Saturday, 19 September, 2020
انسانی جلد کے ذریعے سمارٹ فونز کنٹرول کرنیوالی ٹیکنالوجی

انسانی جلد کے ذریعے سمارٹ فونز کنٹرول کرنیوالی ٹیکنالوجی

لاہور: امریکی سائنسدان مارٹن ویگل نے ایسے سنسرز ایجاد کرنے میں کامیابی حاصل کر لی ہے جنہیں جلد پر لگا کر موبائل فون کنٹرول کیا جا سکتا ہے اور اس ایجاد کو آئی سکن کا نام دیا گیا ہے۔ آئی سکن کے موجدین کا کہنا ہے کہ یہ پتلا اور لچکدار ڈیزائن جسم پر موبائل کمپیوٹنگ کے نئے امکانات پیدا کر سکتا ہے۔ امریکی سائنسدان مارٹن ویگل کا کہنا ہے کہ انہیں غیر لچکدار اجزا سے بنایا جاتا ہے اور انہیں محدود مقامات مثلا کلائی، سر، کان یا بازو پر پہنا جا سکتا ہے۔ یہ دیکھنے میں بالکل ٹیٹو کے ڈیزائن کی طرح نظر آتے ہیں۔ یہ ٹیٹو نما ڈیزائن پہلے کمپیوٹر پر بنایا جاتا ہے پھر اس کی ساخت کو سلیکون اور موصل کاربن کو لیزر کے ذریعے کاٹا جاتا ہے۔ آئی سکن کو کسی سٹیکر کی طرح جسم پر لگایا جا سکتا ہے جسے بعد میں آسانی سے اتارا جاسکتا ہے۔ یہ پروٹو ٹائپ فی الوقت تاروں کے ذریعے کمپیوٹر سے جڑا ہوا ہے لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسے مائیکرو کنٹرولر موجود ہیں جو اسے وائرلیس میں تبدیل کر سکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  61584
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
ملٹی میڈیا میسجنگ ایپ سنیپ چیٹ کی جانب سے یہ اقدام عدم تشدد کی پالیسی پر عمل پیرا ہوتے ہوئے ٹویٹر انتظامیہ کی تقلید میں اٹھایا گیا ہے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ایسے بیانات کی تشہیر نہیں ہو سکے گی جس میں نسلی تشدد کو ہوا مل سکے۔
سماجی رابطے کی مقبول ترین ویب سائٹ ’فیس بک‘ نے ویڈیو کانفرنس ایپ ’زوم‘ کے مقابلے میں ’میسنجر رومز‘ فیچر متعارف کرا دیا ہے۔
سویڈن: کبھی آپ نے سوچا کہ بالخصوص بارش کے بعد مٹی سے خوشبو کیوں آتی ہے؟ جب اس کی وجہ پر غور کیا گیا تو ایک سائنسی راز کا انکشاف بھی ہوا۔ بوئے گِل یعنی بارش کےبعد یا اس سے پہلے مٹی سے اٹھنے والی خوشبو ایک طرح بیکٹیریا اسٹریپٹو مائسس سے پیدا ہوتی ہے لیکن آخر ایسا کیوں ہوتا ہے؟
اطلاعات ہیں کہ معروف ویڈیو پلیٹ فارم یوٹیوب نوجوانوں میں انتہائی مقبول چینی ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹک ٹاک کی طرز پر پر ایک نیا ویڈیو پلیٹ فارم لانچ کرنے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے۔

مقبول ترین
ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے کہا کہ امریکی رپورٹ میں پاکستان کے دہشت گردی کے خلاف اٹھائے گئے اقدامات کو متنازع بنایا گیا ہے۔ القاعدہ کی خطے میں ناکامی کو تو تسلیم کیا گیا لیکن اس کے خلاف پاکستان کی کاوشوں کو نظر انداز کیا گیا۔ پاکستان میں
رینٹل پاور کیس میں سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف سمیت 10 ملزمان نے بریت کی درخواست دائر کر رکھی تھی اور نیب ترمیمی آرڈیننس کے تحت تمام درخواستیں دائر کی گئی تھیں۔ جس پر احتساب عدالت اسلام آباد نےفیصلہ محفوظ کر رکھا تھا تاہم آج احتساب
وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہم سے جواب مانگا جارہا ہے جواب ان سے مانگا جائے جو ملک کو اس حال میں چھوڑ کرگئے۔ قومی اسمبلی کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد
سپریم کورٹ میں کورونا از خود نوٹس کیس کی سماعت کے دوان چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ وزیراعظم کہتےہیں ایک صوبے کا وزیراعلیٰ آمر ہے، اس کی وضاحت کیا ہوگی؟ چیف جسٹس نے کہا کہ وزیراعظم اور وفاقی

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں