Wednesday, 12 August, 2020
’’سعودیہ اور ایران کے درمیان سخت جملوں کا تبادلہ‘‘

’’سعودیہ اور ایران کے درمیان سخت جملوں کا تبادلہ‘‘

 

روم ۔ سعودی عرب اور ایران کے وزرائے خارجہ نے روم میں ایک اجلاس کے دوران ایک دوسرے پر سخت نوعیت کے الزامات عائد کیے۔ اطالوی دارالحکومت روم میں سعودی عرب کے وزیرخارجہ عادل الجبیر نے کہا، ’’انہوں نے ہمارے خطے اور دنیا بھر میں موت کا بازار گرم کر رکھا ہے۔‘‘

جمعے کے دن ’’ایک مثبت ایجنڈا‘‘ کے نام سے تین روزہ کانفرنس میں شریک سعودی وزیرخارجہ الجبیر نے ’’بحران سے آگے‘‘ نامی سیشن میں ایران اور سعودی عرب کے وزرائے خارجہ کے درمیان تند و تیز جملوں کا تبادلہ ہوا۔ الجبیر کا کہنا تھا کہ ایران خطے کو انتہائی منفی طریقے سے متاثر کر رہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا، ’’سن 1979 سے اب تک ایران دنیا بھر میں دہشت گردی کا سب سے بڑا مددگار ہے۔‘‘

ایران اور سعودی عرب شام، عراق، یمن، لبنان اور متعدد گیر ممالک میں پراکسی جنگ لڑ رہے ہیں۔ الجبیر نے کہا کہ ایران سیاہ دھن اور منشیات کی آمدن سے لبنان میں حزب اللہ سمیت متعدد دہشت گرد تنظیموں کو پناہ اور معاونت دیتا ہے۔

ایرانی وزیرخارجہ جواد ظریف کا اس سے قبل کہنا تھا، ’’ایران اس اجلاس کو سعودی عرب پر تنقید کے لیے استعمال نہیں کرنا چاہتا، مگر سعودی عرب نے شام اور لبنان میں فائربندی کی ہرکوشش کو مسترد کیا ہے۔‘‘

جواد ظریف کا کہنا تھا، ’’اسلامک اسٹیٹ کی مدد یہ سوچ کر کون کرتا رہا کہ وہ شامی حکومت کو تین ہفتوں میں ختم کر دے گی۔ قطر کی ناکہ بندی کے پیچھے کون ہے؟ لبنان کے وزیراعظم کو عہدہ چھوڑنے پر مجبور کس نے کیا؟‘‘

جواد ظریف کا کہنا تھا، ’’ہمیں یقین ہے کہ تمام ممالک کو مل کر رہنا اور کام کرنا ہے مگر کچھ افراد چاہتے ہیں کہ ہمیں الگ کر دیا جائے۔‘‘

الجبیر نے اس کے جواب میں کہا کہ سعودی عرب کو نہیں ایران کو خطے میں اپنے دوست اور اتحادی ڈھونڈنے میں مشکلات کا سامنا ہے اور اس کی وجوہات کا جائزہ ایران خود لے۔‘‘ الجبیر کا کہنا تھا، ’’ہماری دنیا کے تقریباﹰ تمام ممالک سے اچھے تعلقات ہیں، سوائے ایران اور شمالی کوریا کے۔ ایران کا دوست کون ہے سوائے بشارالاسد اور شمالی کوریا کے؟‘‘

اس موقع پر دونوں وزرائے خارجہ کے درمیان ان شدید تندوتیز جملوں کا سلسلہ جاری تھا، جب روسی وزیرخارجہ سیرگئی لاوروف نے مداخلت کی اور کہا کہ دونوں ممالک ایک دوسرے کے خلاف سخت جملوں کے استعمال کی بجائے مذاکرات کے ذریعے مسائل کے حل کی کوشش کریں۔ بہ شکریہ ڈی ڈبلیو

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کرسکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  69777
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
ان دنوں جب کہ فلسطینی مسلمانوں پر صہیونی ریاست اپنے مغربی آقاؤں کی سرپرستی میں آگ اور خون کی بارش جاری رکھے ہوئے ہے اور وحشت و درندگی اپنے عروج پر ہے اہل پاکستان کے لیے یہ جاننا بہت ضروری ہے کہ اس اسلامی ریاست کے بانیوں کا فلسطین اور صہیونی ریاست کے بارے میں کیا نظریہ رہا ہے تاکہ حکومت کے ذمے دار بھی اس آئینے میں اپنے آپ کو دیکھ سکیں اور پاکستانی بھی اپنے راہنماؤں کے جرأت مندانہ اوردوٹوک موقف سے آگاہ ہو سکیں۔ ان کے موقف سے آگاہی ہمارے جذبہ ایمانی ہی کو مہمیز کرنے کا ذریعہ نہیں بنے گی بلکہ ہمیں اس مسئلے میں اپنا لائحہ عمل طے کرنے میں بھی مدد دے گی۔ ہم نے اس سلسلے میں خاص طور پر حکیم الامت علامہ اقبال جنھیں بجا طور پر مصور پاکستان کہا جاتا ہے اور بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناح کا انتخاب کیا ہے۔
امریکہ میں بے روزگاری کے تاریخ کے بدترین مقام پر پہنچ جانے کے بعد ان کی سیاسی ساکھ پہلے ہی خراب ہو چکی ہے۔ اس لیے آئندہ صدارتی انتخابات میں ان کی کامیابی کے امکانات ہر روز پہلے کی نسبت کم ہو رہے ہیں۔ کورونا کی حشر سامانیاں امریکہ میں اسی طرح جاری رہیں تو امریکی وفاق کے لیے مزید دھچکوں کا باعث بن سکتی ہیں۔
ملی یکجہتی کونسل کی تمام رکن جماعتوں کے قائدین، علماء کرام اور دینی راہنمائوں نے ایک مشترکہ اعلامئے میں کہا کہ حکومت مساجد کی تالابندی سے اجتناب کرے۔ ملک کے مختلف علاقوں سے ملنے والی خبروں کے مطابق انتظامیہ مساجد کی تالا بندی اور ائمہ جمعہ
اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے 10دسمبر2017 کو ایران کی پارلیمان سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ سعودی عرب سے اپنے تعلقات بہتر کر سکتے ہیں اگر وہ اسرائیل

مقبول ترین
قومی اسمبلی سے انسداد دہشتگردی ترمیمی بل 2020 کو کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا، شرکت داری محدود ذمہ داری سمیت پانچ بلز منظور کرلئے گئے۔ تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی میں انسداد دہشتگردی ترمیمی بل 2020 کو کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا جس میں کمپنیز ترمیمی بل اور نشہ آور اشیا کی روک تھام کا بل بھی شامل ہے۔
وفاقی وزیر برائے مذہبی امور پیر نورالحق قادری نے کہا ہے کہ اسرائیل میں موساد کی ایک خاتون جعلی اکاؤنٹ سے فرقہ وارانہ مواد پھیلا رہی ہے۔ یہ خاتون فرقہ وارانہ موادسوشل میڈیا پربھیج دیتی ہے اورپھر آگے شیعہ اور سنی خود سے اسے پھیلاتے ہیں۔
سعودی عرب کے سابق انٹیلجنس افسر کی شکایت پر واشنگٹن کی ایک امریکی عدالت نے سعودی بن سلمان ولی عہد کو طلب کرلیا ہے۔ سابق سعودی انٹیلی جنس ایجنٹ کو مبینہ طور پر ناکام قاتلانہ حملے میں نشانہ بنایا گیا تھا۔
مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کی غیر قانونی اراضی کیس میں قومی احتساب بیورو (نیب) میں پیشی منسوخ ہوگئی۔ نون لیگی رہنما مریم نواز نے کہا ہے کہ مجھے نقصان پہنچانے کے لیے گھر سے نیب آفس بلایا گیا۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں