Wednesday, 14 November, 2018
نقیب اللہ قتل کیس، راؤ انوار کو گرفتار نہ کرنے کا حکم

نقیب اللہ قتل کیس، راؤ انوار کو گرفتار نہ کرنے کا حکم

اسلام آباد ۔ سپریم کورٹ نے نقیب اللہ قتل ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران نئی جے آئی ٹی بنانے کا حکم دیتے ہوئے مقدمے میں نامزد ملزم سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کو حفاظتی ضمانت دیتے ہوئے جمعہ (16 فروری) کو عدالت طلب کرلیا ہے۔ عدالت عظمیٰ نے کہا ہے کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ آنے تک راؤ انوار کو گرفتار نہ کیا جائے اور  پولیس انہیں سیکیورٹی فراہم کرے۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے نقیب قتل کے ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی۔ سماعت کے دوران آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ عدالت میں پیش ہوئے اور راؤ انوار کو گرفتار کرنے کے سلسلے میں اپنی بے بسی کا اظہار کیا۔ 

مقتول نقیب اللہ کے والد کی جانب سے عدالت میں خط پیش کیا گیا جس میں کہا گیا ہے کہ ہمارے سیکیورٹی ادارے جانتے ہیں کہ سابق ایس ایس پی ملیر کہاں ہیں پھر آئی جی سندھ اب تک راؤ انوار کو کیوں نہیں پکڑ سکے، راؤ انوار کی عدم گرفتاری کا جواب چاہئے اور ملزم کی گرفتاری کے لئے عوام سے مدد مانگی جائے۔

آج سماعت کے دوران راؤ انوار کا ایک خط پڑھ کر سنایا گیا، جو سپریم کورٹ کے انسانی حقوق ونگ کو ڈاکخانے کے ذریعے ملا۔اپنے خط میں راؤ انوار نے موقف اختیار کیا کہ انہوں نے قتل نہیں کیا، ان پر الزام لگایا گیا۔ ساتھ ہی انہوں نے عدالت عظمیٰ سے ایک آزاد جے آئی ٹی بنانے کی استدعا کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ جو فیصلہ جے آئی ٹی کرے گی، انہیں منظور ہوگا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے اے ڈی خواجہ کو مخاطب کرکے کہا کہ آئی جی سندھ  سابق ایس ایس پی ملیر کو گرفتار نہیں کرسکے اور انہوں نے عدالت سے مزید وقت مانگا ہے، خط کی تصدیق کے لیے چیف جسٹس ثاقب نثار نےآئی جی سندھ کو راؤ انوار کے دستخط دکھائے، جس پر اے ڈی خواجہ نے کہا کہ دستخط راؤ انوار سے ملتے جلتے ہیں۔ جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ 'ٹھیک ہے پھر جے آئی ٹی بنادیتے ہیں۔

ساتھ ہی چیف جسٹس نے اے ڈی خواجہ کو مخاطب کرکے کہا کہ، آئی جی صاحب پھر راؤ انوار کا ہم نے ہی پتہ کرایا ہے، آپ نے کچھ نہیں کیا۔ جس پر آئی جی سندھ نے کہا کہ سر آپ میں اور ہم میں بہت فرق ہے۔تحقیقاتی اداروں پرمشتمل کمیٹی نے رپورٹ دے دی ہے،آئی بی نے ملزم کی لوکیشن ٹریس کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے،اے ڈی خواجہ نے کہا کہ آئی بی کاکہناہے واٹس ایپ سے لوکیشن ٹریس نہیں ہوسکتی۔ اس پر چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اس کامطلب ہے ابھی تک کچھ نہیں ہوا؟ہرباروقت دیتے ہیں،لگتاہے راؤانوار کو ہمیں ہی پکڑناہوگا،ہمیں بتادیں راؤانوارکوکیسے پکڑناہے؟۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ عدالت کے ہیومین رائٹ سیل کو سابق ایس ایس پی راؤ انوار کا خط موصول ہوا ہے،  اگر یہ خط واقعی راؤ انوار کا ہے تو عدالت انہیں موقع دیتی ہے کہ وہ خود آئندہ جمعہ کے روز عدالت میں پیش ہوکر اپنا مؤقف دیں، اور اس وقت تک سندھ  اور اسلام آباد پولیس ان کی حفاظت کرے اور انہیں گرفتار نہ کیا جائے، لیکن یہ تمام احکامات راؤ انوار کی عدالت میں آمد سے مشروط ہوں گے۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ راﺅ انوار کو کچھ ہوا تو تمام شواہد ختم ہو جائیں گے ۔جے آئی ٹی کی رپورٹ آنے تک راؤ انوار کو گرفتار نہ کیا جائے اور  پولیس انہیں سیکیورٹی فراہم کرے۔

عدالتی حکم کے مطابق جے آئی ٹی میں انٹرسروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) اور انٹیلی جنس بیورو (آئی بی) کا بریگیڈیئر لیول کاآفیسر شامل ہوگا جبکہ ایک قابل افسر کا تعین عدالت خود کرے گی۔

واضح رہے کہ یکم فروری کو عدالت عظمیٰ نے سندھ پولیس کو مقدمے میں نامزد سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کو 10 دن میں گرفتار کرنے کی مہلت دی تھی۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  10391
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کا کہنا ہے کہ انتظامیہ اور پولیس کو واضح کہنا چاہتا ہوں کہ ظلم و زیادتی روک دیں، وقت ایک جیسا نہیں رہتا، جب ہماری حکومت آئے گی تو آپ کے ساتھ زیادتی نہیں کریں گے بلکہ انصاف کے کٹہرے میں لے کر آئیں گے۔
نقیب اللہ قتل کیس میں سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کے خلاف اہم گواہ منحرف ہوگیا۔کراچی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت ہوئی۔ راؤ انوار، ڈی ایس پی قمر احمد شیخ، اللہ یار
سابق وزیر خزانہ کے خلاف اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت کے دوران نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو آگاہ کیا کہ اسحاق ڈار کے خلاف بھی ضمنی ریفرنس تیار ہےجو پیر (26 فروری) تک احتساب عدالت میں دائر کردیا جائے گا۔ جبکہ عدالت نے نیب کی جانب سے ضمنی ریفرنس دائر نہ کیے جانے کے باعث
چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے نااہلی مدت کیس میں کہا ہے کہ بددیانت قرار دیا گیا شخص 5 روز بعد کیسے دیانتدار ہوجائے گا۔ جبکہ جسٹس شیخ عظمت سعید نے ریمارکس دیئے ہیں کہ جب تک ڈیکلریشن موجود رہے گا بددیانتی بھی رہے گی۔

مزید خبریں
میڈیا کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی نے اظہر صدیق ایڈوووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی۔ جس میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے قوانین کی پاسداری نہ کرنے کی نشاندہی دہی کی گئی۔
صوبہ بلوچستان کے ضلع تربت میں کالعدم تنظیموں سے تعلق رکھنے والے 15 اہم کمانڈروں سمیت تقریباً 200 فراری ہتھیار ڈال کر قومی دھارے میں شامل ہوگئے ہیں۔ تقریب کے مہمان خصوصی وزیراعلیٰ بلوچستان میرعبدالقدوس بزنجو تھے۔ اب تک ایک ہزار 8 سو کے قریب فراری ہتھیار ڈال کر قومی دھارے میں شامل ہوچکے ہیں۔
سابق وزیراعظم اور حکمران جماعت کے سربراہ میاں محمد نواز شریف کی کل سعودی عرب روانگی کا امکان ہے۔ جہاں وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف پہلے سے موجود ہیں۔ جبکہ وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق بھی پی آئی اے کی پرواز کے ذریعے اہلخانہ کے ہمراہ سعودی عرب روانہ ہوگئے ہیں
وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف پورے عزم سے لڑ رہے ہیں ، دہشت گردوں کا نیٹ ورک توڑ دیا ہے ، آخری دہشت گرد کے خاتمے تک جنگ لڑیں گے۔ وزیر اعظم نواز شریف سے پشاور میں مسلم لیگ ن کے سینیٹرز اور ارکان قومی

مقبول ترین
خیبر پختون خوا پولیس کے اعلیٰ افسر ایس پی طاہر داوڑ کا جسد خاکی افغانستان نے پاکستان کے حوالے کردیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ شہید ایس پی طاہر داوڑ کا جسد خاکی جلال آباد میں پاکستان قونصل خانے کے اعلیٰ عہداروں کے حوالے کر دیا گیا ہے
سابق وزیراعظم نواز شریف نے العزیزیہ ریفرنس میں صفائی کا بیان قلمبند کرانا شروع کر دیا۔ پہلے روز 50 عدالتی سوالات میں سے 45 کے جواب ریکارڈ کرا دیئے۔ باقی سوالات پر وکیل خواجہ حارث سے مشاورت کے لیے وقت مانگ لیا۔
فلسطین میں قابض اسرائیلی فوج کے معاملے پر اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا بند کمرا اجلاس بے نتیجہ ختم ہوگیا۔ میڈیا کے مطابق غزہ میں قابض اسرائیلی فوج نے ظلم وبربریت کی انتہا کررکھی ہے، آئے دن نہتے فلسطینیوں کو فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ
چند روز قبل اسلام آباد سے اغوا ہونے والے خیبر پختونخوا پولیس کے ایس پی طاہر خان داوڑ کو مبینہ طور پر افغانستان میں قتل کر دیا گیا۔ خیبر پختونخوا پولیس کے ایس پی طاہر خان داوڑ 27 اکتوبر کو اسلام آباد سے لاپتہ ہوئے تھے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں