر نہیں دیکھا۔ انھوں نے یہ بھی بتایا کہ امریکہ نے حال ہی میں پاکستانی اداروں کے ساتھ 23پارٹنرشپس کی ہیں جبکہ یو۔ایس پاکستان اکیڈمک اینڈ کلچرل ایکسچینج پروگرام کے تحت ایک سو پاکستانیوں کو امریکہ بھجوایا گیا ہے۔

انھوں نے کانفرنس کے شرکاء کو بتایا کہ اب تک امریکہ کی جانب سے 19000پاکستانی طلباء کو نیڈ بیسڈ وظائف دیے گئے ہیں۔

اس کانفرنس کا مقصد اعلی تعلیم کی کوالٹی میں بہتری لانا، تعلیمی شعبہ سے وابستہ افرادکو یکجا کرنا اور بین الاقوامی کوالٹی ایشورنس معیارات کے حوالے سے باہمی افہام و تفہیم کرنا ہے۔ اس کانفرنس سے پاکستانی جامعات کے سربراہان کو یہ موقع میسر آئے گا کہ وہ دوسرے ممالک کی جامعات کے تجربات سے آگاہی حاصل کریں اور بالخصوص ان غیر ملکی جامعات کے سربراہان کو اپنے تجربات کے بارے میں معلومات فراہم کریں، جو اپنے اعلی تعلیمی سسٹم کی داغ بیل ڈالنے میں مصروف ہیں۔

مزید براں اس کانفرنس کے ذریعے کوالٹی کلچر کو استحکام ملے گا اور عالمی سطح پر درپیش چیلنجز کا سامنا کرنے اور ایک دوسرے کی معاونت کرنے کے لیے مشترکہ میدان کی فراہمی ہوگی۔ اس کانفرنس کے ذریعے وسائل کو متحرک کیا جائے گا، معیار بنایا جائے گااور مشترکہ طور پر سیکھنے کے عمل کا آغاز ہو گا۔ اس کانفرنس کی بدولت بہتر کوالٹی سسٹم بشمول اساتذہ کی بہتر استعداد کار اور پروگراموں کی کوالٹی بہتربنانے میں مدد ملے گی اور ایسا میکانزم تیار کرنے میں آسانی ہو گی کہ جس کے تحت پرفارمنس کو برقرار رکھنے اور بڑھانے میں مدد ملے گی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

’’ہایئر ایجوکیشن کمیشن کی فنڈنگ میں اضافہ کیا جائے گا‘‘
اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  98596
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
کوئٹہ کے علاقے سیٹلائٹ ٹاؤن کی مسجد میں ہونے والے زودار دھماکے میں‌ ڈی ایس پی امان اللہ اور امام سمیت 15 افراد شہید جبکہ متعدد ہو گئے۔ سیکیورٹی فورسز نے علاقے کا کنٹرول سنبھالتے ہوئے دھماکے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں.
حکومت کی جانب سےوزیر دفاع پرویز خٹک نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع کا آرمی ترمیمی ایکٹ 2020 بل قومی اسمبلی میں پیش کردیا۔
پاکستان مسلم لیگ ن کی مرکزی قیادت نے آرمی چیف کی مدت ملازمت سے متعلق آرمی ایکٹ میں ترامیم کی مخالفت نہ کرنے بلکہ آرمی ایکٹ میں ترامیم کی غیر مشروط حمایت کرنے کا فیصلہ کر لیا۔
وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدر ی نے کہا ہے کہ پاکستان کا مسئلہ یہ ہے کہ ادارے باہم دست و گریباں ہیں۔ وفاقی وزیر کا سینیٹ میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہمارے تمام ادارے نہ تو تمام معاملات میں قصور وار ہیں

مزید خبریں
گلگت بلتستان میں سردی کی شدت میں اضافے کے باعث درجہ حرارت منفی 20 تک گر گیا۔گلگت بلتستان کے بالائی علاقے خاص کر استور، روندو، کھرمنگ اور سکردوں میں شدید سردی اور، یخ بستہ ہواوں نے لوگوں کی زندگی اجیرن اور زندگی مفلوج کردی ہے۔

مقبول ترین
وزیراعظم, عمران خان, ملائشین وزیراعظم, مہاتیر محمد, اسلامی دنیا, تجربہ کار, حکمران, مسائل,
وزیرِ اعظم عمران خان کی معاونِ خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کہتی ہیں کہ میڈیا پر آٹا سپلائی سے متعلق منفی پروپیگنڈا چل رہا ہے۔
صوبائی وزیر خوراک سمیع اللہ چودھری نے کہا ہے کہ لاہور میں سستا آٹا وافر مقدار میں موجود ہے، آٹے کا مصنوعی بحران پیدا کرنے کی کوشش کی گئی، منافع خوروں کیخلاف کریک ڈاون جاری ہے۔
وزیر اعظم عمران خان نے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر بھارت کی جانب سے مستقل اشتعال انگیزی پر عالمی برادری کو خبردار کیا ہے کہ اگر بھارت کی جانب سے حملوں اور نہتے شہریوں کو نشانہ بنانے کا سلسلہ نہ رکا تو پاکستان کے لیے خاموش رہنا مشکل ہو جائے گا۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں