Wednesday, 29 January, 2020
اکادمی ادبیات نئے لکھاریوں کے لیے ورکشاپس کرے گی

اکادمی ادبیات نئے لکھاریوں کے لیے ورکشاپس کرے گی
ناصر مغل

 

 اسلام آباد۔نوجوان لکھاریوں اور شائقین ِ ادب کے لیے اکادمی ادبیات پاکستان '' تربیتی ورکشاپس'' کاانعقادکر رہی ہے۔آغاز 10اگست کوہوگا۔

یہ بات اکادمی ادبیات پاکستان کے چیئرمین ڈاکٹر محمد قاسم بگھیو نے ایک بریفنگ میں کہی۔انہوں نے کہا کہ ان تربیتی ورکشاپس کا مقصدنئے لکھاریوں، طلباء و طالبات کو فکشن ، شاعری، ٹیلی وژن ڈراموں اور بچوں کے ادب کے حوالے سے تربیت مہیا کرنا ہے تا کہ نئے لکھنے والوں کی ہمت افزائی ہو اور نیا ادب تخلیق کر سکیں۔  

چیئر مین کا کہناتھا کہ اکادمی ادبیات پاکستان اپنے مقاصدکے حصول کے لیے مختلف پروگرامز،کانفرنسز اور اشاعتی منصوبوںپر کام کر رہی ہے۔ نوجوان نسل کو ادب کی مختلف اصناف کے حوالے سے تربیتی سہولیات فراہم کرنے کے لیے مختلف ورکشاپس منعقد کی جارہی ہیں۔ 

ڈاکٹر محمد قاسم بگھیو نے ورکشاپس کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے کی پہلی تربیتی ورکشاپ ''فکشن''(نثری تخلیقی ادب) کے حوالے سے 10تا12اگست 2016بروز بدھ تا جمعتہ المبارک ، صبح 10بجے تاشام 5بجے تک ، اکادمی ادبیات پاکستان کے کانفرنس ہال میںہوگی۔دوسری ورکشاپ ''شاعری کی اصناف'' کے حوالے سے17تا19اگست2016 ،تیسری  24تا26اگست2016'' ٹیلی وژن ڈرامہ'' اورچوتھی ورکشاپ ''بچوں کا ادب'' کے حوالے سے31اگست تا2ستمبر 2016 کوہوگی۔

ان ورکشاپس کے  اختتام پر شرکاکو سرٹیفکیٹ دیے جائیں گے۔ان ورکشاپس کا افتتاح 10اگست 2016بروز بدھ ، صبح 10بجے کیا جائے گا۔ورکشاپس میں شرکت کرنے کے لیے اکادمی سے رابطہ کرنے کی آخری تاریخ 31جولائی2016ہے۔ 

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  35985
کوڈ
 
   
مقبول ترین
عرب میڈیا کے مطابق سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے امریکی صدر کی جانب سے مشرق وسطیٰ میں اسرائیل اور فلسطین کے درمیان تنازع کے خاتمے کے لیے امن منصوبہ ’ ڈیل آف سینچری‘ پیش کرنے اور فریقین کے درمیان امریکی سرپرستی میں
فلسطین کے صدر محمود عباس نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مشرق وسطیٰ کے امن منصوبے کو ’’صدی کا تھپڑ‘‘ قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا برطانوی خبررساں ادارے رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق امریکی صدر کے اعلان کے بعد سے غزہ
دفتر خارجہ نے ہندوستانی وزیراعظم نریندر مودی کے حالیہ متشدد بیانات کو سختی سے مسترد کرتے ہوئے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس کا نوٹس لے۔ دفتر خارجہ کی جانب سے جاری اہم بیان میں کہا گیا ہے کہ بھارتی انتہا پسند بیانیہ
مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ صدر ٹرمپ جسے امن منصوبے کا نام دے رہے ہیں وہ دراصل” امن کے خلاف جنگ“ (War Against Peace )ہے ۔اسے عالمی قوانین کی

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں