Monday, 16 December, 2019
عبدالغفور حیدری پر حملہ بزدلانہ کارروائی ہے، ثاقب اکبر

عبدالغفور حیدری پر حملہ بزدلانہ کارروائی ہے، ثاقب اکبر

اسلام آباد ۔ ملی یکجہتی کونسل کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل ثاقب اکبر نے مولانا عبدالغفور حیدری کے قافلے پر حملے کو بزدلانہ کارروائی قرار دیا ہے۔ 

انہوں نے اپنے ایک بیان میں اس حملے میں شہید ہونے والے افراد کے لواحقین کے سے اظہار ہمدردی کیا ہے اور شہداء کے لئے بخشش کی دعا کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس حملے سے ثابت ہو گیا ہے کہ ابھی دہشتگردوں کے نیٹ ورک باقی ہیں۔ یہ وہی دہشتگرد ہیں جو نہ فقط ہمارے ملک کی محترم شخصیات کو نشانہ بناتے ہیں بلکہ ہمارے ہمسایہ برادر ممالک سے تعلقات کو خراب کرنے میں بھی اپنا کردار ادا کرتے ہیں۔ 

انہوں کا مذید کہنا تھا کہ ان دہشتگردوں کا خاتمہ پاکستان کے داخلی سلامتی اور ہمسایہ برادر ممالک سے تعلقات کی بہتری کے لئے بھی ضروری ہے۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  31294
کوڈ
 
   
مقبول ترین
16 دسمبر 1971ء پاکستان کی تاریخ کا سب سے المناک، عبرتناک اور ہولناک دن تھا۔ جب پاکستانی فوج کے ایک بزدل اور بے غیرت جرنیل نے ڈھاکا کے ریس کورس گرائونڈ میں اپنے بھارتی ہم منصب کے آگے سرنڈر کرتے ہوئے
بھارت میں مسلم مخالف متنازع قانون کے خلاف احتجاج وسیع اور پرتشدد ہوگیا ہے جس کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد 6ہوگئی ہے جس میں ایک طالب علم بھی شامل ہے جو پولیس کی فائرنگ کانشانہ بنا۔احتجاج کے چوتھے روز دارالحکومت
16 دسمبر سال 2014ء کا روز، تاریخ میں سیاہ ترین دن کے نام سے یاد کیا جاتا ہے۔ جب سفاک دہشت گردوں نے پشاور کے آرمی پبلک اسکول میں وحشت اور بربریت کی انتہا کر دی اور 149 گھروں میں صف ماتم بچھا دی گئی۔
معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ اگر لاڑکانہ میں بھٹو زندہ ہے تو غریب مر چکے ہیں۔ بلاول نے کرپشن سے اپنا رشتہ ابھی تک نہیں توڑا۔ پیپلز پارٹی نے بھٹو کے نظریے کو ختم کر دیا ہے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں