Thursday, 02 April, 2020
بستیاں الّو ویران نہیں کرتے ۔۔۔

بستیاں الّو ویران نہیں کرتے ۔۔۔

 

ﺍﯾﮏ ﻃﻮﻃﺎ ﻃﻮﻃﯽ ﮐﺎ ﮔﺰﺭ ﺍﯾﮏ ﻭﯾﺮﺍﻧﮯ ﺳﮯ ﮨﻮﺍ ، ﻭﯾﺮﺍﻧﯽ ﺩﯾﮑﮫ ﮐﺮ ﻃﻮﻃﯽ ﻧﮯﻃﻮﻃﮯ ﺳﮯ ﭘﻮﭼﮭﺎ ” ﮐﺲ ﻗﺪﺭ ﻭﯾﺮﺍﻥ ﮔﺎﺅﮞ ﮨﮯ، ?. “ﻃﻮﻃﮯ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ ﯾﮩﺎﮞ ﮐﺴﯽ ﺍﻟﻮ ﮐﺎ ﮔﺰﺭ ﮨﻮﺍ ﮨﮯ۔ “ﺟﺲ ﻭﻗﺖ ﻃﻮﻃﺎ ﻃﻮﻃﯽ ﺑﺎﺗﯿﮟ ﮐﺮ ﺭﮨﮯ ﺗﮭﮯ ، ﻋﯿﻦ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﺍﯾﮏ ﺍﻟّﻮ ﺑﮭﯽ ﻭﮨﺎﮞ ﺴﮯ ﮔﺰﺭ ﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ ،ﺍﺱ ﻧﮯ ﻃﻮﻃﮯ ﮐﯽ ﺑﺎﺕ ﺳﻨﯽ ﺍﻭﺭ ﻭﮨﺎﮞ ﺭﮎ ﮐﺮ ﺍﻥ ﺳﮯ ﻣﺨﺎﻃﺐ ﮨﻮﮐﺮ ﺑﻮﻻ، ﺗﻢ ﻟﻮﮒ ﺍﺱ ﮔﺎﺅﮞ ﻣﯿﮟ ﻣﺴﺎﻓﺮ ﻟﮕﺘﮯ ﮨﻮ، ﺁﺝ ﺭﺍﺕ ﺗﻢ ﻟﻮﮒ ﻣﯿﺮﮮ ﻣﮩﻤﺎﻥ ﺑﻦ ﺟﺎﺅ،ﻣﯿﺮﮮ ﺳﺎﺗﮫ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﮐﮭﺎﺅ۔

ﺍُﻟﻮ ﮐﯽ ﻣﺤﺒﺖ ﺑﮭﺮﯼ ﺩﻋﻮﺕ ﺳﮯ ﻃﻮﻃﮯ ﮐﺎ ﺟﻮﮌﺍ ﺍﻧﮑﺎﺭ ﻧﮧ ﮐﺮﺳﮑﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺍُﻟﻮ ﮐﯽ ﺩﻋﻮﺕ ﻗﺒﻮﻝ ﮐﺮﻟﯽ, ﮐﮭﺎﻧﺎ ﮐﮭﺎ ﮐﺮ ﺟﺐ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺭﺧﺼﺖ ﮨﻮﻧﮯ ﮐﯽ ﺍﺟﺎﺯﺕ ﭼﺎﮨﯽ، ﺗﻮﺍُﻟﻮ ﻧﮯ ﻃﻮﻃﯽ ﮐﺎ ﮨﺎﺗﮫ ﭘﮑﮍ ﻟﯿﺎ ﻭﺭ ﮐﮩﺎ .. ﺗﻢ ﮐﮩﺎﮞ ﺟﺎ ﺭﮨﯽ ﮨﻮ ،ﻃﻮﻃﯽ ﭘﺮﺷﺎﻥ ﮨﻮ ﮐﺮ ﺑﻮﻟﯽ ﯾﮧ ﮐﻮﺋﯽ ﭘﻮﭼﻨﮯ ﮐﯽ ﺑﺎﺕ ﮨﮯ ،ﻣﯿﮟ ﺍﭘﻨﮯ ﺧﺎﻭﻧﺪ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﻭﺍﭘﺲ ﺟﺎ ﺭﮨﯽ ﮨﻮﮞ۔۔۔

ﺍﻟﻮ ﯾﮧ ﺳﻦ ﮐﺮ ﮨﻨﺴﺎ ..ﺍﻭﺭ ﮐﮩﺎ .. ﯾﮧ ﺗﻢ ﮐﯿﺎ ﮐﮧ ﺭﮨﯽ ﮨﻮ ﺗﻢ ﺗﻮ ﻣﯿﺮﯼ ﺑﯿﻮﯼ ﮨﻮ .ﺍﺱ پرﻄﻮﻃﺎ ﻃﻮﻃﯽ ﺍﻟﻮ ﭘﺮ ﺟﮭﭙﭧ ﭘﮍﮮ ﻭﺭ ﮔﺮﻣﺎ ﮔﺮﻣﯽ ﺷﺮﻭﻉ ﮨﻮ ﮔﺌﯽ، ﺩﻭﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺟﺐ ﺑﺤﺚ ﻭ ﺗﮑﺮﺍﺭ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺑﮍﮬﯽ ﺗﻮ ﺍُﻟﻮ ﻧﮯ ﻃﻮﻃﮯ ﮐﮯ ﮐﮯ ﺳﺎﻣﻨﮯ ﺍﯾﮏ ﺗﺠﻮﯾﺰ ﭘﯿﺶ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﮐﮩﺎ ” ﺍﯾﺴﺎ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﮨﻢ ﺗﯿﻨﻮﮞ ﻋﺪﺍﻟﺖ ﭼﻠﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﺍﭘﻨﺎ ﻣﻘﺪﻣﮧ ﻗﺎﺿﯽ ﮐﮯ ﺳﺎﻣﻨﮯ ﭘﯿﺶ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ،ﻗﺎﺿﯽ ﺟﻮ ﻓﯿﺼﻠﮧ ﮐﺮﮮ ﻭﮦ ﮨﻤﯿﮟ ﻗﺒﻮﻝ ﮨﻮﮔﺎ “ﺍُﻟﻮ ﮐﯽ ﺗﺠﻮﯾﺰ ﭘﺮﻃﻮﻃﺎ ﺍﻭﺭ ﻃﻮﻃﯽ ﻣﺎﻥ ﮔﺌﮯ ﺍﻭﺭ ﺗﯿﻨﻮﮞ ﻗﺎﺿﯽ ﮐﯽ ﻋﺪﺍﻟﺖ ﻣﯿﮟ ﭘﯿﺶ ﮨﻮﺋﮯ ۔ 

قاضی ﻨﮯ ﺩﻻﺋﻞ ﮐﯽ ﺭﻭﺷﻨﯽ ﻣﯿﮟ ﺍُﻟﻮ ﮐﮯ ﺣﻖ ﻣﯿﮟ ﻓﯿﺼﻠﮧ ﺩﮮ ﮐﺮ ﻋﺪﺍﻟﺖ ﺑﺮﺧﺎﺳﺖ ﮐﺮﺩﯼ،ﻃﻮﻃﺎ ﺍﺱ ﺑﮯ ﺍﻧﺼﺎﻓﯽ ﭘﺮ ﺭﻭﺗﺎ ﮨﻮﺍ ﭼﻞ ﺩﯾﺎ ﺗﻮ ﺍُﻟﻮ ﻧﮯ ﺍﺳﮯ ﺁﻭﺍﺯ ﺩﯼ ، ”ﺑﮭﺎﺋﯽ ﺍﮐﯿﻠﺌﮯ ﮐﮩﺎﮞ ﺟﺎﺗﮯ ﮨﻮﺍﭘﻨﯽ ﺑﯿﻮﯼ ﮐﻮ ﺗﻮ ﺳﺎﺗﮫ ﻟﯿﺘﮯ ﺟﺎﺅ“ ﻃﻮﻃﮯ ﻧﮯ ﺣﯿﺮﺍﻧﯽ ﺳﮯ ﺍُﻟﻮ ﮐﯽ ﻃﺮﻑ ﺩﯾﮑﮭﺎ ﺍﻭﺭ ﺑﻮﻻ ”ﺍﺏ ﮐﯿﻮﮞ ﻣﯿﺮﮮ ﺯﺧﻤﻮﮞ ﭘﺮ ﻧﻤﮏ ﭼﮭﮍﮐﺘﮯ ﮨﻮ، ﯾﮧ ﺍﺏ ﻣﯿﺮﯼ ﺑﯿﻮﯼ ﮐﮩﺎﮞ ﮨﮯ ،ﻋﺪﺍﻟﺖ ﻧﮯ ﺗﻮ ﺍﺳﮯ ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﺑﯿﻮﯼ ﻗﺮﺍﺭ ﺩﮮ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ “ﺍُﻟﻮ ﻃﻮﻃﮯ ﮐﯽ ﺑﺎﺕ ﺳﻦ کر ﻧﺮﻣﯽ ﺳﮯ ﺑﻮﻻ، ﻧﮩﯿﮟ ﺩﻭﺳﺖ ﻃﻮﻃﯽ ﻣﯿﺮﯼ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﮨﯽ ﺑﯿﻮﯼ ﮨﮯ. ﻣﯿﮟ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺻﺮﻑ ﯾﮧ ﺑﺘﺎﻧﺎ ﭼﺎﮨﺘﺎ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﺑﺴﺘﯿﺎﮞ ﺍﻟﻮ ﻭﯾﺮﺍﻥ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ. ﺑﻠﮑﮧ ﻧﺎﺍﻧﺼﺎﻓﯽ ﺳﮯ ﻭﯾﺮﺍﻥ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ.

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  41272
کوڈ
 
   
متعلقہ خبریں
کورونا وائرس سے بچنے کے لیے ہاتھ کس طرح دھوئیں۔ یونیسیف کی ” ہینڈ واش ڈانس “ ویڈیو وائرل ہوگئی
چونکہ سندھ کے ہندو مسلم دوستوں کی صحبت کی وجہ سے مسلمانوں کی طرح بات کرتے ہیں۔ جیسے: ان شاء اللہ، ماشاء اللہ، الحمد للہ، اللہ رحم کرے گا، اللہ کا کرم ہے، آمین آمین، وغیرہ وغیرہ۔
لندن کے ایک کیفے نے گاہکوں کو اپنی طرف راغب کرنے کے لیے کافی کے کپ میں پینے والوں کی تصاویر بنانا شروع کردی ہے جس کے لیے وہ ’تھری ڈی پرنٹر‘ کا استعمال کرتے ہیں۔
دبئی میں اونٹوں کے علاج کیلئے نیا اسپتال قائم کیا گیا ہے جو دنیا میں یہ اپنی قسم کا پہلا اسپتال ہے۔اس میں کسی اور جانور کا علاج نہیں کیا جائے گا۔ اسپتال کے قیام پر 40 ملین درہم خرچ ہوئے۔

مزید خبریں
نیویارک میں ایک کمپنی نے ایک ایسا کام کرنے کے لیے بازار میں بوتھ بنادیا ہے جس کا سن کر ہی انسان شرم سے پانی پانی ہو جائے۔ اس کمپنی نے مردوں کو خودلذتی کا موقع فراہم کرنے کے لیے بازار کے بیچ یہ بوتھ بنایا ہے

مقبول ترین
عرب میڈیا کے مطابق مکہ اور مدینہ میں پورے دن کے لیے کرفیو نافذ کردیا گیا ہے تاہم صبح 6 بجے سے سہ پہر 3 بجے تک شہریوں کو دوائی اور کھانے پینے کی اشیاء لینے کے لیے گھر سے نکلنے کی اجازت ہوگی تاہم یہ رعایت خاندان کے ایک فرد کیلیے ہوگی۔
تفصیل کے مطابق پاکستان میں کورونا وائرس میں مبتلا ہونے والے پہلے مریض یحییٰ جعفری نے والدین کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ یہ وائرس تاریخ کا حصہ بن جائے گا لیکن اس کے لیے ہمت اور ارادہ ضروری ہے۔
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ قطر نے عالمی وباء کورونا وائرس کے سبب ترقی یافتہ ممالک سے ترقی پذیر ممالک کے قرضوں کو ری اسٹرکچر کرنے کی وزیراعظم عمران خان کی تجویز کی حمایت کا عندیہ دیا ہے۔
ملی یکجہتی کونسل کی تمام رکن جماعتوں کے قائدین، علماء کرام اور دینی راہنمائوں نے ایک مشترکہ اعلامئے میں کہا کہ حکومت مساجد کی تالابندی سے اجتناب کرے۔ ملک کے مختلف علاقوں سے ملنے والی خبروں کے مطابق انتظامیہ مساجد کی تالا بندی اور ائمہ جمعہ

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں