Tuesday, 23 July, 2019
حکومت نے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا، شبر زیدی

حکومت نے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا، شبر زیدی

فیصل آباد ۔ فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے چیئرمین شبر زیدی نے کہا ہے کہ حکومت نے بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا، اگر کوئی ایسا نیا ٹیکس لگایا ہے تو بتایا جائے اسے واپس لیا جائے گا۔

فیصل آباد میں تقریب سے خطاب کے موقع پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ایف بی آر میں ایک سے 15 گریڈ تک تبادلے ہوئے ہیں، جو معمول کے مطابق ہیں، نیا ایف بی آر ضرور بنے گا لیکن اس کا مطلب یہ نہیں کہ کوئی نئے لوگ یا عمارت ہوگی بلکہ وہیں لوگ ہوں گے جو اس میں موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جو بھی فرد ہراساں کرنے یا کرپشن میں ملوث ہوگا اسے کسی بھی حال میں کسی بھی ادارے میں نہیں ہونا چاہیے مگر اس کا موثر علاج آٹومیشن ہے۔

شبر زیدی کا کہنا تھا کہ ہم نے کہا تھا کہ ہم چھاپے نہیں ماریں گے، ابھی جو سب ہورہا وہ چھاپے نہیں بلکہ سخت چیکنگ ہے جبکہ اس کے ساتھ ساتھ ہم سیلز ٹیکس کی رجسٹریشن کو خودکار طریقے سے کرنے جارہے ہیں۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ نئے ایف بی آر میں نظام کو خودکار کردیا جائے گا اور اس ذاتی تعلق کو کم کیا جائے گا، اس کے علاوہ آڈٹ کی تعداد کو کم کیا جائے گا۔

اس موقع پر سوال کا جواب دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے عوام کو بہت بڑی سہولت دی ہے اور 2018 کے ٹیکس ریٹرن جمع کروانے کی تاریخ میں بھی 2 اگست تک توسیع کردی گئی ہے۔

نئے ٹیکسز کے اعلان اور تاجر تنظیموں کی ہڑتال سے متعلق سوال پر چیئرمین ایف بی آر کا کہنا تھا کہ ہم نے کوئی نیا ٹیکسز نہیں لگایا، مجھے بتائیں کہ ہم نے کونسا نیا ٹیکس لگایا، سیلز ٹیکس میں کہیں اضافہ نہیں ہوا بلکہ صرف چینی کی قیمت میں 3 روپے 26 پیسے کا اضافہ ہوا ہے۔

شبر زیدی کا کہنا تھا کہ یہ تاثر دینا کہ نیا ٹیکس لگایا ہے یہ غلط ہے، ہم نے ٹیکسٹائل کے شعبے پر کوئی نیا ٹیکس عائد نہیں کیا، برآمدی شعبہ پہلے بھی ٹیکس چھوٹ میں تھا جبکہ مقامی شعبے میں پہلے سے ٹیکس عائد تھے۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ٹیکس نظام کو صحیح کرنے کے لیے جو تبدیلی کی گئی، اس میں کوئی بڑی تبدیلیاں نہیں ہیں، شناختی کارڈ کی شرط پہلے بھی تھی اور اب بھی ہے جو صرف سیلز ٹیکس کے لیے ہے۔

چیئرمین ایف بی آر کا کہنا تھا کہ لوگوں نے چیزوں کو بہت بڑھا چڑھا دیا ہے، ہوسکتا ہے اس کی وجہ ہماری خامی ہو کہ ہم نے بہتر طریقے سے آگاہی نہیں دی۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے پاس ٹیکس جمع کرنے کا سب سے آسان طریقہ سیلز ٹیکس کو 17 سے بڑھا کر 18 یا 19 فیصد کرنا تھا مگر ہم نے ایسا نہیں کیا، اس حکومت نے اس بجٹ میں کوئی ٹیکس نہیں لگایا اگر لگایا ہے تو بتائیں وہ ٹیکس واپس لینے کو تیار ہیں۔

مہنگائی کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ اس کی ایک وجہ روپے کی قدر میں کمی اور ڈالر میں اضافہ ہے، مہنگائی کے حل کے لیے صنعتی ترقی اور روزگار کو بڑھانا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ مہنگائی کی بڑی وجہ مڈل مین کا کردار ہے، کیونکہ مڈل مین امیر سے امیر تر ہورہا ہے، جسے کم سے کم کرنا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  62154
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
لاہور اور پشاور سمیت مختلف شہروں میں تاجروں نے کاروبار جزوی طور پر بند کررکھے ہیں اور مطالبات پورے ہونے تک ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔ سینیئر نائب صدر انجمن تاجران سندھ نے آج صوبے بھر میں شٹرڈاؤن ہڑتال کا اعلان کرتے
لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید کو ڈائریکٹر جنرل آئی ایس آئی تعینات کردیا گیا ہے جب کہ دیگر 5 لیفٹیننٹ جنرل کے بھی تبادلے کیے گئے ہیں۔ پاک فوج کے تعلقات عامہ کے ادارے آئی ایس پی آر کے مطابق پاک فوج میں اعلیٰ سطح پر معمول کے تبادلے کیے گئے ہیں
مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے کہا ہے کہ ٹیکس دینے سے کوئی ناراض ہوگا تو اسے ناراض کریں گے۔ مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے پوسٹ بجٹ کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں ہر آدمی کو ٹیکس دینا ہوگا، ہمارے ملک میں امیر لوگ ٹیکس نہیں
وفاقی کابینہ نے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کی منظوری دے دی۔ وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس کے دوران ٹیکس ایمنسٹی اسکیم پر بریفنگ دی گئی اور کابینہ نے اتفاق رائے سے اس کی منظوری دے دی۔

مقبول ترین
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیراعظم پاکستان عمران خان سے ملاقات میں مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے ثالثی کی پیشکش کردی۔ وزیراعظم عمران خان وائٹ ہاؤس پہنچے تو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ان کا استقبال کیا، دونوں رہنماؤں نے مصافحہ کیا
سابق صدر آصف زرداری نے وزیراعظم کے جیل میں سہولتیں واپس لینے کے اعلان پر کہا ہے کہ عمران خان کو بتاؤ ہم بیرکوں میں رہنے کے عادی ہیں۔ جعلی اکاؤنٹس کیس کی سماعت کے سلسلے میں احتساب عدالت اسلام آباد میں پیشی کے موقع
وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ آج تک کبھی کسی کے سامنے جھکا ہوں اور نا اپنی قوم کو کبھی جھکنے دوں گا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان واپس جاکر جیلوں سے اے سی اور ٹی وی نکلوادوں گا، مریم بی بی شور تو مچائیں گی مگر یہ لوگ جس طرح
ایران کی جانب سے برطانوی آئل ٹینکر قبضے میں لینے کے بعد دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی بڑھتی جارہی ہے۔ برطانوی وزیر خارجہ جیرمی ہنٹ نے ایران کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ایران نے آئل ٹینکر کو نہ چھوڑا تو اس کے سنگین نتائج بھگتنا ہوں گے

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں