Sunday, 26 May, 2019
برطانیہ سے کرپشن کے مقدمات کھلوانے کا معاہدہ ہوچکا، شہزاد اکبر

برطانیہ سے کرپشن کے مقدمات کھلوانے کا معاہدہ ہوچکا، شہزاد اکبر

اسلام آباد ۔ وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر کا کہنا ہےکہ برطانیہ سے کرپشن کے مقدمات کھلوانے کا معاہدہ ہوچکا اور مقدمات کھلوانے اگلے ہفتے برطانیہ جارہے ہیں۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران شہزاد اکبر نے کہا کہ منی لانڈرنگ اور میگا پراجیکٹس میں بدعنوانی کا سامنا ہے، کرپشن کے خاتمے پر تیزی سے کام ہو رہا ہے، کرپشن کے معاملات اب ایف آئی اے تک محدود نہیں یہ جےآئی ٹی دیکھ رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بدعنوانی کے مقدمات کھلوانے اگلے ہفتے برطانیہ جارہے ہیں، برطانیہ کے ساتھ معاہدہ ہوچکا، نیشنل کرائم ایجنسی سے 33 کمپنیوں کی تفصیل مانگی ہے جب کہ اسحاق ڈار کی واپسی کیلئے برطانیہ سے درخواست کی ہے، برطانیہ سے ہمارا ملزمان کی واپسی یا منتقلی کا معاہدہ نہیں ہے جب کہ سوئس اکاؤنٹس میں 200 ارب ڈالر کا اسحاق ڈار ہی بتاسکتے ہیں، سوئس بینکوں میں موجود پاکستانی رقم واپس لانے کے معاہدے میں 5 سال ضائع کیے گئے۔

شہزاد اکبر کا کہنا تھاکہ غیر قانونی رقم واپس لانےکیلئے ہم چین اور یو اے ای سے بھی معاہدہ کررہے ہیں، بیرون ملک غیرقانونی طریقے سے رقم منتقل کرنے والے سیکڑوں ہیں، نام نہیں بتاسکتا۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی نے مزید کہا کہ پاکستان پر 30 ہزار ارب روپے کا قرضہ ہے، ورثے میں معاشی مشکلات کے سوا کچھ نہیں ملا، ماضی کی حکومتوں کی ناقص حکمت عملی سے معاشی مشکلات بڑھیں، قرضوں کا بوجھ ڈال کر ملکی معیشت کو تباہ کیا گیا، اداروں میں سیاسی مداخلت کی وجہ سے ادارے تباہ ہوئے۔

شہزاد اکبر کا کہنا تھاکہ پبلک سیکٹر کا خسارہ 10 کھرب سے تجاوز کرگیا ہے، ہم گرے لسٹ سے بلیک لسٹ کی طرف جارہے تھے لیکن سابق حکمرانوں کے کان پر جوں تک نہیں رینگی۔

انہوں نے کہا کہ کالے دھن کو دیکھنے کی اشد ضرورت ہے، جس ملک سے بھی غیر قانونی رقم منتقلی کا سراغ ملا وہاں جائیں گے، لوگوں نے ملازمین کے نام پر کمپنیاں بنائی ہوئی ہیں، فالودے والے، رکشے والوں کے نام پر کمپنیاں ہیں اور ان سے اربوں روپے نکل رہے ہیں، غریب لوگوں کے جعلی اکاؤنٹس میں پیسہ منتقل کیا جارہا ہے، غریبوں کو معلوم ہی نہیں کہ ان کے اکاؤنٹس میں پیسہ کون منتقل کررہا ہے۔

شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم کےایل این جی معاملے پر بھی کام ہورہا ہے اور ہوسکتا ہے ایل این جی کے معاملے پر نیب ریفرنس بنائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  50613
کوڈ
 
   
مزید خبریں
سپریم کورٹ میں آج دوران سماعت چیف جسٹس پاکستان کا سینئر وکیل اعتزاز احسن سے خوش گوار مکالمہ ہوا جس کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ میری طرف سے کسی کی دل آزاری ہوئی ہے تو معاف کردیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ تسلیم کرتا ہوں کہ
میڈیا کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی نے اظہر صدیق ایڈوووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی۔ جس میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے قوانین کی پاسداری نہ کرنے کی نشاندہی دہی کی گئی۔
صوبہ بلوچستان کے ضلع تربت میں کالعدم تنظیموں سے تعلق رکھنے والے 15 اہم کمانڈروں سمیت تقریباً 200 فراری ہتھیار ڈال کر قومی دھارے میں شامل ہوگئے ہیں۔ تقریب کے مہمان خصوصی وزیراعلیٰ بلوچستان میرعبدالقدوس بزنجو تھے۔ اب تک ایک ہزار 8 سو کے قریب فراری ہتھیار ڈال کر قومی دھارے میں شامل ہوچکے ہیں۔
سابق وزیراعظم اور حکمران جماعت کے سربراہ میاں محمد نواز شریف کی کل سعودی عرب روانگی کا امکان ہے۔ جہاں وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف پہلے سے موجود ہیں۔ جبکہ وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق بھی پی آئی اے کی پرواز کے ذریعے اہلخانہ کے ہمراہ سعودی عرب روانہ ہوگئے ہیں

مقبول ترین
قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال کی آڈیو ویڈیو اسکینڈل کے مرکزی کرداروں کے خلاف احتساب عدالت میں ریفرنس دائر کردیا گیا۔ نیب کی طرف سے دائر کیا جانے والا ریفرنس 630 صفحات پر مشتمل ہے جس میں آڈیو
لاڑکانہ میں چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹوزرداری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے رتو ڈیرو میں بچوں سمیت سیکڑوں افراد کے ایڈز مبتلا ہونے کے مسئلے پر گفتگو کی۔ انہوں نے کہا کہ ایچ آئی وی اور ایڈز میں بہت فرق ہے، ایچ آئی وی کا علاج نہ ہو تو دس
اسلام آباد میں وفاقی وزراء اور چیئرمین ایف بی آر کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے عبدالحفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ موجود حکومت نے اقتدار سنبھالا تو معاشی حالت بہت بری تھی، جب حکومت آئی تو قرضہ 31 ہزار ارب روپے سے زیادہ تھا، برآمدات گر رہی تھیں
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی اور خطے میں استحکام کے لیے پاکستان کے مثبت کردار کو سراہا۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں