Friday, 14 August, 2020
چین ڈھائی ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی ٹرین بنائے گا

چین ڈھائی ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی ٹرین بنائے گا

بیجنگ ۔ چین نے ایک ایسی ٹرین کی تیاری کا اعلان کیا ہے جو ڈھائی ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کرسکے گی۔ ۔ یہ ٹرین اتنی تیز رفتار ہوگی کہ کراچی سے لاہور جتنا فاصلہ786 میل سے زائد صرف 31 منٹ میں طے کرسکے گی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق چین کی چائنا ایرو سپیس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کارپوریشن(سی اے ایس سی) نے اعلان کیا ہے کہ وہ ایسی ٹرینوں کی تیاری کی منصوبہ بندی کررہی ہے جو کہ ڈھائی ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کرسکیں گی۔ یہ ٹرین اتنی تیز رفتار ہوگی کہ کراچی سے لاہور جتنا فاصلہ786 میل سے زائد صرف 31 منٹ میں طے کرسکے گی۔

(سی اے ایس سی) حکام کا کہنا تھا کہ وہ ڈھائی ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی ٹرینوں کی تیاری کے لیے مقامی اور بین الاقوامی سطح پر 20 سے زائد تحقیقی اداروں کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔ ہوسکتا ہے یہ 'فلائنگ ٹرین' جلد حقیقت کا روپ دھار لے، مگر چینی سائنسدان اس سے پہلے 600 میل فی گھنٹہ سے زائد رفتار سے دوڑنے والی ٹرین کے منصوبے کا اعلان کرچکے ہیں۔

واضح رہے کہ چین میں اب تک تیز ترین ٹرینوں کے لیے 20 ہزار کلومیٹر سے زائد ٹریک بچھایا جاچکا ہے اور 2020 تک اس میں مزید 10 ہزار کلومیٹر کے اضافے کا ہدف طے کیا گیا ہے جبکہ ان ٹرینوں کے لیے 360 ارب ڈالرز کا خرچہ کیا گیاہے۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  20845
کوڈ
 
   
مقبول ترین
لاک ڈاؤن نے جہاں ہماری زندگی میں معیشت کا پہیہ جام کیا وہیں بہت سارے سبق بھی دے گیا۔ لاک ڈاؤن نہ ہوتا تو ہم شاید اپنی مصروف زندگی میں اتنے مصروف ہو جاتے کہ رشتوں، ناطوں کی اہمیت اور فیملی سسٹم کی خوبصورتی اور چاشنی سے مزید دور ہوتے چلے جاتے۔ وہ جو اک زندگی ہے نا کہ جس میں بیٹا دفتر جا رہا ہے، بیٹی یونیورسٹی جا رہی ہے، سب گھر والے ادھرادھر بکھرے پڑے ہیں۔
قومی اسمبلی سے انسداد دہشتگردی ترمیمی بل 2020 کو کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا، شرکت داری محدود ذمہ داری سمیت پانچ بلز منظور کرلئے گئے۔ تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی میں انسداد دہشتگردی ترمیمی بل 2020 کو کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا جس میں کمپنیز ترمیمی بل اور نشہ آور اشیا کی روک تھام کا بل بھی شامل ہے۔
وفاقی وزیر برائے مذہبی امور پیر نورالحق قادری نے کہا ہے کہ اسرائیل میں موساد کی ایک خاتون جعلی اکاؤنٹ سے فرقہ وارانہ مواد پھیلا رہی ہے۔ یہ خاتون فرقہ وارانہ موادسوشل میڈیا پربھیج دیتی ہے اورپھر آگے شیعہ اور سنی خود سے اسے پھیلاتے ہیں۔
سعودی عرب کے سابق انٹیلجنس افسر کی شکایت پر واشنگٹن کی ایک امریکی عدالت نے سعودی بن سلمان ولی عہد کو طلب کرلیا ہے۔ سابق سعودی انٹیلی جنس ایجنٹ کو مبینہ طور پر ناکام قاتلانہ حملے میں نشانہ بنایا گیا تھا۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں