Monday, 27 September, 2021
ایران: افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات شروع

ایران: افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات شروع

تہران ۔ ایران کے وفاقی دارالحکومت تہران میں حکومت افغانستان اور طالبان کے درمیان باقاعدہ مذاکرات کا آغاز ہوا ہے۔ بین الافغان مذاکرات کی میزبانی ایران کر رہا ہے۔ ایرانی وزیرخارجہ محمد جواد ظریف کا مشترکہ اجلاس سے اپنے افتتاحی خطاب میں کہنا تھا کہ  افغانستان میں امریکی فوجی مداخلت اور اس کی بیس سالہ تباہ کن اور غاصبانہ موجودگی کی وجہ سے آج افغانستان کے عوام اور رہنماں کو اپنے مستقبل کے سلسلے میں نہایت اہم اور سخت فیصلے کرنا ہوں گے۔جواد ظریف نے  مذاکرات کی میز پر واپس آنے پر زور دیتے ہوئے سیاسی طریقہ کار کو ہی بہترین آپشن قرار دیا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا کہ ایران افغانستان کے بحران اور تنازعات کے حل کے لئے موجودہ گروہوں کے درمیان گفتگو کے عمل میں ہر طرح کی مدد کے لئے تیار ہے۔ ایرانی وزیرخارجہ نے زور دے کر کہا کہ ایران افغانستان میں قیام امن کے بعد اس ملک کی سیاسی، اقتصادی اور سماجی ترقی و پیشرفت کے لئے ہر قسم کی مدد کے لئے تیار ہے۔

میڈیا کے مطابق افغان حکومت کی طرف سے اس وفد میں افغانستان کے صدر اشرف غنی کے مشیر سلام رحیمی، افغانستان کے سابق نائب صدر یونس قانونی، سابق نائب وزیر خارجہ ارشاد احمدی، محمد اللہ تابش، کریم خرم اور ظاہر وحدت شامل ہیں۔ جبکہ طالبان کی مذاکراتی ٹیم کے سربراہ عباس استنکزئی اپنے وفد کے ہمراہ موجود ہیں۔

افغان طالبان کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق اس ملاقات میں ایران میں افغان پناہ گزینوں کے مسائل اور افغانستان میں موجودہ امن عامہ کے صورت حال پر بات چیت کی جائے گی۔

اجلاس کے موقع پر مغربی ایشیا کے امور میں ایران کے نائب وزیر خارجہ رسول موسوی نے خبر دی ہے کہ اس وقت افغانستان کے بیک وقت چار وفود ایرانی وزارت خارجہ کے عہدیداروں کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کا جائزہ لینے اور باہمی تبادلہ خیال کے لئے تہران میں موجود ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نوٹ: مبصر ڈاٹ کام ۔۔۔ کا کسی بھی خبر سے متفق ہونا ضروری نہیں ۔۔۔ اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ علاوہ ازیں آپ بھی اپنا کالم، بلاگ، مضمون یا کوئی خبر info@mubassir.com پر ای میل کر سکتے ہیں۔ ادارہ

اپنا تبصرہ دینے کے لیے نیچے فارم پر کریں
   
نام
ای میل
تبصرہ
  59571
کوڈ
 
   
مقبول ترین
نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کے بعد انگلینڈ کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان بھی منسوخ ہوگیا۔ نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کی جانب سے سیکیورٹی وجوہات کو جواز بناکر اچانک دورہ پاکستان ختم کردیا گیا تھا اور اب آئندہ ماہ انگلینڈ کی میزبانی کی امیدوں پر بھی پانی پھر گیا۔
طالبان نے کابل فتح کرنے کے چار دن بعد افغانستان میں اسلامی حکومت تشکیل دینے کا اعلان کردیا۔ روسی نیوز چینل ’’آر ٹی‘‘ کی انگریزی ویب سائٹ کے مطابق افغانستان میں اسلامی حکومت یعنی امارتِ اسلامی قائم کرنے کا اعلان، افغان طالبان کے ترجمان
افغانستان کی حکومت نے طالبان کے سامنے سرنڈر کر دیا ہے۔ غیر ملکی میڈٰیا کا کہنا ہے کہ صدر اشرف غنی اپنی ٹیم کے ہمراہ ملک چھوڑ کر جا چکے ہیں۔ خبریں ہیں کہ ملک چھوڑنے سے قبل صدر اشرف غنی نے امریکی
افغانستان میں طالبان تیزی سے شہروں کا کنٹرول حاصل کرنے لگے،19 صوبائی دارالحکومتوں پر قبضہ کر لیا، ہرات کے بعد قندھار اور لشکر گاہ کا بھی کنٹرول حاصل کر لیا ،ہرات میں طالبان سے بر سرپیکار ملیشیا کمانڈر اسماعیل خان، گورنر ہرات اور صوبائی پولیس چیف کو طالبان نے گرفتار کر لیا۔

پاکستان
 
آر ایس ایس
ہمارے پارٹنر
ضرور پڑھیں
ریڈرز سروس
شعر و ادب
مقامی خبریں
آڈیو
شہر شہر کی خبریں