Sunday, 31 May, 2020
حکومت مساجد کی تالابندی سے اجتناب کرے، ملی یکجہتی کونسل

حکومت مساجد کی تالابندی سے اجتناب کرے، ملی یکجہتی کونسل

اسلام آباد ۔ ملی یکجہتی کونسل کی تمام رکن جماعتوں کے قائدین، علما کرام اور دینی راہنمائوں نے ایک مشترکہ اعلامئے میں کہا کہ حکومت مساجد کی تالابندی سے اجتناب کرے۔ ملک کے مختلف علاقوں سے ملنے والی خبروں کے مطابق انتظامیہ مساجد کی تالا بندی اور ائمہ جمعہ و جماعت کی گرفتاری کا اقدام کررہی ہے۔  موجودہ حالات میں حکومتی احکام پر عمل کرتے ہوئے جو لوگ مساجد میں نہیں جائیں گے ان پر ترک جماعت کا کوئی وبال نہیں ہوگا۔ 

ملی یکجہتی کونسل کی تمام رکن جماعتوں کے قائدین صدر ملی یکجہتی کونسل و صدر جمعیت علمائے پاکستان نورانی ڈاکٹر صاحبزادہ ابو الخیر محمد زبیر، امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق، سینئر نائب صدر ملی یکجہتی کونسل پاکستان و سربراہ اسلامی تحریک پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی، سیکرٹری جنرل ملی یکجہتی کونسل و نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ، سربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ راجہ ناصر عباس جعفری، سربراہ جمعیت علمائے اسلام (سینئر) صاحبزادہ پیر عبدالرحیم نقشبندی، نائب صدروفاق المدارس شیعہ پاکستان قاضی سیدنیازحسین نقوی، امیر تنظیم اسلامی پاکستان  حافظ عاکف سعید، سربراہ رابط المدارس العربی مولانا عبدالمالک،مولانا حافظ اللہ وسایا سربراہ عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت، رہبر ہدی الہادی پاکستانپیرسید ہارون علی گیلانی، سربراہ جماعت اہل حدیث پاکستان حافظ عبد الغفار روپڑی، امیر متحدہ جمعیت اہل حدیث سید ضیا اللہ شاہ بخاری، سربراہ البصیرہ پاکستان سید ثاقب اکبر، مرکزی راہنما تحریک حرمت رسول قاری محمدیعقوب شیخ، ناظم اعلی اسلامی تحریک پاکستان جناب علامہ عارف حسین واحدی، ناظم اعلی تحریک منہاج القرآن خرم نواز گنڈا پور، ناظم اعلی جمعیت علمائے پاکستان نورانی سید محمد صفدر شاہ گیلانی، سربراہ جماعت اہل حرم مفتی گلزار احمد نعیمی، صدر تحریک جوانان پاکستان صدر تحریک جوانان پاکستان، سربراہ تحریک احیائے خلافت قاضی ظفرالحق، چیئرمین خطبات جمعہ کمیشن ملی یکجہتی کونسل جناب پروفیسر محمدابراہیم، سیکرٹری جنرل پاکستان شریعت کونسل مولانا ابو عمارزاہدالراشدی، سربراہ علماو مشائخ رابطہ کونسل خواجہ معین الدین محبوب کوریجہ، ناظم اعلی تنظیم العارفین صاحبزادہ سلطان احمد علی، سربراہ تحریک اویسیہ پاکستان پیر غلام رسول اویسی، چیئرمین مرکزی علما کونسل مولانا محمد زاہد محمود قاسمی، مرکزی راہنما جمعیت علمائے پاکستان نورانی قاری زوار بہادر، سربراہ اسلامی جمہوری اتحاد مولانا زبیر احمد ظہیر، چیئرمین امامیہ آرگنائزیشن سید سجاد نقوی نے ایک مشترکہ اعلامئے میں کہا ہے۔

کرونا وائرس اس وقت تمام دنیا میں پھیل چکا ہے اور ساری انسانیت اس کی وجہ سے پریشانیوں اور مشکلات کا شکار ہے، اموات، تیز رفتاری سے بڑھ رہی ہیں اوردنیا میں خوف کی ایک فضا قائم ہے۔ اس صورت حال نے اہل درد، اہل دین اور اہل علم کو بھی فکر وغم میں مبتلا کردیا ہے۔ ہم دعا کرتے ہیں کہ اللہ تعالی اپنے فضل و کرم کے پیش نظر اور اپنی رحمانیت و رحیمیت کے صدقے ساری انسانیت کو اس وبا وبلا سے نجات عطا کرے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ یہ رجوع الی اللہ کا وقت ہے۔ اللہ تعالی ہی نے ارشاد فرمایا ہے: امن یجِیب المضطر اِذا دعاہ و یکشِف السو(نمل:62) کون ہے (اللہ کے سوا) جب کوئی مضطر و بے قر ار اسے پکارتا ہے تو وہ اس کی فریاد سنتا ہے اور اس سے تکلیف کو دور کر دیتا ہے۔ 

مشترکہ بیان میں مذید کہا گیا ہے کہ ہم اپنے تمام ہم وطن خواتین و حضرات اور دیگر تمام بندگانِ خدا سے اس موقع پر احتیاطی تدابیر کو ملحوظ رکھنے کی بھی گذارش کرتے ہیں کیونکہ سنت رسول ۖاور عقل خداداد کا یہی تقاضا ہے ہمیں اپنی بھی حفاظت کرنا ہے اور اپنے دیگر ہم نوع افراد کی بھی۔ ایسے میں ہمیں اللہ تعالی کا یہ فرمان ملحوظ رکھنا ہے کہ جس نے ایک انسان کو احیا کیا اور اسے موت کی آغوش میں جانے سے بچا لیا، اس نے گویا ساری انسانیت کوزندہ کیا جیسا کہ فرمایا گیا ہے: و من احیاھا فکانمآ احیا الناس جمِیعا(مائدہ:32) اور جو ایک انسان کی زندگی کا باعث بنا اس نے گویا سب انسانوں کو زندگی دی۔ اس آیت اور قرآن و سنت کی دیگر تعلیمات کے پیش نظر اس وقت ضروری ہو گیا ہے کہ ہم میں سے ہر کوئی دوسرے انسان کی مدد کے جذبے سے سرشار ہو کر اٹھ کھڑا ہو۔ 

تحریری بیان کے مطابق اس وقت بہت سے ادارے اور جماعتیں خدمت عامہ میں مصروف ہیں۔ان کی خدمات قابل قدر اور ان شا اللہ عند اللہ ماجور ہیں۔ہر کوئی اپنے طور پر یا اجتماعی کوششوں کا حصہ بن کر خدمت عامہ کے امور میں شریک ہو جائے۔ ایسے میں اپنے خاندان، عزیز و اقارب، ہمسایوں اور محلہ داروں کا خاص خیال رکھیں۔ہم مخیر حضرات سے بھی اپیل کرتے ہیں کہ مشکل کی اس گھڑی میں پہلے سے بڑھ چڑھ کر لوگوں کی مدد کے لیے نکل کھڑے ہوں۔ یقینا اللہ تعالی کے ہاں اس کا بے حساب اجر و ثواب ہے۔ ان حالات میں اگرچہ بعض شعائر اسلام کی تعطیل اضطراری ہے تاہم شعائر اسلام کی عظمت کا دلوں میں احساس زندہ رکھنا ضروری ہے۔ اسی طرح مساجد سے اپنے قلبی تعلق کو باقی رکھا جائے اور جونہی حالت اضطرار ختم ہو پہلے سے بڑھ کر انھیں آباد کیا جائے کیونکہ مسجدوں کو آباد رکھنا ایمانیات کا تقاضا ہے۔ البتہ موجودہ حالات میں حکومتی احکام پر عمل کرتے ہوئے جو لوگ مساجد میں نہیں جائیں گے ان پر ترک جماعت کا کوئی وبال نہیں ہوگا۔ (ان شا اللہ

ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے قائدین نے حکومت پاکستان سے گذارش کی ہے کہ اپنے وعدے پر کابند رہے اور مساجد کی تالابندی سے اجتناب کرے۔ ملک کے مختلف علاقوں سے ملنے والی خبروں کے مطابق انتظامیہ مساجد کی تالا بندی اور ائمہ جمعہ و جماعت کی گرفتاری کا اقدام کررہی ہے۔ ائمہ جمعہ و جماعت کی یہ گرفتاریاں قابل مذمت ہیں اگرچہ ان میں سے اکثر کو رہا کردیا گیا ہے۔ ہم حکومت کو خبردار کرتے ہیں کہ مشکل کی اس گھڑی میں علما اور ائمہ مساجد سے تعاون حاصل کرنے کے بجائے انھیں اذیت میں مبتلا نہ کرے۔ آخر میں ہم اس امر پر تشویش کا اظہار کرتے ہیں کہ بعض عاقبت نااندیش افراد ان حالات میں بھی ساری امت اور سب انسانوں کی خیر خواہی اور خدا خوفی کے بجائے افتراق و انتشار پھیلانے کی مذموم اور شیطانی کوششوں میں مصروف ہیں۔ ہم امت اسلامیہ کے ہر فرد سے گذارش کرتے ہیں کہ اسلامی وحدت اور اتحاد کے راستے پر مضبوطی سے قائم رہے اور اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھا مے رکھے۔ اٹھیں اور افتراق و انتشار کی کوششوں کو ناکام بنا دیں جیسا کہ ارشاد الہی ہے:و اعتصِموا بِحبلِ اللہِ جمِیعا و لا تفرقوا(آل عمران:103) آخر میں اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ اس عالمگیر وبا سے اپنے بندوں کو نجات عطا فرمائے اور اس زمین کے باسیوںکے گناہوں اور نافرمانیوں سے صرف نظر فرمائے اور ہم سب پر اپنی رحمت اور فضل کا سایہ فرمائے۔ آمین

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  35783
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
امریکہ میں بے روزگاری کے تاریخ کے بدترین مقام پر پہنچ جانے کے بعد ان کی سیاسی ساکھ پہلے ہی خراب ہو چکی ہے۔ اس لیے آئندہ صدارتی انتخابات میں ان کی کامیابی کے امکانات ہر روز پہلے کی نسبت کم ہو رہے ہیں۔ کورونا کی حشر سامانیاں امریکہ میں اسی طرح جاری رہیں تو امریکی وفاق کے لیے مزید دھچکوں کا باعث بن سکتی ہیں۔
یومِ یکجہتی کشمیر بھارتی جارحیت ،ریاستی غنڈہ گردی اور اخلاق سے عاری جمہوریت کے دعویدار ''مودی دیش''کے منہ پر طمانچے برسانے کا دن ہے ،بلا شبہ کشمیریوں کی قربانیوں اور جدوجہد آزادی کی طویل داستان کئی دہائیوں سے جاری ہے
ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے زیر اہتمام ’’مودی کا دورہ اسرائیل اور مسئلہ کشمیر‘‘ کے موضوع پر ایک روزہ سیمینار نیشنل پریس کلب، اسلام آباد میں منعقد کیا گیا۔ جس میں ملی یکجہتی کونسل میں شامل جماعتوں کے مرکزی قائدین نے خطاب کیا۔
11فروری2017کو ایران کے اسلامی انقلاب کی 38ویں سالگرہ منائی جارہی ہے۔ یہ انقلاب11فروری 1979ء کوکامیاب ہوا۔ امام خمینی اس انقلاب کی قیادت کرتے ہوئے پیرس سے تہران پہنچے جہاں پر ان کا فقیدالمثال عوامی استقبال کیا گیا۔

مقبول ترین
پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما راجہ ظفر الحق کا کہنا ہے کہ ایٹمی دھماکوں کا کریڈٹ سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کو جاتا ہے۔ میڈیا کے مطابق وزیر ریلوے شیخ رشید نے دعویٰ کیا تھا کہ ملک میں ایٹمی دھماکے انہوں نے، گوہر ایوب اور
وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کا کہنا ہے کہ ساری قوم کو یہ بتانا چاہتا ہوں کہ ایٹمی دھماکا راجا ظفر الحق، گوہر ایوب اور میں نے کیا، نواز شریف سمیت ساری کابینہ ایٹمی دھماکے کے خلاف تھی۔ لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران شیخ رشید احمد نے
معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ پاکستان میں کورونا کے مقامی سطح پر پھیلاؤ کی شرح 92 فیصد ہے لہٰذا عوامی مقامات پر ماسک کے استعمال کو لازمی قرار دے رہے ہیں۔ وزیراعظم کے معاونین خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا اور
وزیر مملکت برائے امور کشمیر شہریار آفریدی بھی کورونا کا شکار ہوگئے ہیں۔ وزیر مملکت نے قوم کے لیے دعا دی اور کہا رب ذوالجلال سے دعا ہے کہ وطن عزیز کو موذی وباء سے محفوظ بنائے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں