Saturday, 22 February, 2020
سمندر کے اندر دنیا کے پہلے شہر کی تعمیرکا منصوبہ

سمندر کے اندر دنیا کے پہلے شہر کی تعمیرکا منصوبہ

ٹوکیو ۔ ٹوکیو سے تعلق رکھنے والی کمپنی شمیزو کارپوریشن نے اوشین سپائرلز کے نام سے زیر آب شہروں کی تعمیر کا منصوبہ بنایا ہے جس پا کام شروع کر دیا گیا ہے۔ پہلا شہر جاپانی دارالحکومت ٹوکیو کے ساحلوں پر 16400 فٹ گہرائی میں تعمیر ہو گا۔ کمپنی کا تخمینہ ہے کہ اس کی تعمیر پر 26 ارب ڈالر کا خرچہ آئے گا۔ اس شہر میں پانچ ہزار افراد رہ سکیں گے۔ گیند جیسی عمارات کے اندر رہائش، دفاتر، لیبارٹریز، ریسٹورنٹس اور تعلیمی ادارے موجود ہوں گے۔ کمپنی کے مطابق اگر منصوبہ آگے بڑھتا ہے تو یہ شہر 2030 تک مکمل ہو سکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سائنسدانوں کے خیال میں سمندروں کی سطح میں اضافے کے نتیجے میں زمین کا بڑا حصہ سمندری پانی کی نذر ہوسکتا ہے اور اسی خطرے کو دیکھتے ہوئے جاپان میں سمندر کے اندر شہروں کی تعمیر کے منصوبے پر کام شروع کیا گیا ہے۔

ٹوکیو سے تعلق رکھنے والی کمپنی شمیزو کارپوریشن اوشین سپائرلز کے نام سے زیر آب شہروں کی تعمیر کرنا چاہتی ہے ۔ابھی تک ایسے کسی زیرآب شہر کا ٹھوس منصوبہ تو نہیں بنا مگر کمپنی کا تخمینہ ہے کہ اس کی تعمیر پر 26 ارب ڈالر کا خرچہ آئے گا۔اگر کمپنی کے منصوبے پر کام آگے بڑھتا ہے تو ایسا پہلا شہر جاپانی دارالحکومت ٹوکیو کے ساحلوں پر 16400 فٹ گہرائی میں تعمیر ہو گا۔ اس مقصد کے لیے بہت بڑے ٹربیونز سمندری تہہ میں نصب کیے جائیں گے جو سمندری لہروں وغیرہ سے بجلی پیدا کریں گے ، یہ نو میل لمبا پیچدار سٹرکچر یا سپائرل سمندری پانی سے ہی بجلی پیدا کرے گا۔

اس شہر میں پانچ ہزار افراد رہ سکیں گے جبکہ کمپنی کے مطابق اس مجوزہ شہر میں نصب سسٹم اتنی بجلی پیدا کرسکیں گے جو وہاں رہنے والوں کی ضروریات کے لیے کافی ہوگی، گیند جیسی عمارات کے اندر رہائش، دفاتر، لیبارٹریز، ریسٹورنٹس اور تعلیمی ادارے موجود ہوں گے۔

کمپنی کے مطابق اگر منصوبہ آگے بڑھتا ہے تو یہ شہر 2030 تک مکمل ہو سکتا ہے۔ کمپنی کے بقول زمین کا ستر فیصد حصہ سمندر پر مشتمل ہے اور سمندر کی گہرائی توانائی کے متبادل ذرائع کے لیے بہت زیادہ مواقع رکھتی ہے ۔

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  5240
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
آپ نے اگر اپنا گھر بنانا ہے تو مستریوں کے پیچھے بھاگنے کی ضرورت نہیں ہے۔ اب آپ کی مشکل حل کرنے کیلئے روبوٹ آ گئے ہیں۔ سعودی عرب نے ایک آسٹریلوی کمپنی سے معاہدہ کیا ہے
سوئٹزرلینڈ میں دنیا کی سب سے لمبی اور سب سے گہری ریلوے سرنگ کا افتتاح کردیاگیا۔گوٹہارڈ ریل لنک کی تعمیر میں 20 سال لگے اور اس پر 12 ارب ڈالر سے زائد کا خرچ آیا ہے۔سوئس حکام کا کہنا ہے کہ اس سے یورپ کی مال برداری کے میدان میں انقلاب آ جائے گا
فرانس نے انقلابی قدم اُٹھاتے ہوئے 1000کلو میٹر سٹرک پر سولر پینلز بچھانے کے منصوبے پر عملدرآمد شروع کر دیا ہے ۔ فرانسیسی وزیر نے گذشتہ ہفتے ٹرانسپورٹ حکام کے ساتھ ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ ”پازیٹو انرجی “کے ٹینڈرز پہلے ہی جاری کئے جا چکے ہیں
جنوبی افریقہ کی ایک بلدیاتی حکومت نے لڑکیوں کے لیے ایک تعلیمی وظیفے کا پروگرام متعارف کرایا ہے، جو صرف ایسی نوجوان طالبات کے لیے ہے، جو یہ ثابت کریں گی کہ وہ 'کنواری' ہیں۔

مزید خبریں
نیویارک میں ایک کمپنی نے ایک ایسا کام کرنے کے لیے بازار میں بوتھ بنادیا ہے جس کا سن کر ہی انسان شرم سے پانی پانی ہو جائے۔ اس کمپنی نے مردوں کو خودلذتی کا موقع فراہم کرنے کے لیے بازار کے بیچ یہ بوتھ بنایا ہے

مقبول ترین
فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) نے 16 فروری سے 21 فروری تک منعقدہ اجلاس میں پاکستان کوجون 2020 تک ادارے کی گرے لسٹ میں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔
وزیر اعظم عمران خان نے لیہ میں ”احساس اثاثہ جات منتقلی پروگرام” کا اجراءکی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ پاکستان کو فلاحی ریاست بنانا ہماری کوشش ہے ، پاکستان مشکل وقت سے نکل چکا ہے،یہ پروگرام احساس کے تحت چلائے جانے والے پروگراموں میں سے ایک ہے جس کا بنیادی مقصد پسماندہ طبقات کیلئے ذریعہ معاش کے مواقع پیدا کرنا ہے۔
سابق اٹارنی جنرل انور منصور خان نے سپریم کورٹ کے ججز کے خلاف دیے گئے متنازع بیان پر عدالت عظمیٰ سے غیر مشروط معافی مانگ لی۔
پاکستان سپر لیگ کے پانچویں ایڈیشن کی افتتاحی تقریب نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں ہوئی۔ نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں پاکستان سپر لیگ کے پانچویں ایڈیشن کی رنگا رنگ افتتاحی تقریب ہوئی جس میں 350 فنکاروں نے اپنے فن کا زبردست مظاہرہ کیا جب کہ راحت

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں