Monday, 16 December, 2019
افغانستان میں امن و استحکام دیکھنا چاہتے ہیں، خواجہ آصف

افغانستان میں امن و استحکام دیکھنا چاہتے ہیں،  خواجہ آصف

اسلام آباد ۔ وزیر خارجہ خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ پاکستان کی افغانستان پر پوزیشن بالکل واضح ہے۔ ہم  ہمسائیہ ملک میں امن و استحکام دیکھنا چاہتے ہیں، مذاکراتی میکنزم پر مکمل عمل ہونا چاہئے۔

سیالکوٹ میں عید کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے وزیر خارجہ خواجہ آصف نے افغان صدر کے بیان پر اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ افغانستان پر ہماری پوزیشن واضح ہے، افغانستان میں امن و استحکام دیکھنا چاہتے ہیں۔مذاکراتی میکنزم پر مکمل عمل ہونا چاہئے۔

 وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ افغان امن کیلئے پاکستان پہلے ہی باہمی، سہ فریقی اور 4 فریقی مذاکراتی میکنزم کا حصہ ہے اور ہم یہ سمجھتے ہیں کہ مذاکراتی میکنزم پر مکمل عمل ہونا چاہئے اور افغانستان میں امن کیلئے پاکستان اپنا کردار ادا کر رہا ہے۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  94054
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
بلوچستان نیشنل پارٹی (بی این پی) مینگل کے سربراہ سردار اختر مینگل کا کہنا ہے کہ ہم چاہتے ہیں جنوبی پنجاب بھی برابرکا ترقی یافتہ ہو، سی پیک سے لاہور میٹروٹرین چلائی گئی لیکن بلوچستان میں کیکڑا بس بھی نہیں دی گئی۔
جج ویڈیو سکینڈل میں سپریم کورٹ نے نظرثانی درخواست نمٹا دی، نظر ثانی درخواست نواز شریف نے دائر کی تھی۔ چیف جسٹس کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے سماعت کی۔ چیف جسٹس نے کہا نظرثانی میں جو باتیں کیں وہ عدالت
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (ڈی جی آئی ایس پی آر) میجر جنرل آصف غفور نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ پاکستانی بارڈرز پر کہیں بھی کوئی مشترکہ پیٹرولنگ نہیں ہوتی۔
قبائلی ضلع شمالی وزیرستان میں سیکیورٹی فورسز کی کارروائی میں 2 دہشت گرد ہلاک ہوگئے جبکہ فائرنگ کے تبادلے میں 2 جوانوں نے جام شہادت نوش کیا۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق سیکیورٹی فورسز

مقبول ترین
16 دسمبر 1971ء پاکستان کی تاریخ کا سب سے المناک، عبرتناک اور ہولناک دن تھا۔ جب پاکستانی فوج کے ایک بزدل اور بے غیرت جرنیل نے ڈھاکا کے ریس کورس گرائونڈ میں اپنے بھارتی ہم منصب کے آگے سرنڈر کرتے ہوئے
بھارت میں مسلم مخالف متنازع قانون کے خلاف احتجاج وسیع اور پرتشدد ہوگیا ہے جس کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد 6ہوگئی ہے جس میں ایک طالب علم بھی شامل ہے جو پولیس کی فائرنگ کانشانہ بنا۔احتجاج کے چوتھے روز دارالحکومت
16 دسمبر سال 2014ء کا روز، تاریخ میں سیاہ ترین دن کے نام سے یاد کیا جاتا ہے۔ جب سفاک دہشت گردوں نے پشاور کے آرمی پبلک اسکول میں وحشت اور بربریت کی انتہا کر دی اور 149 گھروں میں صف ماتم بچھا دی گئی۔
معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ اگر لاڑکانہ میں بھٹو زندہ ہے تو غریب مر چکے ہیں۔ بلاول نے کرپشن سے اپنا رشتہ ابھی تک نہیں توڑا۔ پیپلز پارٹی نے بھٹو کے نظریے کو ختم کر دیا ہے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں