Saturday, 25 November, 2017
قندیل بلوچ قتل کیس، مفتی عبدالقوی کی ضمانت منظور

قندیل بلوچ قتل کیس، مفتی عبدالقوی کی ضمانت منظور

ملتان ۔ ملتان کی مقامی عدالت نے ماڈل قندیل بلوچ قتل کیس میں مرکزی ملزم قرار دیئے جانے والے مفتی عبدالقوی کی درخواست ضمانت منظور کرلی ہے اور انہیں 2 لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔ مفتی عبدالقوی کو مجموعی طور پر 12 روزہ جوڈیشل ریمانڈ ختم ہونے پر جیل سے پولیس کی سخت سیکیورٹی میں علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق ملتان کی مقامی علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت میں  ماڈل قندیل بلوچ قتل کیس کی سماعت ہوئی ۔ سماعت کے موقع پر مفتی عبدالقوی کے وکلا عدالت میں پیش ہوئے اور عدالت سے استدعا کی کہ بیرون ملک سے آنے والی کال کے بعد ان کے موکل کو مذکورہ کیس میں نامزد کیا گیا ہے جبکہ قندیل بلوچ قتل کی ذمہ داری ان کے بھائی نے قبول کی تھی۔ جس پر عدالت نے مفتی عبدالقوی کی ضمانت منظور کرلی اور انہیں 2 لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کی۔

قندیل بلوچ قتل کیس میں گرفتار ملزم مفتی عبدالقوی کو مجموعی طور پر 12 روزہ جوڈیشل ریمانڈ ختم ہونے پر جیل سے پولیس کی سخت سیکیورٹی میں علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ مفتی عبدالقوی کو عدالت میں پیش نہیں کیا گیا تھا اور مچلکوں کی ادائیگی اور قانونی کارروائی کے بعد انہیں آج ممکنہ طور پر ملتان کی سینٹرل جیل سے رہا کردیا جائے گا۔

گذشتہ روز قندیل بلوچ قتل کیس میں چالان جمع نہ ہونے پر عدالت کی جانب سے پولیس کو 4 روز کے اندر مکمل چالان عدالت میں پیش کرنے کا آخری موقع دیتے ہوئے مذکورہ کیس کی سماعت 20 نومبر تک کے لیے ملتوی کردی گئی تھی۔

کیس کے تفتیشی افسر نے چالان پروسیکوشن برانچ میں جمع کروانے کے حوالے سے جواب عدالت میں جمع کرایا اور ساتھ ہی ملزم کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کی استدعا کی تھی۔

علاقہ مجسٹریٹ محمد پرویز خان نے عدالت میں چالان جمع نہ ہونے پر پولیس کو 4 روز کے اندر مکمل چالان عدالت میں پیش کرنے کا آخری موقع دیتے ہوئے سماعت 20 نومبر تک کے لیے ملتوی کردی گئی تھی۔

دوسری جانب مفتی عبدالقوی کی درخواست ضمانت پر سماعت ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی عدالت میں ہوئی، جہاں قندیل بلوچ کے والد بھی عدالت میں پیش ہوئے جبکہ فاضل جج کی رخصتی کے باعث سماعت 14 نومبر تک کے لیے ملتوی کردی تھی۔

قندیل بلوچ قتل کیس کی پیروی کے دوران 3 تفتیشی افسران کو ناقص تفتیش کرنے پر معطل کیا جاچکا ہے جبکہ واقعے کو ایک سال سے زائد عرصہ گزرنے کے بعد بھی مقدمے کا حتمی چالان پیش نہیں کیا جا سکا۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  15145
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
بھارتی فوج نے ایک بار پر ایل او سی کی خلاف ورزی کرتے ہوئے راولاکوٹ کے بٹل دھرمسال سیکٹر پر بلااشتعال فائرنگ کی ہے، فائرنگ کے نتیجے میں تینتالیس سالہ خاتون شدید زخمی ہوگئیں ہیں۔ زخمی خاتون کو سی ایم ایچ اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔
اسلام آباد انسداد دہشتگردی عدالت کے جج شاہ رخ ارجمند نے پی ٹی وی اور پارلیمنٹ حملہ کیس میں چئیرمین پی ٹی آئی عمران خان کو شامل تفتیش کرنے اور پولیس کو بیان ریکارڈ کرانے کا حکم دے دیا ہے۔
نواز شریف نے کہا کہ پاناما کیس کی نظرثانی اپیل کے عدالتی فیصلے میں سوال اٹھایا گیا کہ قافلے کیوں لٹتے رہے، ہمیں معلوم ہے اور اس قوم کو بھی معلوم ہے کہ آپ نے کبھی راہزنوں سے کوئی گلہ نہیں کیا، آپ نے تو 70 سال میں کسی راہزن سے سوال تک نہ کیا اور کسی راہزن کو کٹہرے میں بھی نہیں لائے۔
لاہور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے چیرمین پی ٹی آئی عمران خان کا کہنا تھا کہ داوڑ کنڈی گزشتہ ایک سال سے پارٹی اور وزیر اعلیٰ کے پی پرویز خٹک کے خلاف بیانات دے رہا ہے اور پارٹی میٹنگز میں بھی شریک نہیں ہوتا لہذا اسے پارٹی

مزید خبریں
وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف پورے عزم سے لڑ رہے ہیں ، دہشت گردوں کا نیٹ ورک توڑ دیا ہے ، آخری دہشت گرد کے خاتمے تک جنگ لڑیں گے۔ وزیر اعظم نواز شریف سے پشاور میں مسلم لیگ ن کے سینیٹرز اور ارکان قومی
سابق گورنر پنجاب چوہدری محمد سرورنے تحریک انصاف میں باضابطہ طور پر شامل ہونےکی تصدیق کردی ہے۔ ایک نجی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے چوہدری سرور کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف جمہوریت پسند جماعت ہے اس لئے اس میں شامل ہونے کا
ترجمان دفتر خارجہ تسنیم اسلم نےافغان حکام کی جانب سے لگائے جانے والے ان الزامات کو سختی کے ساتھ مسترد کردیا ہے، جن میں کہا گیا تھا کہ سول کپڑوں میں ملبوس پاکستانی فوجی دستے افغان صوبے کنڑ میں حملے کر رہے ہیں۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ افغان حکام کے بے بنیاد اور من گھڑت الزامات سے
سردارمہتاب احمد خان نے خیبرپختونخواکے نئے گورنرکی حیثیت سے اپنے عہدے کاحلف اٹھالیا ہے جنہوں نے قبائلی علاقوں میں قیام امن ، سماجی واقتصادی ترقی اوربحالی وتعمیرنو کواپنی ترجیحات قراردیا ہے۔

مقبول ترین
اسلام آباد انتظامیہ کی جانب سے دھرنے کے شرکاء کو دی گئی 12 بجے کی ڈیڈ لائن ختم ہوگئی ہے تاہم فیض آباد کے مقام پر مظاہرین کی جانب سے دھرنا جاری ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ انتظامیہ ڈیڈ لائن میں اضافہ کردیا ہے اور کہا ہے
دہشت گردی کے خلاف جنگ کے لیے سعودی عرب کی سربراہی میں قائم اسلامی ممالک کی افواج کے اتحاد کی سرکاری ویب سائٹ متعارف کرا دی گئی ہے۔ دہشت گردی مخالف اسلامی فوجی اتحاد‎ (آئی ایم سی ٹی سی) کی ویب
سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا کہنا ہے کہ کرپشن کے خلاف سعودی عرب میں ہونے والی حالیہ کارروائی کو تخت حاصل کرنے کی کوشش قرار دینا مضحکہ خیز ہے۔ انہوں نے ایران کے رہبرِ اعلیٰ آیت اللہ خامنہ ای کے بارے میں
اسلام آباد انتظامیہ نے دھرنے کے شرکا کو آج رات 12 بجے تک فیض آباد خالی کرنے کی وارننگ جاری کردی جب کہ حکم پر عملدرآمد نہ ہونے کی صورت میں آپریشن کا عندیہ دیا گیا ہے۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ آپریشن کی تمام ذمہ

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں