Wednesday, 17 October, 2018
’’تمباکو اور سگریٹ کا عادی بھارتی بکرا‘‘

’’تمباکو اور سگریٹ کا عادی بھارتی بکرا‘‘

کرناٹکا ۔ بھارتی شہر مندیا میں ایک بکرا سگریٹ اور تمباکو کا اس قدر عادی ہوچکا ہے کہ اب وہ پان کی دکانوں کے باہر گھومتا دکھائی دیتا ہے کہ کوئی اسے سگریٹ پلادے۔

یہ بکرا چارے اور سبزیوں کے ساتھ ساتھ اب تمباکو بھی رغبت سے چباتا ہے۔ علاوہ ازیں وہ بیڑی کھاتا اور تمباکو کے پتے چباتا ہے۔ بکرے کے مالک یشونت نے کہا ہے کہ پہلے پہل اس نے سگریٹ کے ٹوٹے کھانے شروع کیے اور یہاں تک کہ تمباکو والے کاغذ اور ساشے بھی چاٹتا ہے۔ میرے بکرے کی تمباکو سے رغبت اس قدر بڑھ گئی ہے کہ اب یہ حال ہے کہ یہ باقاعدہ چارے کے طور پر سگریٹ کھاتا ہے۔

خیال رہے کہ بھارت میں مقامی چرواہے اور کسان مویشیوں کے پیٹ کے کیڑے مارنے کے لیے انہیں معمولی مقدار میں تمباکو کھلاتے ہیں۔ اگر جانور بیمار ہوجائے تو اسے تمباکو کی بڑی مقدار دی جاتی ہے۔ دوسری جانب بھارتی ڈاکٹروں نے اس رجحان کو غلط قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ تمباکو انسان اور جانور، دونوں کی جان کا دشمن ہے۔

ماہرین کے مطابق اگر معصوم جانوروں کو تمباکو کی لت لگادی جائے تو اس سے وہ ہیجان، تشنج (جھٹکوں)، قے، کمزوری ، سانس کے امراض اور یہاں تک کہ موت کے شکار بھی ہوسکتے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کرسکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  25119
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
دبئی میونسپل انتظامیہ کی جانب سے صفائی اور ماحول کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے سڑکوں اور گلیوں میں سگریٹ کا ٹکڑا پھینکنے پر 500 درہم (تقریباً 15 ہزار 140 پاکستانی روپے) تک کا جرمانہ عائد کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔ سگریٹ کے ٹکڑے پھینکنے پر پابندی 2003 کے لوکل آرڈر نمبر 11 کے تحت لگائی گئی ہے۔
بھارتی ریاست مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بینرجی کے ساتھ لندن کے دورے پر گئے بھارتی صحافی چور نکلے۔ کھانے کے دوران ہوٹل کے چاندی کے چمچے چرا لئے۔ ہوٹل انتظامیہ نے بھارتی صحافیوں سے چمچے برآمد کرکے ان پر 50 پاؤنڈ جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔ وزیر اعلٰی کیساتھ دورے پر جانیوالے تمام صحافی 'سینئر ایڈیٹرز' تھے
ایک 98 سالہ بھارتی شخص راج کمار ویش ہے جس نے معاشیات میں ماسٹرز کا امتحان پاس کیا ہے۔ راج کمار ویش نے گریجویشن 1938 میں آگرہ یونیورسٹی سے مکمل کی تھی اور 1940 میں وکالت کی ڈگری حاصل کی، لیکن پھر نوکری ملنے کے بعد تعلیم کو آگے جاری نہ رکھ سکے تھے۔
پاکستان میں انسانوں کے بعد اب جانوروں کے بھی شناختی کارڈ بنائے جائیں گے۔ اس سلسلے میں سندھ حکومت کی جانب سے جانوروں کے لئے بھی نادرا کی طرز کا ادارہ بنایا جائے گا جس کے ذریعے انہیں شناختی کارڈ، ویزا اور پاسپورٹ بھی دیے جائیں گے۔

مزید خبریں
نیویارک میں ایک کمپنی نے ایک ایسا کام کرنے کے لیے بازار میں بوتھ بنادیا ہے جس کا سن کر ہی انسان شرم سے پانی پانی ہو جائے۔ اس کمپنی نے مردوں کو خودلذتی کا موقع فراہم کرنے کے لیے بازار کے بیچ یہ بوتھ بنایا ہے
۔خوبصورت سوئمنگ پول،دیدہ زیب بیڈ رومز اور زیر سمندایک دلکش پاڈ پر مشتمل اس ریسورٹ کی تخمینی لاگت 145ملین پاؤنڈ رکھی گئی ہے۔ر ریسورٹ بنانے والی کمپنی کا دعویٰ ہے کہ یہ مستقبل میں سیاحوں کیلئے ایک آئیڈیل جگہ کا درجہ اختیار کر لے گا۔
امریکا کے ایک اسکول میں 3ہرنوں نے تباہی مچاتے ہو ئے انٹری دی جو تعلیم کے حصول کیلئے نہیں بلکہ 2آوارہ کتوں سے بچنے کیلئے کی گئی تھی۔ان 3ہرنوں کے پیچھے 2کتے لگ گئے جن سے بچاؤ کیلئے پہلے تو ان ہر نوں نے ان کی خوب دوڑیں لگوائیں

مقبول ترین
لندن کی وارک یونیورسٹی میں خطاب کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ دنیا میں القاعدہ کو کبھی بھی پاکستان کی مددکے بغیر شکست نہیں ہوسکتی تھی دہشتگردی کے خاتمے کے لیے دنیا کو پاکستان کا شکریہ ادا کرنا چاہیے۔
وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ حکومت نے مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں لگائے گئے بجلی کے تمام منصوبوں کے آڈٹ کا فیصلہ کیا ہے جب کہ 2 منصوبے کے آڈٹ کا آغاز بھی ہوچکا ہے۔ پریس کانفرنس کے دوران فواد چوہدری نے
بین الاقوامی برادری میں یہ تاثر عام ہے کہ بھارتی قیادت علاقائی بالادستی حاصل کرنے کے زعم میں یوں مبتلا ہو چکی ہے کہ اس پر کسی نفسیاتی غلبہ اور سیاسی و سفارتی عارضہ کا گمان ہوتا ہے۔ وزیراعظم مودی نے اپنے دور حکومت میں نیپال، بنگلہ دیش
غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق فرانس کے شمالی علاقے ٹریب میں سیلاب کے باعث 13 افراد ہلاک اورمتعدد زخمی ہوگئے۔ فرانسیسی وزارت داخلہ کے مطابق متاثرہ علاقوں میں محض چند گھنٹوں کے دوران اتنی بارش ہوئی جو عام طورپر3 ماہ سے زائد

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں