Sunday, 21 April, 2019
ریاستی ادارے کے ہاتھ پارلیمنٹ کے گریبان تک پہنچ گئے، نواز شریف

ریاستی ادارے کے ہاتھ پارلیمنٹ کے گریبان تک پہنچ گئے، نواز شریف

لاہور ۔ سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے صدر میاں محمد نوازشریف نے کہا ہےکہ اداروں کا احترام ان اداروں کی کارکردگی اور احترام سے ہوتاہے، آئین ریاست کا نظام چلانے والی سب سے مقدس دستاویز ہے، آئین کی دستاویز عوام کے منتخب نمائندوں کی پارلیمنٹ ہی بناتی ہے، پارلیمنٹ کو دنیا بھر میں اداروں کی ماں بھی سمجھاجاتاہے،  پارلیمنٹ کے قانون بھی عدالتی توثیق کے محتاج ہوجائیں تویہ کون سا آئین ہے۔  پارلیمنٹ کے بنائے ہوئے قوانین کو من مانی تصور کیا جانے لگے تو یہ ایک خطرناک بات ہے جس سے اداروں کے درمیان تصادم کا احتمال رہتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق  اپنی رہائش گاہ جاتی امراء میں مسلم لیگی وفود سے گفتگو کرتے ہوئے نوازشریف نے کہاکہ پارلیمنٹ کابنایا گیا قانون من مانی تعبیر سےختم کرنا خطرناک ہوگا، اور یہ ایک خطرناک بات ہے جس سے اداروں کے درمیان تصادم کا احتمال رہتا ہے۔ پارلیمنٹ کےکسی قانون کی تشریح کی ضرورت ہے تو ابہام دور کرنے پارلیمنٹ بھیجنا چاہیے، پارلیمنٹ کے قانون بھی عدالتی توثیق کے محتاج ہوجائیں تویہ کون سا آئین ہے۔ انتظامیہ تقرروتبادلہ نہ کر سکے، پارلیمنٹ کے بنائے گئے قانون کی توثیق عدلیہ سے کروائی جائے گی تو نظام کیسے چلے گا۔ کم ازکم پاکستان کا آئین تو یہ نہیں کہتا۔

سربراہ پاکستان مسلم لیگ (ن) نواز شریف نے کہا کہ پارلیمنٹ کو دنیا بھر میں تمام اداروں کی ماں بھی سمجھا جاتا ہے، اور اس بات پر خوشی ہوئی کہ جج صاحبان نے آئین کو مقدس اور بالاتر دستاویز کہا تا ہم عدلیہ اگر آئین کو بالا تر دستاویز سمجھتی تو جمہوریت 70 سال سے یوں رسوا نہیں ہو رہی ہوتی۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ آئین ریاست کا نظام چلانے والی سب سے مقدس دستاویز ہے، آئین کی دستاویز عوام کے منتخب نمائندوں کی پارلیمنٹ ہی بناتی ہے، پارلیمنٹ آئین کے ذریعے دیگر اداروں اور اپنی حدود کا بھی تعین کرتی ہے۔ میاں نوازشریف نے کہا کہ اداروں کا احترام ان اداروں کی کارکردگی اور احترام سے ہوتاہے، پارلیمنٹ کو دنیا بھر میں اداروں کی ماں بھی سمجھاجاتاہے،  

سابق وزیراعظم نے کہا کہ 1973 سے آج تک آئین کو کوئی زخم پارلیمنٹ نے نہیں لگایا البتہ 32 برس آمروں نے آئین کو ردی کی ٹوکری میں ضرور ڈالے رکھا  آمروں کے ہاتھ پر بیعت کرنے والے سب کچھ دیکھتے رہے، حقیقت یہ ہے کہ آئین کو سارے زخم عدلیہ کے کچھ ججوں کی مدد سے آمروں نے لگائے تھے جس پر کسی نے آواز نہیں اُٹھائی۔

انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کے بنائے ہوئے قانون کی توثیق اگر عدلیہ سے لینی ضروری ہوگئی تو آئین کیسے تیار ہوگا؟ اگر عدلیہ کو کسی قانون میں ابہام ہے تو نظر ثانی کے لیے اسے واپس پارلیمنٹ میں بھیجا جائے، ترامیم کا اختیار رکھنے والے ادارے کی اتھارٹی کو چیلنج کرنا ریاستی نظام کو چیلنج کرنے کے مترادف ہے۔

سابق وزیرِ اعظم نے کہا کہ  پارلیمنٹ کوعدلیہ اورانتظامیہ کے ساتھ ایک ریاستی ستون کہاجاتاہے، پارلیمنٹ کی اتھارٹی چیلنج کرنا ریاستی نظام کو چیلنج کرنے کے مترادف ہے۔ پارلیمنٹ کو آئین میں ترامیم کا اختیار بھی ہے۔ کراچی میں کہا تھا کہ ایک ریاستی ادارے نےعملاً انتظامیہ کو مفلوج کر دیا، اسی ریاستی ادارے کے ہاتھ پارلیمنٹ کے گریبان تک پہنچ گئے ہیں، پارلیمانی قانون کو من مانی تعبیر سے ختم کرنا خطرناک ہو گا۔

نوازشریف نے مزید کہا کہ اداروں کا احترام کارکردگی کے مطابق ہوتا ہے، اگر ادارے آئین اور قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے اپنے فرائض انجام دیں تو ان کی عزت و وقار میں اضافہ ہوگا بصورت دیگر تنقید کا سامنا ہوسکتا ہے۔

نواز شریف نے کہا کہ قوم کو احساس ہے کہ ایک خاندان کو نشانہ بنانے کیلئے کیسے حربے استعمال ہو رہے ہیں اور آئین کو کیوں کر تماشا بنانے کی کوشش ہو رہی ہے۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  58776
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
وزیراعظم عمران خان ںے کوئٹہ میں بلوچستان ہیلتھ کمپلیکس کا سنگ بنیاد رکھ دیا۔ وزیراعظم کوئٹہ پہنچے تو وزیراعلیٰ جام کمال نے ان کا استقبال کیا، جس کے بعد وزیراعظم ہیلتھ کمپلیکس کے سنگ بنیاد کی تقریب میں شرکت کی۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف کی زیرصدارت جی ایچ کیو میں 216ویں کور کمانڈرز کانفرنس ہوئی جس میں دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لیے علاقائی اہمیت کا جائزہ لیا گیا اور داخلی سیکیورٹی کے لیے جاری آپریشن
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی سربراہی میں کور کمانڈر کانفرنس ہوئی جس میں ملک کی جیوسٹرٹیجک صورتحال اور سیکیورٹی کے امور پر غور کیا گیا۔
وزیراعظم عمران خان نے ایک بار پھر اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ کفایت شعاری، بدعنوانی کا خاتمہ اور میرٹ کی بالادستی ترجیحات میں شامل ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے سوشل میڈیا پر اپنے بیان میں کہا ہے کہ ہم گورنس کو تبدیل کرنے کے لیے پُرعزم ہیں۔

مزید خبریں
سپریم کورٹ میں آج دوران سماعت چیف جسٹس پاکستان کا سینئر وکیل اعتزاز احسن سے خوش گوار مکالمہ ہوا جس کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ میری طرف سے کسی کی دل آزاری ہوئی ہے تو معاف کردیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ تسلیم کرتا ہوں کہ
میڈیا کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی نے اظہر صدیق ایڈوووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی۔ جس میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے قوانین کی پاسداری نہ کرنے کی نشاندہی دہی کی گئی۔
صوبہ بلوچستان کے ضلع تربت میں کالعدم تنظیموں سے تعلق رکھنے والے 15 اہم کمانڈروں سمیت تقریباً 200 فراری ہتھیار ڈال کر قومی دھارے میں شامل ہوگئے ہیں۔ تقریب کے مہمان خصوصی وزیراعلیٰ بلوچستان میرعبدالقدوس بزنجو تھے۔ اب تک ایک ہزار 8 سو کے قریب فراری ہتھیار ڈال کر قومی دھارے میں شامل ہوچکے ہیں۔
سابق وزیراعظم اور حکمران جماعت کے سربراہ میاں محمد نواز شریف کی کل سعودی عرب روانگی کا امکان ہے۔ جہاں وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف پہلے سے موجود ہیں۔ جبکہ وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق بھی پی آئی اے کی پرواز کے ذریعے اہلخانہ کے ہمراہ سعودی عرب روانہ ہوگئے ہیں

مقبول ترین
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ 18 اپریل کو سرحد پار سے 15 دہشت گرد داخل ہوئے، دہشت گردوں نے فرنٹیئر کور کی وردی پہن رکھی تھی ، جنہوں نے بس کو روکا اورشناخت کرکے 14 پاکستانی شہید کیے
وزیراعظم نے اپنی حکومتی ٹیم میں مزید تبدیلیوں کا اشارہ دیتے ہوئے کہا ہےکہ کپتان کا مقصد ٹیم کو جتانا ہوتا ہے اور بطور وزیراعظم ان کا مقصد اپنی قوم کو جتانا ہے اس لیے جو وزیر ملک کے لیے فائدہ مند نہیں ہوگا اسے تبدیل کردیا جائے گا۔
وزیر اعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ میں بڑے پیمانے پر ردوبدل کرتے ہوئے فواد چوہدری سمیت دیگر وزراء سے ان کے قلمدان واپس لے لیے۔ وزیراعظم ہاؤس کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق فواد چوہدری سے وزارت اطلاعات واپس لے کر
وزیر خزانہ اسد عمر نے وزارت چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے وزرا کے قلمدانوں میں ردو بدل کرنے کا فیصلہ کیا ہے، وہ مجھ سے وزارت خزانہ واپس لے کر وزارت توانائی کا قلمدان دینا چاہتے تھے

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں