Wednesday, 03 June, 2020
نباتات پانی اور ہوا کی آواز سن سکتے ہیں

نباتات پانی اور ہوا کی آواز سن سکتے ہیں

ایک سائنسی مطالعے کے مطابق  پانی کی ضرورت مند نباتات، مٹی کےاندر سے ابلنے والے پانی کی آواز سننے کی صلاحیت رکھتے ہے۔ اسی طرح حشرات الارض کا احساس اور ہوا کی لرزش کو بھی سنتے ہیں۔

فلسطینی سائٹ کے مطابق ماہرین نباتات کا کہنا ہے کہ خشک علاقوں میں پائی جانے والی نباتات کے قریب اگرپانی موجود ہوتو وہ اس کی آواز سنتے ہیں۔

ماہرین حیاتیات نے آسٹریلیا کے مغرب میں واقع یونیورسٹی میں مونیکا گاگالیانو کی قیادت میں یہ نئی تحقیق کی ہے۔ انہوں نے ایک برتن میں انگریزی کے Y کی شکل کا مٹر کا ایک پودا رکھا۔ اس کی ایک شاخ کو خشک مٹی میں اور دوسری کو پانی میں ڈالا۔

ماہرین نے دیکھا کہ جو شاخ پانی والے برتن میں رکھی گئی تھی وہ مسلسل نشو نما پا رہی ہے چاہے اس شاخ اور پانی کےدرمیان پلاسٹک کی کوئی رکاوٹ بھی حائل کیوں نہیں۔

ماہر حیاتیات گاگلیانو کا کہنا ہے کہ پودوں کی جڑیں بھی پانی کی موجودگی کو جانتی ہیں۔ وہ پانی کے زمین میں اترنے کی آواز کو محسوس کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ نباتات پانی کے تلاش کے لیے صوتی لہروں کا استعمال کرتے ہیں چاہے پانی دور ہی کیوں نہ ہو۔

ایک اور رپورٹ میں بیان کیا گیا ہے کہ ماہِر نباتات جیمز وانگ نے یہ پتا لگایا ہے کہ پودے بے جان چیزیں نہیں ہیں بلکہ وہ ایسی خصوصیات کے مالک ہیں جو صرف جانوروں اور انسانوں کا خاصہ سمجھی جاتی تھیں۔ سائنسدانوں کی ایک تحقیق کے مطابق پودے اپنے اردگرد کی چیزوں کو سونگھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

ایسی شہادتوں کے زور پر کچھ ماہر نباتات یہ بھی کہنے کی کوشش کرتے ہیں کہ پودے ذہین بھی ہوتے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

 

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  79655
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
دو امریکی خلا بازوں نے خلائی اسٹیشن آئی ایس ایس کے باہر خلا میں ’چہل قدمی کی ے۔ میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ چھ گھنٹے تک جاری رہنے والی اس چہل قدمی کے دوران ان دو میں سے ایک ’ڈاکنگ اڈیپٹر‘ کو خلائی اسٹیشن کے ساتھ جوڑا گیا۔
انڈونیشیا اور بحرالکاہل کے علاقوں میں لاکھوں افراد نے مکمل سورج گرہن کا تجربہ کیا اور اس خطے کے بعض علاقے مکمل تاریکی میں چلے گئے۔ یہ سورج گرہن مقامی وقت کے مطابق صبح چھ بج کر 19 منٹ (گرینج کے وقت کے مطابق 11 بجکر 19) منٹ پر شروع ہوا
سماجی رابطوں کی مقبول ویب سائٹ فیس بک کے مطابق سال 2015 کی چوتھی سہ ماہی میں اسے دوگنا سے زیادہ منافع ہوا ہے۔ فیس بک کا کہنا ہے کہ دسمبر تک کے تین ماہ میں اس کا خالص منافع 70 کروڑ دس لاکھ ڈالر سے بڑھ کر ایک ارب 56 کروڑ ڈالر ہو گیا ہے۔
امریکی ماہرین فلکیات نے دعویٰ کیا ہے کہ نظام شمسی میں نواں سیارہ بھی موجود ہے جو پلوٹو سے دور مدار میں گردش کر رہا ہے ۔ اگر امریکی ماہرین فلکیات کا وعویٰ درست نکلا تو یہ نیا سیارہ زمین کے حجم سے دس گنا ہو گا۔ٹیم کا کہنا ہے

مقبول ترین
آج یہ کہتے ہوئے دل کر رہا ہے کہ مسلسل ہنستی رہوں کہ سپر پاورامریکہ۔۔۔ جی ہاں! وہی امریکہ جس نے افغانستان کو کھنڈرات میں بدل دیا وہی امریکہ جس نے عراق پر ایک عرصہ جنگ مسلط کیے رکھی، کبھی بمباری کر کے تو کبھی داعش کی شکل میں کیڑے مکوڑوں کی فوج بنا کے، عراق پر اپنا تسلط برقرار رکھنا چاہا۔
علامہ محمداقبال رحمۃ اللہ تعالی علیہ نے فرمایا ہے کہ”ثبات ایک تغیرکو ہے زمانے میں“،گویا اس آسمان کی چھت کی نیچے کسی چیز کو قرارواستحکام نہیں۔تاریخ گواہ ہے کہ اس زمین کا جغرافیہ ایک ایک صدی میں کئی کئی مرتبہ کروٹیں بدلتارہا ہے۔سائنس کی بڑھتی ہوئی رفتار کے ساتھ جغرافیے کی تبدیلی کا عمل بھی تیزتر ہوتاجارہاہے،چنانچہ گزشتہ ایک صدی نے تین بڑی بڑی سپر طاقتوں کے ڈوبنے کا مشاہدہ کیا،
صوبائی وزیر مرتضیٰ بلوچ کورونا وائرس کے باعث کئی روز سے ہسپتال میں زیر علاج تھے۔ ان کا تعلق پاکستان پیپلز پارٹی سے تھا۔ میڈیا کے مطابق صوبائی وزیر کچی آبادی غلام مرتضیٰ بلوچ کورونا وائرس کے باعث انتقال کر گئے ہیں۔ مرحوم کچھ روز
نظریہ مہدویت ایسا موضوع ہے، جو صدیوں سے انسانوں کے درمیان زیر بحث رہا ہے۔ اس اعتقاد کے ساتھ انسان کا مستقبل روشن ہے، یہ عقیدہ کسی ایک قوم، کسی فرقے یا کسی مذہب کے ساتھ مخصوص نہیں ہے بلکہ مہدویت ایک ایسی عالمگیر حکومت کا نام ہے کہ جس کی بنیاد تمام انسانوں کے مابین عدل و انصاف اور اخلاق و محبت پر ہوگی۔ مہدویت ایسی آواز ہے، جو کہ ہر روشن خیال انسان کے اندر فطری طور پر موجود ہے۔ ایسی امید ہے، جو زندگی کو تروتازہ اور غم و اندیشہ سے دور کرکے نور الٰہی کی طرف لے جاتی ہے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں