Sunday, 24 March, 2019
ایرانی پروپیگنڈے کا شبہ: گوگل نے 39 یوٹیوب چینل بند کر دیے

ایرانی پروپیگنڈے کا شبہ: گوگل نے 39 یوٹیوب چینل بند کر دیے

 

واشنگٹن ۔ انٹرنیٹ سرچ انجن گوگل نے کہا ہے کہ اس نے یوٹیوب پر 39 ایسے چینلز کی نشاندہی ہونے کے بعد جن کا تعلق ایرانی حکومت کی سرپرستی میں چلنے والے نشریاتی اداروں سے تھا، انہیں بند کر دیا ہے۔ گوگل کا کہنا ہے کہ 39 یوٹیوب چینلز کے ساتھ ساتھ 6 بلاگر اکاؤنٹ اور 13 گوگل پلس اکاؤنٹ بھی بند کر دیے ہیں۔

گوگل نے اپنی ایک پوسٹ میں کہا ہے کہ ان موضوعات پر ہماری تحقیقات کا سلسلہ جاری ہے اور ہم اپنے نتائج امریکہ اور دوسری جگہوں پر قانون نافذ کرنے والے اداروں اور دیگر متعلقہ حکومتی عناصر سے شیئر کریں گے۔

منگل کے روا فیس بک، ٹوئیٹر اور گوگل نے مشترکہ طور پر سینکڑوں اکاؤنٹس کو بند کر دیا تھا جن کے متعلق یہ شبہ تھا کہ ان کا تعلق مبینہ طور پر ایران کی پراپیگنڈہ پر مبنی کارروائیوں سے ہے۔

گوگل نے انٹیلی جینس معلومات کے حصول کے لیے ایک سائبر سیکیورٹی کمپنی فائر آئی سے رابطہ کیا ہے ۔ گوگل کا کہنا ہے کہ فائر آئی نے حالیہ مہینوں میں حکومتی سرپرستی میں کام کرنے والے اداروں اور افراد کی کوششوں کا کھوج لگایا اور انہیں بلاک کر دیا۔

فائر آئی نے کہا ہے کہ اسے یہ شک گزرا کہ لوگوں کی سوچ پر اثر انداز ہونے والی یہ کارروائیاں بظاہر ایران کے اندر سے کی گئیں اور ان کا ہدف امریکہ، برطانیہ، لاطینی امریکہ اور مشرق وسطیٰ کے علاقے تھے۔ گوگل کی جانب سے فائر آئی کو اپنی مشاورتي کمپنی ظاہر کیے جانے کے بعد اس کے شیئرز میں 10 فی صد اضافہ ہو گیا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  26266
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
یوٹیوب نے پاکستانی صارفین کے لیے ایک مخصوص ورژن متعارف کروایا ہے ویب سائٹ کی طرف متعارف کروائے گئے ورژن کے بعد پاکستان میں موجود تقریباً ہر صارف کو ہی یوٹیوب کی ویب سائٹ کھولنے پر لوگو کے ساتھ چھوٹا سا ”PK“ بھی لکھا نظر آ رہا ہے- جبکہ اس سے
یوٹیوب جلد ہی ایک ایسی ایپ متعارف کروانے جا رہا ہے، جو خاص طور پر بچوں کے لیے بنائی گئی ہے۔ اس کے ذریعے والدین انٹرنیٹ کو کنٹرول کر سکیں گے تاکہ بچوں کی فحش مواد تک رسائی نہ ہو۔ فحش اور نامناسب مواد کو ہٹانے کے
سن 2012ء میں پاکستان میں یوٹیوب پر پابندی کے بعد مقامی سطح پر ویڈیو شیئرنگ کی کوئی مؤثر ویب سائٹ موجود نہیں تھی، تاہم ’اسلامی ویڈیوز‘ کے لیے اب مقامی سطح پر ایک ویب سائٹ شروع کی گئی ہے، جو مسلسل مقبول ہو رہی ہے۔

مزید خبریں
تحقیق کے مطابق دہی اور کم چکنائی کے حامل پنیر کے استعمال سے ذیابیطس لاحق

مقبول ترین
یوم پاکستان کی مرکزی تقریب میں صدر، وزیراعظم، آرمی چیف، ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد سمیت دیگر ممالک کی معزز شخصیات نے بھرپور شرکت کی۔ سپیکر قومی اسمبلی، چیئرمین سینیٹ، وفاقی وزراء، وزرائے اعلی، شوبز ستارے
نیوزی لینڈ کی تاریخ کی بدترین دہشت گردی کے ایک ہفتے بعد نہ صرف سرکاری طور پر اذان نشر کی گئی بلکہ مسجد النور کے سامنے ہیگلے پارک میں نمازِ جمعہ کے اجتماع میں وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن کے علاوہ ہزاروں غیر مسلم افراد نے بھی شرکت کی۔
ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کا سرمایہ کاری کانفرنس سے خطاب میں کہنا تھا کہ آزادی کے وقت ملائیشیا غریب ملک تھا۔ آزادی کے وقت طے کیا تھا کہ ملائیشیا ترقی کے مراحل طے کرے گا۔ ہم نے کوریا اور جاپانی لوگوں سے سبق لیا اور کام کیا۔
کراچی کی نیپا چورنگی پر ممتاز عالم دین مفتی تقی عثمانی قاتلانہ حملے میں محفوظ رہے جب کہ ان کے دو گارڈ جاں بحق ہو گئے۔ ابتدائی طور پر اطلاعات تھیں کہ مختلف مقامات پر فائرنگ کے دو واقعات پیش آئے ہیں لیکن ایس ایس پی گلشن اقبال طاہر

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں