Saturday, 20 August, 2022
آن لائن ایجوکیشن سسٹم

آن لائن ایجوکیشن سسٹم
تحریر: شمائلہ شاہین

آن لائن ایجوکیشن سسٹم تقریباً پوری دنیا میں رائج ہے ۔پاکستان میں بھی دو بڑی یونیورسٹیاں علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی اورورچوئل یونیورسٹی اس وقت ہزاروں اسٹوڈنٹ کو آن لائن ایجوکیشن فراہم کر رہی ہیں۔ آن لائن ایجوکیشن سسٹم  کا بنیادی مقصد ان طلباء کوتعلیم کی فراہمی ہے جوطلباءجاب کی وجہ سے یا کسی اور وجہ سےباقاعدہ یونیورسٹیزاورکالج نہ جاسکتے ہوں۔  
بدقسمتی سے بعض والدین یا عزیزواقارب لڑکیوں کا کالجز یا یونیورسٹیز جانا  نہ پسند کرتے ہیں، آن لائن ایجوکیشن سسٹم کا ایک بڑا مقصدان خواتین کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنا اور شعور اجاگر کرنا ہے، یہ دونوں یونیورسٹیزطلبا کو ریکارڈ لیکچر فراہم کرتی ہیں ۔کورونا وباء کی وجہ سے ملک بھر کے تمام تعلیمی ادارے بند کر دیئےگئے جس کے بعد اب پاکستان کے تمام تعلیمی ادارے آن لائن ایجوکیشن سسٹم متعارف کرواچکے ہیں، کرونا وبا کے بعد پاکستان میں میں پلے گروپ کو بھی آن لائن ایجوکیشن مہیا کی جا رہی ہے۔جبکہ طلباء کو آن لائن ایجوکیشن سسٹم  کی وجہ سے بہت سے مسائل کا سامنا ہے ۔ اینڈرائیڈ موبائل فون کا نہ ہونا، لیپ ٹاپ کا نہ  ہونا،انٹرنیٹ کے مسائل ،لوڈشڈنگ اور کمپیوٹر کا نہ ہونا جیسے مسائل کی وجہ سے اسٹوڈنٹس  کو آن لائن ایجوکیشن حاصل کرنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔سب سے مشکل کام آن لائن امتحان دینا ہے،آن لائن امتحانات کی وجہ سے بھی طلباء کافی پریشان دیکھائی دیتے ہیں،اسکی وجہ انٹرنیٹ  کے مسائل ،لوڈشیڈنگ   اور اینڈرائڈ فون کا نہ ہوناہے۔
ورچوئل  یونیورسٹی اور علامہ اقبال اوپن  یونیورسٹی  آن لائن ایجوکیشن تو فراہم کر رہی ہیں لیکن  طلبا کے مسائل کو سمجھتے ہوئےآن لائن  ایگزیمز نہیں لیتیں  اس کے لیے انھوں نے مختلف تعلیمی سینٹرز قائم کر رکھے ہیں ،کورونا وبا کی وجہ سے  پاکستان کے علاوہ بھی کئی ممالک ہیں جہاں لاک ڈاؤن لگایا گیا جس میں امریکہ ، بھارت اور چین وغیرہ شامل ہیں ان ممالک میں بھی  طلباء کو آن لائن ایجوکیشن دی جانے لگی،چین اور امریکہ جیسے ترقی یافتہ ممالک  میں آن لائن ایجوکیشن سسٹم کی کامیابی کی سب سے بڑی وجہ حکومت کا طالبعلموں کوسہولیات مہیا کرنا ہےوہاں بجٹ کا ایک بڑا حصہ تعلیم کے لیے رکھا جاتا ہے۔ بھارت جیسے ترقی پذیر ملک  نے تعلیم کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے، طلباوطالبات میں اینڈرائڈ فون تقسیم کیے، بھارت بخوبی جانتا ہے کہ کسی بھی ملک کی ترقی میں تعلیم اہم کردار ادا کرتی ہے،اور طلبا کسی بھی ملک کا قیمتی اثاثہ اور مستقبل ہوتے ہیںاسکے برعکس پاکستان میں طالبعلموں نے طلباء کے مسائل کے لیےریلیاں اور جلسے جلوس بھی نکالے اس کےباوجودپاکستانی حکومت بلا تعطل بجلی کی فراہمی کو ہی یقینی نہیں بناسکی اورنہ طلبا کے دوسرے مسائل حل کرنے میں کوئی دلچسپی دیکھائی، پاکستان جیسے ترقی پذیر ملک  میں ناکافی سہولیات کی وجہ سے آن لائن ایجوکیشن سسٹم تقریبًا ناکام ہوتا دیکھائی دیتاہے۔ حکومت کو  چاہئے کہ طلباء و طالبات کو تمام سہولیات مہیا کرے تاکہ یہ اپنی تعلیمی سرگرمیاں بغیر کسی رکاوٹ کےجاری رکھ سکیں، طلبا کسی بھی قوم کا مستقبل ہوتے ہیں اورملکی ترقی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں ۔ 
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ [email protected] پر ای میل کریں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  52056
کوڈ
 
   
مقبول ترین
ملک بھر میں چودہ اگست کا آغاز ہوتے ہی 75 ویں آزادی کا جشن بھرپور عقیدت اور احترام سے منانے کا سلسلہ شروع ہوگیا اور فضا قومی نعروں اور ملی نغموں سے گونج اٹھی ہے۔
لاہور کے نیشنل ہاکی اسٹیٹڈیم میں ’حقیقی آزادی‘ جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں امریکا اور برطانیہ کو زیادہ تر پاکستانیوں سے بہتر جانتا ہوں، میں کسی ملک کا دشمن نہیں، امریکا سے دوستی چاہتا ہوں۔
وزیراعظم شہباز شریف نے قوم سے خطاب میں ایک بار پھر میثاق معیشت کی پیش کش کردی۔ قوم سے خطاب میں شہباز شریف کا کہنا تھاکہ آج محض ایک مبارکباد کافی نہیں، ہم ہرسال دھوم دھام سے یوم آزادی مناتےہیں، لاکھوں قربانیوں کے بعد پاکستان حاصل کیا گیا اور حققت یہ ہےکہ 75برس سے ان دنوں کو منایا ہے
سانحہ لسبیلہ ہیلی کاپٹر حادثہ و شہداء سے متعلق سوشل میڈیا پر منفی پراپیگنڈے کی تحقیقات کے معاملے پر جوائنٹ انکوائری ٹیم کا دائرہ کار بڑھا کر انٹیلجنس ایجینسز کے دو افسران بھی ٹیم میں شامل کر لیے گئے۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں