Monday, 10 May, 2021
زندگی مکافات عمل ہے

زندگی مکافات عمل ہے
تحریر : علینا کمیر

اس بات کو کسی بھی صورت نظر انداز نہیں کیا جاسکتا کہ یہ زندگی مکافات عمل ہے۔ کچھ لوگ اپنا کیا اسی دنیا میں کاٹ لیتے ہیں اور کچھ لوگ آخرت میں۔ مگر کوئی اس سے بچ نہیں سکتا یہ بات تو واضح ہے اسے کسی بھی صورت میں جھٹلایا نہیں جا سکتا۔

مگر یہ انسان اس سب کو فراموش کرکے غلطیوں پر غلطیاں کیے جاتا ہے یہاں تک کہ وہ خدا کے عذاب کا شکار بن جاتا ہے اور اسے خبر تک بھی نہیں ہو پاتی۔
آج آپ جیسا کرو گے ویسا ضرور دیکھو گے چاہے خود کے ساتھ یا اپنی اولاد میں سے۔ مگر افسوس کی بات تو یہ یے کہ اس معصوم اور ننی جان کا کیا قصور ہے جسے تمہارے گناہ اپنی ضد میں لے لیں گے یا تمہارا ہی کیا اسے بھگتنا پڑے گا۔
اب چاہے آپ کسی کو طعنہ دو اور وہی طعنہ آپ کو گھیر لے، یا چاہے کسی کو بےاولاد کہو اور بے اولادی آپ کا پیچھا نا چھوڑے، کسی کو موٹا کہو اور وہ موٹاپا آپ کو اپنا شکار بنا لے، یا کسی کو غریب کہو اور اس کی آہ سے آپ کا مال آپ کا نا رہے، یا پھر کسی کی بیٹی کے  ساتھ اتنا برا سلوک کرو کہ کل کو آپ کی بیٹی بھی اسی سب سے دوچار ہو۔ یا اس سب سےمواثلت رکھتا ہوا کوئی بھی پہلو جسے ہم اپنی عام زندگی میں کوئی معنی نہیں دیتے مگر ہم یہ نہیں جانتے کہ یہ سب باتیں بہت معنی رکھتی ہیں خدا کی بارگاہ میں۔
یہ کوئی چھپا ڈھکا پہلو نہیں جس کا ذکر میں آج آپ کے ساتھ کر رہی ہوں۔ یہ ایک کھلی کتاب کی طرح پہلو ہے جس سے ہر کوئی بخوبی واقف ہے بس فرق اتنا ہے ہے کہ ہم اسے وقعت نہیں دیتے۔
اگر آج ہم ان معمولی معمولی باتوں کو اہمیت دینے لگیں گے تو ‌ہم خدا کے قہر سے محفوظ ہو سکتے ہیں اور اپنی آنے والی نسل کو بھی اس سب سے محفوظ رکھ سکتے ہیں۔
پس کچھ غور طلب ہے ! 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کالم نگار، بلاگر یا مضمون نگار کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ بھی ہمارے لیے کالم / مضمون یا اردو بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو قلم اٹھائیے اور 500 الفاظ پر مشتمل تحریر اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر اور مختصر تعارف کے ساتھ info@mubassir.com پر ای میل کریں۔ ادارہ

 

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  88967
کوڈ
 
   
مقبول ترین
ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا ہے کہ ملک کے 16شہروں میں کورونا کیسز کی شرح بہت زیادہ ہے، جہاں سول اداروں کی مدد کے لیے پاک فوج کی تعیناتی کردی گئی ہے۔ راولپنڈی میں نیوز کانفرنس سے خطاب میں ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار
یران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ’ان پر پاسداران انقلاب کی کارروائیوں کی حمایت کے لیے سفارت کاری کی قربانی دینے کے لیے دباؤ ڈالا گیا تھا۔‘ عرب نیوز کے مطابق محمد جواد ظریف کے لندن میں ایران نیشنل ٹی وی چینل کو تین گھنٹے طویل انٹرویو میں ایرانی
قومی اسمبلی میں قرارداد پیش کرنے پر کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) نے لاہور کے مرکزی دھرنے سمیت ملک بھر میں احتجاج ختم کرنے کا اعلان کردیا۔ میڈیا کے مطابق حکومت کی جانب سے فرانس کے سفیر کو ملک بدر کرنے سے متعلق قرارداد
عوامی نیشنل پارٹی نے اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) سے راہیں جدا کرنے کا فیصلہ کرلیا جس کے نتیجے میں اتحاد ٹوٹ گیا اور اے این پی رہنماؤں نے پی ڈی ایم کے تمام عہدے چھوڑ دیے۔ پشاور میں اے این پی کی مرکزی

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں